The Latest

وحدت نیوز(سکردو ) مجلس وحدت مسلمین پاکستان گلگت بلتستا ن کے سیکرٹری جنرل آغا علی رضوی کی محکمہ برقیات کے ایکسئین اور آری سے ملاقات ہوئی اور شہر میں جاری بدترین لوڈشیڈنگ کے خلاف اپنا احتجاج نوٹ کرایا۔ آغا علی رضوی نے سکردو شہر میں اعصاب شکن لوڈشیڈنگ جاری ہے تجارتی پیشہ افراد کے کاروبار ٹھپ ہے جبکہ طالب علموں کے امتحانات کے دن شروع ہوچکے ہیں۔ ایسے میں بجلی کا بحران انتہائی افسوسناک ہے۔ محکمہ برقیات کے سربراہان سے آغا علی رضوی نے بجلی کی تقسیم و ترسیل منصفانہ بنیادوں پر کی جائے اور شہر کو بجلی کے بحران سے نکالنے کے لیے ہنگامی بنیادوں پر اقدامات کیے جائیں۔ ایکسئین واٹر اینڈ پاورنے کہا کہ سکردو شہر میں بجلی کی کمی دور کرنا ہماری اولین ترحیح ہے او ر اس سلسلے میں بھرپور اقدامات کر رہے ہیں ۔

 انہوں نے کہا لوڈشیڈنگ کے باعث عوام سڑکوں پر آنے کے لیے تیار ہیں۔ ہم امید کرتے ہیں کہ ہنگامی طور پر اقدامات کر کے بجلی کے بحران پر قابو پانے کی کوشش کریں گے بصورت دیگر احتجاجی تحریک چلانے پر مجبور ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ دن کے وقت تمام کاروباری مراکز کو جبکہ رات کے وقت گھروں کو بجلی کی ترسیل یقینی بنائی جائے۔انہوں نے مزید کہا کہ شہر میں وی آئی کلچر ختم جائے تاکہ عوام میں احساس محرومی نہ بڑھیں۔ صوبائی حکومت محکمہ برقیات فوری طور شہر کو درپیش مسائل حل کرے اگر بجلی کے مسئلے کو حل کرنے کے لیے فوری اقدامات نہ کیے گئے تو احتجاجی تحریک چلانے پر مجبور ہوں گے۔

وحدت نیوز(کوئٹہ) مجلس وحدت مسلمین کوئٹہ ڈویژن کے میڈیا سیل سے جاری بیان میں کہامرکزی رہنما اور سابق وزیر قانون آغا رضا نے کہاہے کہ کلین اینڈ گرین پاکستان کے سلسلے میں شجرکاری مہم کے سلسلے میں پودے لگاناصدقہ جاریہ ہے کئی عرصوں سے موسمیاتی تبدیلی سے پیدا ہونے والے شدید خطرات کے پیش نظر جگہ جگہ پودے لگانا ائولین ذمہ داری سمجھتے ہیں پاکستان ہمارا گھر ہے اس کو سرسبزوشاداب بنانے کے لئے تمام مکتبہ فکر کو کردار ادا کرنا ہوگا۔ گھر گھر درخت اور پودے لگانے کی ضرورت ہے ۔ ماحولیاتی آلودگی سے بچنے کے لئے ہمیں ذیادہ سے زیادہ درخت لگانے ہونگیں صاف سبز پاکستان کے تحت ہر گھر میں شجر کاری پاکستان کے لئے ہریالی اور عوام کے لئے خوشحالی ثابت ہوگی۔

گرین پاکستان کے تحت شجر کاری مہم کے دوران ہزاروں پودے تقسیم اور لگانے کا منصوبہ اور جنگلات کے تحفظ کے لئے موثر قانون سازی کی گئی ہے جس کی بین الاقوامی سطح پر بھر پور پزرائی ہوئی ہے کمیونٹی سطح پر جدید نرسریوں کے قیام کا مقصد زیادہ سے زیادہ درخت لگانے اور ان کی حفاظت اور شجر کاری کی طرف ترغیب ہے۔

