The Latest

allama s a rوحدت نیوز (بلتستان)  مجلس وحدت مسلمین پاکستان بلتستان ڈویژن کے سیکرٹری جنرل علامہ آغا علی رضوی نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ بلتستان میں سرکاری تعلیمی اداروں سے توقعات وابستہ رکھنا عبث ہے لیکن افسوس کا مقام ہے کہ نجی اور معیاری تعلیمی ادارے دوستیوں، تعلقات اور تعصبات کی بھینٹ چڑھ رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بلتستان میں پبلک اسکول اینڈ کالج کے علاوہ آرمی پبلک اسکول کا شمار معیار تعلیم فراہم کرنے والے اداروں میں ہوتا ہے اور دونوں پاکستان آرمی کے سرپرستی میں ہے۔ ان دونوں اداروں کے قوم پر بڑے احسانات ہیں اور پڑھے لکھے افراد میں پیدا کرنے میں ان کی خدمات ناقابل فراموش ہے لیکن گذشتہ سال سے ان اداروں کے تعلیمی ماحول کو جان بوجھ کر خراب کیا جارہا ہے۔ گذشتہ سال پبلک اسکول اینڈ کالج میں بھی طویل عرصہ تعلیمی بحران پیدا کیا گیا اور ادارہ لائق فائق اساتذہ کو نکالنے پر منتج ہوا اور اس کی بازگشت اس سال آرمی پبلک اسکول اینڈ کالج میں سنائی دے رہی ہے۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ کوئی بھی ادارہ مسائل سے خالی نہیں ہوتا لیکن ان مسائل کا حل طاقت کے بل بوتے پر نہیں بلکہ مفاہمت و مصالحت سے کریں۔ میں ان دونوں اداروں میں اساتذہ کو درپیش مسائل اور دیگر مسائل بالخصوص اخلاقی مسائل کے حوالے سے ایف سی این اے تک آواز بلند کروں گا۔ کیونکہ یہ ادارے اسلامی جمہوریہ پاکستان کی فوج کے زیر سرپرستی چلنے والے ادارے ہیں نہ کہ لبرل، کمیونسٹ اور فرد واحد کی ملکیت ہے۔ یہاں اسلامی اقدار اور نظریہ پاکستان کو پروان چڑھنا چاہیئے نہ کہ بالغ بچیوں کو گراونڈ میں لے جایا جائے اور ان کی اخلاقات کو تباہ و برباد کیا جائے۔

nasir abbas sheraziوحدت نیوز (ملتان)  مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکرٹری سیاسیات سید ناصر عباس شیرازی نے کہا ہے کہ مجلس وحدت مسلمین نے ملتان سمیت پاکستان میں اہم کامیابیاں سمیٹی ہیں۔ اُنہوں نے کہا کہ مجلس وحدت مسلمین کہ جس کی سیاسی عمر ان انتخابات میں صرف دوماہ کی تھی سینکڑوں جماعتوں کو پیچھے چھوڑ دیا ہے۔ بعض مقامات پر پیپلزپارٹی، تحریک انصاف، جماعت اسلامی، جمعیت علمائے اسلام، ایم کیو ایم، سنی تحریک، متحدہ دینی محاذ سمیت کئی جماعتیں مجلس وحدت مسلمین سے پیچھے رہی ہیں۔

 ان خیالات کا اظہار اُنہوں نے ملتان میں مجلس وحدت مسلمین کے ضلعی کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ ناصر عباس شیرازی کا مزید کہنا تھا کہ مجلس وحدت مسلمین نے سیاسی میدان میں کئی جماعتوں کو شکست دے کر اپنا واضح سیاسی تشخص اُجاگر کیا ہے۔ کل تک جو حکومتیں ہمارے مطالبات سننا گوارا نہیں کرتی تھیں وہ آج ہمارے مطالبات پورے کرنے پر مجبور ہیں۔ گزشتہ عام انتخابات کی طرح ضمنی انتخابات میں بھی مجلس وحدت مسلمین اپنا بھرپور کردار ادا کرے گی۔