انھوں نے کہا کہ پاکستان کو سرسبزوشاداب بنانے کے خواب کو سچ کردکھانے اور آنے والی نسل کو آلودگی سے پاک مستقبل دینے کے لئے زیادہ سے زیادہ درخت لگاکر پلانٹ فار پاکستان ڈے مہم میں بڑھ چڑھ کر حصہ لے، ہز شخص کم سے کم ایک پودا ضرور لگا کر ماحول کو سرسبزوشاداب بنانے میں کردار ادا کریں۔

 انھوں نے مزید کہا کہ آنے والی نسلوں کو صاف و شفاف ماحول فراہم کرنے کے لئے زیادہ سے زیادہ درخت لگانے ہونگے۔ ہر سال شجر کاری مہم کے دوران درخت لگاتے ہیں مگر ان کی آبیاری نہیں کرتے جس کی وجہ سے درخت خوشک ہوجاتے ہیںیا جانور نقصان پہنچاتے ہیںاس کے لئے ضروری ہے کہ درختوں کی دیکھ بھال بھی ضرور کریں۔ انھوں نے شہریوں ، طلباء ، تنظیموں اور سول سوسائٹی کے لوگوں سے اپیل کی کہ شجر کاری مہم میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیں۔  بیان کے آخر میں سنجاوی میں لیویز چیک پوسٹ پر حملے کی شدید مذمت کرتے ہوئے اس میں جاں بحق ہونے والے افراد کے لواحقین سے دلی ہمدردی اور افسو س کا اظہار کرتے ہیں۔

وحدت نیوز(کوئٹہ)  مجلس وحدت مسلمین کوئٹہ ڈویژن سے جاری بیان میں مرکزی رہنما اور امام جمعہ کوئٹہ علامہ سید ہاشم موسوی نے کہاہے کہ مساجد میں بےگناہ نمازیوں کو شہید کرنے والے دہشتگرد کیا پیغام دینا چاہتے ہیں، دہشتگردی کی آڑ میں پوری دنیا میں مسلمانوں کو شہید کیا جا رہا ہے۔ دہشتگردوں کا کوئی مذہب نہیں، ان واقعات کی شدید مذمت کرتے ہیں۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ نیوزی لینڈ کی مساجد میں دہشتگردی کا یہ پہلا واقعہ نہیں، یورپ اور مغرب میں مسلم کمیونٹی کے خلاف ایسے واقعات تسلسل کے ساتھ ہوتے رہتے ہیں، مساجد کو نشانہ بنانے، مسلم خواتین کے نقاب اتارنے، سکولوں میں مسلمان بچوں کی تضحیک کرنے جیسے واقعات روز کا معمول ہیں۔ اگر عرصہ سے جاری ان واقعات کا سدباب کیا جاتا تو آج نیوزی لینڈ کا یہ واقعہ پیش نہ آتا۔ مغرب اور یورپ میں انتہا پسندی کی حوصلہ شکنی کی بجائے حوصلہ افزائی کی جاتی ہے۔

بیان میں مزید کہا گیا کہ اسلام میں دہشتگردی کی کوئی گنجائش نہیں، نیوزی لینڈ میں مساجد میں قیامت صغرا بپا کرنا کیا دہشتگردی نہیں؟ دنیا اس شیطانی اور سفاکانہ عمل پر کیوں خاموش ہے۔ دہشتگردی کا ناسور پوری دنیا کے لئے مسئلہ بنا ہوا ہے، نیوزی لینڈ کی مساجد میں بےگناہ مسلمانوں کا قتل عام سفاکیت کی بدترین مثال ہے۔ مجلس وحدت مسلمین کی ہمدردی واقعہ کے شہداء کے لواحقین کیساتھ ہے اور پاکستانی عوام ا ن کے غم میں برابر کی شریک ہے۔

وحدت نیوز(انٹرویو) ملک اقرار حسین کا بنیادی تعلق پنجاب کے علاقہ دینہ ضلع جہلم سے ہے، وہ اسوقت مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکرٹری روابط کی حیثیت سے ذمہ داری سرانجام دے رہے ہیں، ملک صاحب کا شمار ایم ڈبلیو ایم کے تاسیسی رہنماوں میں ہوتا ہے، اسکے علاوہ وہ سماجی اور فلاحی امور میں بھی پیش پیش رہتے ہیں۔ رواں ماہ کے آخر میں مجلس وحدت مسلمین پاکستان کا سالانہ تین روزہ مرکزی کنونشن منعقد ہونے جا رہا ہے، ملک اقرار حسین صاحب کو اس کنونشن کا چیئرمین مقرر کیا گیا ہے، اسلام ٹائمز نے اس کنونشن کی مناسبت اور ڈی آئی خان ٹارگٹ کلنگ و نیوزی لینڈ سانحہ سے متعلق ملک اقرار حسین کیساتھ ایک انٹرویو کا اہتمام کیا، جو قارئین کے پیش خدمت ہے۔(ادارہ)
 
سوال: ملک بھر میں امن و امان کی صورتحال میں بہتری آئی ہے، لیکن ڈیرہ اسماعیل خان میں صورتحال روز بروز ابتر ہو رہی ہے، یہاں قتل و غارت گری کیوں رک نہیں پا رہی اور ایم ڈبلیو ایم اس حوالے سے کیا کوششیں کر رہی ہے۔؟
ملک اقرار حسین: سب سے پہلے تو آپ کا بہت شکریہ کہ آپ نے ہمیں موقع دیا، جہاں تک ڈی آئی خان کا مسئلہ ہے تو اس حوالے سے ہمارے کچھ بنیادی اہداف ہیں، پاکستان میں جب ہم نے ملی اعتبار سے جدوجہد کا آغاز کیا تھا تو شہید قائد علامہ عارف حسین الحسینی (رہ) نے ہمیں بڑا بنیادی اصول دیا تھا، انہوں نے فرمایا تھا کہ ہم ہر ظالم کے مخالف ہیں، چاہے وہ شیعہ ہی کیوں نہ ہو اور ہر مظلوم کے حامی ہیں چاہے وہ کافر ہی کیوں نہ ہو۔ ہم اسی اصول کو سامنے رکھ کر آج تک جدوجہد کرتے رہے ہیں، گذشتہ کئی سالوں سے پاکستان سمیت دنیا بھر میں جہاں کہیں بھی ظلم ہوا ہے، مجلس وحدت مسلمین نے کراچی سے خیبر تک ہر موقع پر اپنا رول پلے کیا ہے، ڈی آئی خان کی بات کی جائے تو گذشتہ دس بارہ سال سے وہاں حالات خراب ہیں، ہم اس حوالے سے اداروں کیساتھ بیٹھے ہیں، صوبائی حکومت سے بات ہوئی ہے، حکومتی کمیٹی کیساتھ مسئلہ کو اٹھایا ہے۔

ایک چیز انہیں بھی کلئیر ہے اور ہمیں بھی واضح ہے کہ چند سالوں کے دوران ڈیرہ اسماعیل خان میں پولیس اور بعض اداروں میں ایک مخصوص مائنڈ سیٹ کی بھرتیاں کی گئیں، ٹارگٹ کلنگ کی یہ کارروائیاں اسی مائنڈ سیٹ کا ہی نتیجہ ہیں۔ ضرورت اس امر کی ہے کہ اب جبکہ ایک نئی حکومت آئی ہے، عمران خان صاحب ایک نئے ویژن اور نئے پاکستان کا نعرہ لگا کر آئے ہیں تو ہم ان کے وزراء اور دیگر حکومتی مسئولین کو یہ باور کروا رہے ہیں کہ ڈی آئی خان میں امن و امان کی صورتحال کو بہتر بنایا جائے۔ الحمد اللہ وہاں سے بھی رسپانس مثبت ہے، لیکن چیزیں کہیں نہ کہیں خراب ہو رہی ہیں، کچھ کالی بھیڑیں ایسی ہیں کہ جو نہیں چاہتیں کہ پاکستان اور بالخصوص ان علاقوں میں جہاں اہل تشیع قدرت مند ہیں، امن قائم ہوسکے۔ آنے والے دنوں میں سیکرٹری داخلہ سے ہماری ملاقات ہے اور مزید اس مسئلہ پر ہم کوششیں جاری رکھیں گے۔
 