00 lahoreProtest01وحدت نیوز (لاہور) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے زیرِاہتمام پشاور میں مدرسہ شہید عارف حسینی پر درندہ صفت دہشت گردوں کے معصوم پرامن اور محب وطن نمازیوں پر حملے اور ملک بھر میں جاری دہشت گردی کیخلاف آج پریس کلب لاہور کے سامنے علامتی دھرنا و احتجاجی مظاھرہ کیا گیا۔ مظاہرے میں علماء، خواتین، بچوں سمیت نوجوانوں کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔ یاد رہے مجلس وحدت مسلمین پنجاب کے سیکرٹری جنرل نے صوبے بھر میں مظاہروں کی کال گزشتہ روز ہونے والے اجلاس میں دی تھی۔ احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے ڈپٹی سیکرٹری جنرل پنجاب سید اسد عباس نقوی نے کہا کہ ملک میں منظم سازش کے تحت جاری شیعہ نسل کشی میں پھر سے شدت آگئی ہے، پُرامن رہنے کا یہ مطلب نہیں کہ محب وطن لوگوں کو دہشت گردوں کے رحم وکرم پر چھوڑ دیا جائے۔

 

سید اسد عباس نقوی نے گلگت میں چلاس کے مقام پر غیر ملکی سیاحوں کے قتل عام کی بھی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا کہ وزیرِداخلہ فلور آف دی ہاؤس بیان دے رہا کہ یہ وہی قاتل ہیں جنہوں نے یہاں کے شیعہ مسلمانوں کا قتل عام کیا، ہماری اطلاع کے مطابق قاتلوں نے غیر ملکی سیاحوں کے قتل عام کے بعد چاکنگ سے اپنی شناخت بھی ظاہر کردی ہے جس میں بدنام زمانہ دہشت گرد ملک اسحاق اور کالعدم دہشت گرد تنظیم کے موجودہ سربراہ کو اپنا امیر قرار دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ گلگت بلتستان کے امن و امان کو خراب کرنے کیلئے تکفیری گروہ پھر سے سر گرم ہے، ہم مسلم لیگ ن کی حکومت کو یہ متنبہ کرتے ہیں کہ اگر گلگت بلتستان کے مسافروں کو کوئی نقصان یا کوئی دہشت گردی کا وا قعہ وہاں پیش آیا تو رئیسانی حکومت کے انجام کو موجودہ حکومت بھی یاد رکھے۔

 

مرکزی رہنما مجلس وحدت مسلمین پاکستان علامہ ابوذر مہدوی نے کہا کہ پاکستان میں تبدیلی مہنگائی، دہشت گردی کی صور ت میں آ گئی ہے، مسلم لیگ ن کی حکومت کو ابھی مہینہ پورا نہیں ہوا سینکڑوں لاشوں کا تحفہ دے کر عوام پر ثابت کر دیا کہ موجودہ حکومت دہشت گردوں کے سامنے بے بس ہے، کوئٹہ میں خواتین کا قتل عام کرکے دنیا میں پاکستان کی رسوائی کی گئی، آج پھر گلگت بلتستان کی پُر امن سرزمین پر تکفیری ٹولوں نے غیر ملکی مہمانوں کو قتل کرکے پاکستان میں سیاحت کے باب پر ہمیشہ کیلئے تالا لگا دیا۔ علامہ ابو ذر کا کہنا تھا کہ اگر حکومت اور سیکورٹی ادارے اِن معاملات میں اپنی ناکامی کا اعتراف کریں تو محب وطن عوام اِن دہشت گردوں کیخلاف میدان میں آنے کو تیار ہیں لیکن افسوس پاکستانی حکمرا ن اس وقت ملکی مفادات سے زیادہ امریکی و صیہونی مفادات کو تحفظ دے رہے ہیں جو اس دہشت گردی اور لاقانونیت کے اصل سرپرست ہیں۔

 