سوال: گذشتہ دنوں نیوزی لینڈ میں افسوسناک واقعہ پیش آیا، ابھی تک تو امریکہ اور مغرب مسلمانوں کو دہشتگرد قرار دیتے رہے ہیں، اس مخصوص واقعہ کے پس پردہ کیا محرکات ہوسکتے ہیں۔؟
ملک اقرار حسین: سب سے پہلے تو میں ان شہداء کے لواحقین کو تعزیت پیش کرتا ہوں، ہماری ہمدردیاں ان خاندانوں کیساتھ ہیں، ان شہداء کے لئے ہم دعاگو ہیں۔ نیوزی لینڈ انتہائی پرامن ملک ہے، بظاہر یہ اسی انٹرنیشنل ٹرائیکا کی کارستانی ہے، امام خمینی (رہ) نے فرمایا تھا کہ دنیا میں جہاں کہیں بھی شیطانیت ہوتی ہے، اس کے پیچھے امریکہ کا ہاتھ ہے۔ نیوزی لینڈ کا واقعہ بھی اسی استکباری ایجنڈے کو آگے بڑھانے کیلئے کرایا گیا ہے، استکبار بعض اوقات اپنے ہی لوگوں کا نقصان کراکر اپنے مقاصد حاصل کرتا ہے، جسطرح کہ نائین الیون کا واقعہ کہ انہوں نے خود کیا اور پھر اس کے ردعمل میں مسلم ممالک پر چڑھ دوڑے، جبکہ بعض اوقات وہ براہ راست اپنے مخالفین کو نشانہ بناتا ہے، میں سمجھتا ہوں کہ یہ آسٹریلوی نژاد باشندہ انہی قوتوں کا آلہ کار ہے، چاہے القاعدہ ہو، چاہے طالبان کی شکل میں ہوں، چاہے داعش کی شکل میں ہو، یہ سب امریکہ اور اسرائیلی ایجنسیوں سے منسلک ہیں، دہشتگردی کی جتنی بھی شکلیں ہیں، وہ قابل مذمت ہیں۔
 
سوال: 29 مارچ سے مجلس وحدت مسلمین کا سالانہ کنونشن منعقد ہونے جا رہا ہے، ہمارے قارئین کو ذرا اس تنظیمی کنونشن کے پس منظر سے آگاہ کیجیئے گا۔؟
ملک اقرار حسین: اس کنونشن کو جانثاران امام عصر (عج) کنونشن کا نام دیا گیا ہے، ویسے تو سالانہ طور پر ہمارا پروگرام ہوتا ہے، جسے ہم شوریٰ عمومی کے اجلاس کے عنوان سے منعقد کرتے ہیںو تاہم تین سال بعد مجلس وحدت مسلمین کے اہم ترین عہدہ مرکزی سیکرٹری جنرل کا انتخاب ہوتا ہے، اس اجلاس کو ہم کنونشن کا نام دیتے ہیں۔ لہذا اس عنوان سے یہ کنونشن بہت اہم ہے، اس کنونشن کے ذریعے ہم ان جمہوری قوتوں کو بھی یہ پیغام دیتے ہیں کہ جو ہر وقت جمہوریت کا راگ الاپتی ہیں کہ درحقیقت جمہوری اقدار کو فروغ دینے کیلئے کردار ہم ادا کر رہے ہیں، ہم کہتے ہیں کہ پارٹی چیئرمین، صدر یا سربراہ تاحیات نہیں ہونا چاہهئے، یہ ہمارے دستور میں بھی شامل ہے، یہی جمہوریت کا بھی حسن ہے کہ پورے ملک سے شوریٰ عمومی کے اراکین ہر تین سال بعد مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے میر کاررواں کا انتخاب کرتے ہیں۔

اس کے ذریعے ہم یہ پیغام بھی دیتے ہیں کہ ہم موروثیت کے قائل نہیں ہیں۔ اس کے علاوہ اس کنونشن کی دوسری اہم چیز کہ پاکستان میں اتحاد و وحدت کے فروغ کیلئے ہم ہر سطح پر کردار ادا کرتے رہے ہیں، اس کنونشن کا آخری سیشن انتہائی شایان شان ہوگا، جس میں ملک بھر کی سیاسی و مذہبی قیادت کو آن بورڈ لیا جا رہا ہے، تمام ملی و قومی تنظیموں کو بلایا جا رہا ہے، اس میں علمائے کرام شامل ہیں، دانشور حضرات، صحافی، سیاسی و مذہبی رہنماوں کو دعوت دی جا رہی ہے، کنونشن کے آخر میں وحدت اسلامی کے عنوان سے ایک کانفرنس منعقد ہوگی، جس میں مختلف مکاتب فکر سے تعلق رکھنے والی شخصیات بھی شریک ہونگی، اس کنونشن سے ملک بھر میں وحدت و اخوت کا پیغام جائیگا۔
 
سوال: اس کنونشن کے سلسلے میں اب تک تیاریوں اور رابطہ مہم کی کیا صورتحال ہے۔؟
ملک اقرار حسین: اسلام آباد میں 29 مارچ سے 31 مارچ تک یہ تین روزہ کنونشن منعقد ہوگا، اس حوالے سے مختلف کمیٹیاں تشکیل دی جاچکی ہیں، بنیادی انتظامات کو حتمی شکل دی جاچکی ہے، جہاں تک رابطہ مہم کا تعلق ہے تو ہمارے مرکزی ذمہ داران، صوبائی ذمہ دران، دفاتر کے احباب اور اضلاع کے دوست کراچی سے خیبر تک دعوت کا عمل بھرپور طریقہ سے جاری ہے۔ امید ہے کہ آنے والے ایک دو دنوں تک ملک بھر سے وہ افراد جن کو اس کنونشن میں شریک ہونا ہے، سب تک ہمارا دعوت نامہ اور پیغام پہنچ جائے گا۔
 
سوال: یہ کنونشن گذشتہ کنونشنز جیسا ہوگا یا پھر اس بار کوئی نیا پہلو سامنے لایا جا رہا ہے۔؟
ملک اقرار حسین: ظاہر سی بات ہے کہ ہر جماعت اور سسٹم کے ابتدائی مراحل ہوتے ہیں، مجلس وحدت مسلمین بھی اپنا ابتدائی سفر طے کرچکی ہے اور اب تک لگ بھگ ایک دہائی کا عرصہ گزر چکا ہے۔ اس میں ہمارے بہت تجربہ کار اور نظریاتی لوگ شامل ہیں، ہم دیکھتے ہیں کہ آنے والے دنوں میں مجلس وحدت مسلمین پاکستان سیاسی طور پر ایک اہم رول ادا کرے گی، اس کے علاوہ مذہبی طور پر جو کہ ایک خواب تھا کہ ہم ملی اخوت اور اتحاد و وحدت کی طرف بڑھ سکیں، اس عنوان سے بھی ان شاء اللہ کامیابیاں سمیٹیں گے۔ امید ہے کہ نئے سیکرٹری جنرل کا جو انتخاب ہوگا اور نئی کابینہ آئے گی، وہ پہلے سے زیادہ بہتر انداز میں کام کرسکے گی۔ لوگوں میں بہت محبتیں اور دلچسپیاں ہیں، جہاں بھی ہم جاتے ہیں، وہاں لوگ بہت محبتوں کا اظہار کرتے ہیں اور پوچھتے ہیں کہ کنونشن کب اور کیسے منعقد ہونے جا رہا ہے، اس سے ثابت ہوتا ہے کہ مجلس وحدت مسلمین کی عوام کیساتھ وابستگی پہلے سے زیادہ مضبوط ہوئی ہے۔
 