انہوں نے کہاکہ پاکستان کے حالات بتارہے ہیں یہاں امریکی شیطانوں اور اسرائیلی و انڈین گماشتوں کے ایجنڈوں کی تکمیل کیلئے طالبان اور تکفیری دن رات ایک کئے ہوئے ملکی سلامتی کے درپے ہیں اور ہم فقط مذمت کے سوا کوئی عملی قدم اٹھانے کو تیار نہیں۔ مظاہرے سے مجلس وحدت مسلمین لاہور کے سیکرٹری جنرل علامہ امتیاز کاظمی نے بھی خطاب کیا ۔ انہوں نے کہا پاکستان کو اب ایک فیصلہ کرنا ہوگا،اسلامی جمہوری پاکستان یا طالبان تکفیری پاکستان کیونکہ جن دہشت گردوں سے ہمارے ملک کے سیاسی و مذہبی قائدین مذاکرات کے خواہاں ہیں وہ اس ملک کواور اس کے آئین کو سرے سے نہیں مانتے ، حکومت کی اسی کمزوری کا نتیجہ جو آج معصوم اور بے قصور محب وطن عوام بھگت رہی ہے، کیا قیام پاکستان اور بانی پاکستان کی اولادوں کا جرم یہ ہے کہ وہ پاکستان سے محبت کرتے ہیں، اگر یہ جرم ہے تو ہم یہ جرم بار بار کرتے رہیں گے،وطن کی محبت اور وطن کے دشمنوں سے نفرت ہمارے ایمان کا حصہ ہے۔

 

علامہ امتیاز کاطمی کاکہنا تھا کہ وطن کا دفاع ہم سب پر واجب ہے، اگر پاک فوج آج پکارے تو یہ فرزندانِ پاک وطن اپنی جانوں کو اس دھرتی پر قربان کرنے کو عین شرعی فریضہ سمجھتے ہوئے میدان میں آنے کو تیار ہیں۔ مظاہرے میں خواتین اور بچوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔ پریس کلب لاہور کے سامنے علامتی دھرنا بھی دیا گیا جو بعد میں پُر امن طور پر منتشر ہوگیا۔مظاہرین نے مطالبہ کیاکہ کھوکھلے نعروں اور جھوٹے وعدوں کی بجائے ملک میں دہشت گر دی کیخلاف موثر حکمت عملی ترتیب دی جائے اور دہشت گردوں کیخلاف فی الفور آپریشن شروع کیا جائے،گلگت چلاس میں غیر ملکی سیاحوں کا قتل عام در اصل وہاں کے سیاحت اور غریب محب وطن عوام کے روز گار کا قتل ہے۔

 

مظاہرین نے کہاکہ تکفیریوں کیخلاف گلگت بلتستان میں آپریشن نہ کرنے کا نتیجہ آج پاکستان کو بین الاقوامی سطح پر ایک بار پھر بدنامی کا سبب بنا، گلگت بلتستان کی نمائندہ جماعت ہونے کے ناطے مجلس وحدت مسلمین پاکستان مطالبہ کرتی ہے کہ گلگت بلتستان میں دہشت گردوں کیخلاف فوری آپریشن کرے اور گرفتار شرپسندوں کو فوری انصاف کے کٹہرے میں لا کر قرار واقعی سزا دی جائے، سانحہ پشاور میں گرفتار درندوں کو فوری قرار واقعی سزا دی جائے اور اُن کے سرپرستوں کیخلاف موثر کارروائی تک ہم چین سے نہیں بیٹھیں گے، پاکستان تحریک انصاف کے صوبائی حکومت کے وزیرِ اطلاعات کے اُس بیان کی پرزور مذمت کرتے ہیں جس میں مدرسہ شہید عارف حسینی میں خود کش دھماکے پر کہا گیا کہ قیامت تو نہیں آئی بم ہی پھٹا ہے،ہم عمران خان سے مطالبہ کرتے ہیں کہ ایسے بے حس لوگوں کو آگے لاکر تحریک انصاف کی ساکھ کو خراب نہ کریں اور اُن کیخلاف فی الفور کارروائی کی جائے۔

 

رہنماؤں نے کہا کہ ہماری اطلاعات کے مطابق گلگت بلتستان کے مسافروں کیخلاف شاہراہ قراقرم پر بڑی دہشت گردی کی منصوبہ بندی جاری ہے جس کے آثار بدنام زمانہ دہشت گرد ملک اسحاق کے نام پر چاکنگ کرواکر دکھائے جا رہے ہیں کہ ہم یہ قتل عام کرتے رہیں گے، لہٰذا وفاقی اور گلگت بلتستان حکومت سن لیں کہ اگر شاہراہ قراقرم پر کوئی دہشت گردی ہوئی تو حالات کے ذمہ دار موجودہ حکمران ہوں گے، حب الوطنی اور امن پسندی کو کمزوری سمجھا جارہا ہے، دہشت گردوں کو لگام دینے میں اگر سیکورٹی ادارے ناکام ہیں تو عوام کو کال دی جائے یہ محب وطن قوم پاک فوج کے شانہ بشانہ ملک دشمنوں سے ہر محاذ پر لڑنے کو تیار ہیں کیونکہ وطن کے دفاع کو ہم اپنا عین شرعی وظیفہ سمجھتے ہیں، کوئٹہ میں خواتین کے قتل عام میں ملوث درندوں کیخلاف اب تک کوئی موثر کارروائی نہیں ہو رہی، پاک فوج کے ذریعے ان تکفیری دہشت گردوں کیخلاف بھر پور آپریشن کر کے عوام کو احساس تحفظ دیا جائے۔

malik iqrarوحدت نیوز (اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکریٹری جنرل علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے برادر ملک اقرار حسین کی مرکزی کابینہ میں سیکریٹری روابط و ڈپٹی سیکریٹری اطلاعات کے عہدے پر تقرری کی منظوری دے دی ہے ۔

برادر ملک اقرار حسین مجلس وحدت مسلمین پاکستان کی گذشتہ کابینہ میں بھی مرکزی سیکریٹری روابط اور مسئول مرکزی آفس کے عہدے پر اپنی ذمہ داریاں انجام دے چکے ہیں ۔

hyd protest peshawarوحدت نیوز (حیدرآباد) پشاور میں شہید علامہ عارف حسین الحسینی کی جائے شہادت اور جامعہ مسجد میں گذشتہ روز ہو نے والے  خودکش حملے اور بیگناہ نمازیوں کے قتل عام کے خلاف مجلس وحدت مسلمین پاکستان صوبہ سندھ ضلع حیدرآباد کی جانب سے پریس کلب پر احتجاجی دھرنا دیا گیا۔ دھرنے کی قیادت ایم ڈبلیو ایم حیدرآباد کے سیکریٹری جنرل علامہ امداد علی نسیمی نے کی جبکہ اس موقع پر دیگر علمائے کرام بھی موجود تھے۔

شرکائے دھرنا پشاور بم دھماکے میں ملوث دہشت گردوں کی فوری گرفتاری کے لئے نعرے بازی کر رہےتھے ، جبکے انہوں نے ہاتھوں میں بینر اور پلے کارڈ اٹھا رکھے تھے ، جن پر دہشت گردی کی مذمت میں نعرے درج تھے ۔یہ احتجاجی علامتی دھرنا دو گھنٹے تک جاری رہنے کہ بعدپر امن طور پر منتشر ہو گئے ۔

mehdiوحدت نیوز (پاراچنار) قائد شہید کا پوتا ہزاروں اشک بار آنکھوں کے سامنے اپنے آبائی قبرستان پیواڑ میں سپرد خاک .علامہ سید علی الحسینی کے دو ہی بیٹے ہیں، جن میں سے ایک نے پشاور میں ہونے والے خودکش بم دھماکے میں جام شہادت نوش کیا ہے جبکہ دوسرا بیٹا بھی شدید زخمی ہے۔ علامہ سید علی الحسینی حادثے سے صرف ایک دن قبل ہی ایران سے پشاور پہنچے تھے۔