سوال: ملت تشیع کے بعض طبقات اکثر یہ گلہ کرتے نظر آتے ہیں کہ شیعہ جماعتیں آپس میں متحد نہیں ہوتیں، اس کنونشن میں کیا شیعہ جماعتوں اور اکابرین کو بھی مدعو کیا گیا ہے۔؟
ملک اقرار حسین: جی بالکل، اس حوالے سے ہم تمام ملی جماعتوں، اکابرین، مدارس کو دعوتیں دے رہے ہیں، ماتمی سنگتوں، مقامی تنظیموں کو بھی دعوتیں دے رہے ہیں اور امید کرتے ہیں کہ ان شاء اللہ یہ کنونشن ملی اعتبار سے اتحاد و اخوت کا گلدستہ ثابت ہوگا۔
 
سوال: اس کنونشن کے حوالے سے اپنے تنظیمی مسؤلین، کارکنان اور دیگر کو کیا پیغام دینا چاہیں گے۔؟
ملک اقرار حسین: اس حوالے سے میں تمام مسئولین کو یہ کہنا چاہوں گا کہ جس دور سے ہم گزر رہے ہیں، اس میں ہماری سنگین ذمہ داریاں ہیں، ہمیں چاہیئے کہ شرح صدر کیساتھ ملت کے تمام طبقات کو اپنے قریب کریں، کہیں پر بھی ایسا پیغام نہیں جانا چاہیئے، جس سے کسی کی دل آزاری ہو، ملت کو متحد کرنے کیلئے آگے بڑھیں، ملت اور پاکستان کی بھی اسی میں بقاء ہے کہ ہم ملکر آگے بڑھیں، اسلام اور پاکستان دشمن قوتوں کو ہم ٹف ٹائم دے سکیں۔

وحدت نیوز(کراچی) سانحہ النور مسجد کریسٹ چرچ نیوزی لینڈ کے شہداءکی یاد میں مجلس وحدت مسلمین کراچی ڈویژن کے زیر اہتمام محفل شاہ خراسان روڈ پر دعائیہ تقریب کا انعقاد اور شہداءکی یاد میں شمع روشن کی گئیں، اس موقع پر مجلس وحدت مسلمین کے رہنما علامہ سید باقرعباس زیدی،علی حسین نقوی،علامہ صادق جعفری، ناصرالحسینی،علامہ مبشر حسن،علامہ ملک عباس، میر تقی ظفر،زین رضوی، متحدہ قومی موومنٹ پاکستان کے سابق رکن سندھ اسمبلی میجر (ر) قمرعباس رضوی،پاکستان عوامی تحریک سندھ کے صدرظفراقبال قادری،آل پاکستان سنی تحریک کے چیئرمین مطلوب اعوان قادری،فلسطین فائونڈیشن کےسیکریٹری جنرل صابرابومریم،معروف اہل سنت روحانی شخصیت ڈاکٹر مبشرعالم، علامہ عبد اللہ جونا گڑھی ،،علامہ نعیم الحسن الحسینی،علامہ سجاد شبیر رضوی، لالہ رحیم ، عظیم جاوا ، ظفر تقی ، زین رضا ، فرحت عباس، مزمل حسین ، کامران زیدی ، نقی لاھوتی سمیت شیعہ ایکشن کمیٹی، سیاسی وسماجی شخصیات اور صحافیوں نے بڑی تعدادمیں شرکت کی ، شرکاءنے شہدائے کریسٹ چرچ کی بلندی درجات کیلئے فاتحہ خوانی بھی کی۔