قائد شہید علامہ سید عارف حسین الحسینی کے پوتے اور علامہ سید علی الحسینی کے بیٹے شہید سید محمد مہدی الحسینی کا جسد خاکی آج صبح 10 بجے پاراچنار پہنچا، گورنمنٹ پوسٹ گریجویٹ کالج پاراچنار کے سامنے ہزاروں افراد نے ننھے شہید کے جسد خاکی کا استقبال کیا، جہاں سے نونہال شہید کے جسد خاکی کو سینکڑوں گاڑیوں کے کاروان کے ہمرای اپنے آبائی گاؤں پیواڑ روانہ کر دیا گیا۔ پیواڑ میں علامہ سید علی الحسینی سے تعزیت کرنے اور شہید سید مہدی الحسینی کے نماز جنازہ میں شرکت کے لئے پاراچنار کی تمام مذہبی و سیاسی تنظیموں کے رہنما، کارکنان اور اور ہزاروں کی تعداد میں سوگواران شہید کے جسد خاکی کے انتظار میں بیٹھے ہوئے تھے۔ شہید قائد علامہ عارف حسین الحسینی کے مزار کا پورا صحن سوگواروں سے کچھا کچھ بھرا ہوتا تھا۔ معصوم شہید کا جنازہ پہنچتے ہی لوگ دھاڑیں مار کر رونے لگے۔
 
شہید سید مہدی الحسینی کی نماز جنازہ شہید قائد علامہ عارف حسین الحسینی کے بچپن کے ساتھی، سابق سینیٹر، استاد العلماء علامہ سید عابد حسین الحسینی نے پڑھائی۔ نماز جنازہ میں علاقے بھر کے علماء سمیت 25 ہزار سے زائد لوگوں نے بھرپور شرکت کی۔ نونہال شہید سید محمد مہدی الحسینی کو اپنے شہید دادا علامہ سید عارف حسین الحسینی کے مزار کے قریب دفن کیا گیا۔ واضح  رہے کہ قائد شہید علامہ عارف حسین الحسینی کے بیٹے علامہ سید علی الحسینی کے دو ہی بیٹے ہیں، جن میں سے ایک نے پشاور میں ہونے والے خودکش بم دھماکے میں جام شہادت نوش کیا ہے جبکہ دوسرا بیٹا بھی شدید زخمی ہے۔ علامہ سید علی الحسینی حادثے سے صرف ایک دن قبل ہی ایران سے پشاور پہنچے تھے۔ 6 سالہ معصوم سید محمد مہدی الحسینی نماز جمعہ میں شرکت کی غرض سے محراب کے بالکل قریب بیٹھا ہوا تھا کہ انسانیت سے عاری اور گناہ گار اور بے گناہ کی تمیز کئے بغیر لوگوں کو خاک و خون میں غلطاں کرنے والے خودکش بمبار کے وحشیانہ حملے کا نشانہ بن گیا۔

multan electionوحدت نیوز (ملتان) مجلس وحدت مسلمین پاکستان ملتان کی ضلعی شوری کا اجلاس جامعہ شہید مطہری ملتان میں منعقد ہوا۔ اجلاس کی صدارت صوبائی سیکرٹری جنرل پنجاب علامہ عبدالخالق اسدی نے کی۔ اجلاس میں ملتان بھر کے تمام یو نٹس کے نمائندگان نے شرکت کی۔ اجلاس کے آخر میں اکثریت رائے سے علامہ سید اقتدار حسین نقوی دوسری بار مجلس وحدت مسلمین ملتان کے تین سال کے لیے سیکرٹری جنرل منتخب ہوگئے ۔

اس موقع پر مجلس وحدت مسلمین پنجاب کے سیکرٹری جنرل علامہ عبدالخالق اسدی نے نومنتخب سیکرٹری جنرل علامہ سید اقتدار حسین نقوی سے حلف لیا۔ حلف برادری کے بعد اپنے ابتدائی کلمات میں نومنتخب سیکرٹری جنرل علامہ سید اقتدار حسین نقوی نے کہا کہ میں نے گزشتہ تین سال میں اپنی بساط کے مطابق تنظیم کو چلانے کی کوشش کی لیکن میں پھر بھی سمجھتا ہوں کہ ابھی بہت کام باقی ہے۔