وحدت نیوز (فیصل آباد) پاکستان شعبہ خواتین ضلع فیصل آباد کی جانب سے تحصیل جھمرہ میں یونٹ تشکیل دیا گیا،ایم ڈبلیو ایم شعبہ خواتین  کی مرکزی مسئول فلاح و بہبود محترمہ فرحانہ گلزیب نے تحصیل جھمرہ میں خواتین سے خطاب میں مجلس وحدت مسلمین شعبہ خواتین کا تعارف اور اس الہی تنظیم کی ضرورت و اہمیت بیان کرتے ہوئے کہا کہ ایم ڈبلیو ایم مکتب تشیع کی ابھرتی ہوئی سیاسی اور مذہبی جماعت ہے جو ملک میں تشیع کے حقوق کی جنگ لڑ رہی ہے ، اس موقع پر مرکزی مسئول مدارس محترمہ بشری شریف نے بھی خواتین سے خطاب کیا۔ محترمہ ساجدہ بتول کو جھمرہ یونٹ کی سیکرٹری جنرل کے طور پر منتخب کیا گیا۔

وحدت نیوز(سکھر) مجلس وحدت مسلمین سندھ کے سیکریٹری جنرل علامہ مقصود علی ڈومکی کی ضلعی ڈپٹی سیکرٹری جنرل ایڈوکیٹ احسان اللہ شر و دیگر کے ہمراہ پریس کانفرنس انہوں نےکہا کہ مجلس وحدت مسلمین پاکستان کا سالانہ جانثاران امام عصر ع کنونشن اور وحدت اسلامی کانفرنس سے حب الوطنی ؛ اتحاد بین المسلمین اور اسلامی بیداری کا پیغام عام ہوگا۔ ایم ڈبلیو ایم نے ہمیشہ دھشت گردی فرقہ واریت اور کرپشن کے خاتمے کے لئے جدوجہد کی ہے۔ 23 مارچ کو یوم پاکستان کے موقع پر خصوصی تقریبات منعقد کریں گے۔

انہوں نےکہا کہ وحدت اسلامی کانفرنس میں مختلف سیاسی اور مذہبی جماعتوں کے رہنما اور اہل سنت علماء کرام شریک ہوں گے۔انہوں نےکہا کہ دھشت گردوں اور کالعدم جماعتوں کے سیاسی دھارا میں شمولیت سے نفرت فرقہ واریت اور دھشت گردی کو فروغ ملے گا۔انہوں نے میروخان میں چاردیواری کے اندر جشن مولود کعبہ کے انعقاد روکنے کے فیصلے کو افسوس ناک قرار دیا۔ انہوں نےکہا کہ چاردیواری میں پروگرام کو روک کر ہمارے بنیادی آئینی حق کو پامال کیا گیا۔

وحدت نیوز(اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین کی وحدت اسلامی کانفرنس کی تیاریاں زور شور سے جاری ،مرکزی و صوبائی قائدین کی مسلسل رابطہ و دعوتی مہم جاری ،اسلام آباد میں مرکزی ڈپٹی سیکرٹری جنرل ایم ڈبلیوایم سید ناصرعباس شیرازی کی ملی یکجہتی کونسل کے اکابرین سے ملاقات کانفرنس میں شرکت کی دعوت دی گئی تحریک انصاف سنی اتحاد کونسل پاکستان عوامی تحریک سمیت ملی و مذہبی جماعتوں کے قائدین کو دعوت نامے جاری کر دیئے گئے ہیں ۔

اسلام آباد میں منعقد ہونے والی مجلس وحدت مسلمین کی تین روزہ تنظمی کنونشن کے آخری روز بین المسالک ہم آہنگی کے فروغ کے لئے وحدت اسلامی کانفرنس کا انعقاد کیا جارہا ہے جس میں مجلس وحدت مسلمین کے انٹرا پارٹی الیکشن میں منتخب ہونے والے نئے سربراہ ( سیکرٹری جنرل ) کا خطاب ہو گاجس میں وہ  جماعت کی پالیسی اور آئندہ کا لائحہ عمل بیان کریں گئے ۔ کانفرنس سے مختلف سیاسی مذہبی و ملی جماعتوں کے قائد ین بھی خطاب کریں گئے ۔

وحدت نیوز (کوئٹہ) مجلس وحدت مسلمین کوئٹہ ڈویژن کے میڈیا سیل سے جاری بیان میںسابق وزیر قانون اور مرکزی رہنما آغا سید محمد رضا نے کہاہے کہ جعفر ایکسپریس میں دھماکے کی مذمت کرتے ہیں چند دنوں میں یہ تیسرا واقعہ ہے عوام کی جان و مال کی حفاظت حکومت کی ذمہ داری ہے ۔بدامنی ، دھماکے کا دوبارہ شروع ہونا حکومتی ناکامی کو ظاہر کررہی ہے۔حکومت دعویوں  کے بجائے عوام کی جان و مال کی حفاظت کو یقینی بنائے۔ عوام کی جان ومال کی حفاظت کے لئے قومی خزانے سے خطیر رقم مختص  اور بھاری بجٹ تو بنائے جاتے ہیں مگر عوام کی جان و مال پھر بھی محفوظ نہیں یہ لمحہ فکریہ ہے۔ بے گناہ لوگوں کو نشانہ بنانا بزدلی ہے بم دھماکے میں شہید ہونے والوں کو لاواحقین کے غم میں برابر کے شریک ہیں حکومت اور انتظامیہ واقعے میں زخمی ہونے والے افراد کو بہترین طبی سہولیات کی فراہمی کو یقینی بنائے۔ حکومت اس طرح کے واقعات کی روک تھام اور ملوث عناصر کو کیفر کردار تک پہنچائیں۔

وحدت نیوز(چنیوٹ) مجلس وحدت مسلمین شعبہ خواتین ضلع چینیوٹ کی جانب سے قائم کردہ قرآن سنٹر میں سالانہ پروگرام بعنوان “جشن مولود کعبہ” کا انعقاد کیا گیا ایم ڈبلیو ایم شعبہ خواتین ضلع چینیوٹ کے زیر اہتمام بچیوں کے لیے قائم کردہ قرآن سینٹر کا تیسرا سالانہ پروگرام مرکزی امامبارگاہ محلہ ٹھٹھی شرقی چینیوٹ میں منعقد ہو،ا اس موقع پر جامعہ بعثت رجوعہ سادات کی معلمہ محترمہ زھرا بخاری صاحبہ نے خطاب کرتے ہوئے سیرت امیرالمومنین علیہ سلام پر روشنی ڈالی اور ان کے فضائل و مناقب بیان کیے  اسکے علاوہ مجلس وحدت مسلمین شعبہ خواتین کی مرکزی سیکرٹری شعبہ ورکنگ وومن محترمہ ڈاکٹر ردا فاطمہ نے بھی خطاب کیا اور بچیوں کی حوصلہ افزائی کی ، انھوں نے عصر حاضر اور ہماری ذمہ داریاں کے موضوع پر گفتگو کی۔ اس پروگرام میں بچیوں کی جانب سے تلاوت، کوئز مقابلہ، ٹیبلو اور ترانے پیش کیے گئے۔

Page 1 of 918

مجلس وحدت مسلمین پاکستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے 


MWM Pakistan Flag

We use cookies to improve our website. Cookies used for the essential operation of this site have already been set. For more information visit our Cookie policy. I accept cookies from this site. Agree