اُنہوں نے اپنے خطاب کے دوران سانحہ پشاور کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ خیبر پختونخواہ کے وزیر کا بیان افسوسناک ہے جس مین اُنہوں نے کہا ہے کہ ایک دھماکہ ہوا کوئی قیامت تو نہیں آئی ۔ اُنہوں نے کہا کہ مجلس وحدت مسلمین پورے پاکستان کی طرح ملتان میں بھی اُسی آب وتاب کے ساتھ اپنا سفر جاری رکھے گی۔ اس موقع پر ممتاز عالم دین علامہ قاضی شبیر حسین علوی، علامہ قاضی نادر حسین علوی، علامہ محمد حسین مہدوی، علامہ عمران ظفر، علامہ جعفرحسین قمی، علامہ عابد حسین جوادی، سید جاوید حسین حسینی، محمد عباس صدیقی، دلاورعباس زیدی، سخاوت علی، قاسم رضا ، ثقلین نقوی اور مرزا وجاہت علی سمیت دیگر موجود تھے۔

peshawar protestوحدت نیوز (پشاور) مجلس وحدت مسلمین ضلع پشاورکا مدرسہ شہید عارف حسین الحسینی میں نماز جمعہ کے دوران خودکش دھماکے کے خلاف پشاور پریس کلب کے سامنے احتجاج،گرفتار دہشت گردوں کو سرعام پھانسی کا مطالبہ۔
احتجاج میں ایم ڈبلیو ایم کے علاقائی یونٹس اورآئی ایس اواور آئی او کے برادران نے بھرپور شرکت کی۔ مجلس وحدت مسلمین ضلع پشاور کے ضلعی سیکرٹری جنرل محمد شکیل نے نہتے مسلمانوں کے بے گناہ خون سے خانہ خداکوخون آلود کرنے والوں کو لامذہب قرار دیتے ہوئے کہا کہ ان دہشت گردوں کا کوئی مذہب نہیں۔ مٹھی بھردہشت گردوں نے ملک میں انارکی اور جنگل کا قانون رائج کر رکھا ہے۔حکومتی ادارے بے بس ہو چکے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ملت تشیع کی نسل کشی کرنے والے کان کھول کے سن لیں کہ ہم حسینیت کے پیروکار کٹ مر سکتے ہیں مگر یذیدان عصر کے سامنے جھک نہیں سکتے یذیدیت کے علمبردار دھماکوں اور ٹارگٹ کلینگ سے کسی صورت حسینیت کو دبا نہیں سکتے،انہوں نے انتظامیہ اور عدلیہ سے پرزور مطالبہ کیا کہ گرفتار دہشت گردوں کو سرعام پھانسی دی جائے،انہوں نے کہا کہ ائندہ جمعہ کو بھر پوراحتجاج کیا جائے گا ۔                                                     
 قرارداد   
١ ۔  ہم  مطالبہ کرتے ہے کہ دھماکے میں ملوث عناصر کو جلد سے جلد گرفتار کیا جائے۔ اور جن افراد کو گرفتار کیاگیاہے ان کی تحقیقات میڈیا کے سامنے کرکے قرار واقعی سزا دیا جائے۔
٢  شہداء ورثاء کی فوری طور پر مالی امداد کیا جائے۔
٣  زخمیون کی مالی معاونت کے ساتھ طبی سہولیات کو بہتر بنایا جائے۔    
٤ پشاور میں مساجد اور امام بارگاہوں کی فول پروف سیکورٹی کا انتظام کیا جائے۔

johiوحدت نیوز (دادو) مجلس وحدت مسلمین پاکستان صوبہ سندھ ضلع دادو تحصیل جوہی کی جانب سے پشاور مدرسہ میں ہونے والے بم دھماکے کے خلاف الحسینی مسجد سے پریس کلب تک احتجاجی ریلی نکالی گئی۔ ریلی میں شامل احتجاجی مظاہرین نے جوہی پریس کلب کے سامنے دھرنا بھی دیا۔ اس موقع پر مجلس وحدت مسلمین کے رہنماؤں مولانا علی نواز مہدوی اور اعجاز حسینی نے خطاب کیا۔ انہوں نے کہا کہ ملک میں معصوم لوگوں کو دہشت گردی کا نشانہ بنایا جا رہا ہے اور حکمران اپنی کرسیاں بچانے کے چکر میں تماشائی بنے ہوئے ہیں، ملک میں لوگوں کی جان اور مال کے تحفظ کی ذمہ داری حکمرانوں پر عائد ہوتی ہے لیکن موجودہ حکمران لوگوں کی جان اور مال کے تحفظ میں مکمل ناکام ہوچکے ہیں، ان حکمرانوں کو ملک میں حکومت کرنے کا کوئی حق نہیں ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ پورے ملک میں بے گناہ لوگوں کو دہشت گردی اور ٹارگٹ کلنگ کے ذریعے نشانہ بنایا جا رہا ہے، کراچی میں روزانہ قتل کی وارداتیں ہو رہی ہیں اور کوئٹہ میں یونیورسٹی کی بس کو نشانہ بنایا جا رہا ہے جس پر حکومت نے کوئی ایکشن نہیں لیا ہے، اگر دہشت گردوں کے خلاف کارروائی کی جاتی تو پشاور میں دینی تعلیمی ادارے جامعہ شہید عارف الحسینی کی مسجد میں خودکش دھماکہ نہیں ہوتا۔ انہوں نے کہا کہ آخر کب تک ان بے گناہوں کا خون بہایا جائے گا؟ اب بھی حکمرانوں نے دہشت گردوں کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کی تو ملک کے حالات مزید خراب ہوسکتے ہیں، حکمرانوں کو چاہیئے کہ دہشت گردوں کے خلاف سخت کاروائی کریں، تاکہ لوگوں کی جان و مال محفوظ ہوسکے۔

mwm punchوحدت نیوز (لاہور) مجلس وحدت مسلمین لاہور کے رہنماؤں کا اہم اجلاس صوبائی سیکرٹریٹ مسلم ٹاؤن میں منعقد ہوا جس میں سانحہ پشاور اور کراچی میں ٹارگٹ کلنگ پر پنجاب میں احتجاجی مظاہروں کے شیڈول پر تفصیلی گفتگو ہوئی ۔ اجلاس کی صدارت سیکرٹری جنرل پنجاب علامہ عبداخالق اسدی نے کی۔ اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ ملک میں جاری شیعہ نسل کشی پر موجودہ حکومت سنجیدگی کا مظاہرہ نہیں کررہی۔ لہٰذا احتجاجی مظاہروں کو وسعت دینے کی تجاویز شوریٰ عالی کو بھیج دی جائے۔ اجلا س میں کل ہونے والے احتجاج اور علامتی دھرنے کی انتظامات کا بھی جائزہ لیا گیا اور انتظامات کو تسلی بخش قراردیا۔

اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے سید اسد عباس نقوی نے کہا کہ ملک میں جاری دہشت گردی سے حکمرانوں کی بے بسی کھل کر سامنے آگئی ۔ دہشت گردوں سے مذاکرات نہیں بلکہ معصوم محب وطن شہریوں کے قاتلوں کو پھانسی دے دی جانی چائیے۔ جب تک ملکی سلامتی کے ادارے ٹھوس ا قدامات نہیں اٹھائیں گے حالات ایسے ہی رہیں گے۔ اجلاس میں یہ فیصلہ کیا گیا کہ کل پنجاب کے مختلف اضلاع میں مظاہرے کئے جائیں گے۔ سانحہ پشاور پی ٹی آئی کی حکومت کیلئے ٹیسٹ کیس ہے۔ اس سانحے کے خلاف اٹھائے جانے والے اقدامات سے نیا پاکستان کا منشور رکھنے والی جماعت کا بھی اندازہ ہو جائے گا۔

مجلس وحدت مسلمین پاکستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے 


MWM Pakistan Flag

We use cookies to improve our website. Cookies used for the essential operation of this site have already been set. For more information visit our Cookie policy. I accept cookies from this site. Agree