The Latest

امریکہ میں بنے والی گستاخانہ فلم پر مصر،یمن،لبیاکے بعد تیونس میں بھی امریکی ایمبیسی کو نذر آتش کیا گیا
جبکہ سوڈان میں مظاہرین اور پولیس کے ساتھ جھڑپ میں تین بندے شہید ہوئے ادھر لبنان میں امریکہ میکڈونلز کو آگ لگادی گئی تیونس میں اس وقت امریکی ایمبیسی سے دھواں اٹھ رہا ہے جبکہ میڈیا کے مطابق دس سے زائد افراد زخمی ہو چکے ہیں

اسلام آباد (پ ر) امریکہ میں تیار ہونے والی توہین آمیز فلم کے خلاف مجلس وحدت مسلمین پاکستان کی جانب سے مرکزی امام بارگاہ اثناء عشری545941 10152104435175514 1047875497 n G-6/2 سے امریکی سفارتخانے تک ایک بڑی احتجاجی ریلی نکالی گئی۔  ریلی جب ریڈ زون کی جانب بڑھنے لگی تو پالیس اور رینجرز کی بہاری نفری نے خار دار تاروں سے راستہ بند کیا ہوا تھا شراکاریلی نے فورسز کے حصار کو توڑتے ہوئے ریلی کو آگے بڑھایا اس دھنگامشتی میں کچھ افراد کو چوٹیں بھی آئیں ریلی ریڈزون کے حدود میں سرینہ ہوٹل کے پاس روک دی گئ اور وہیں پر دھرنا لگایا گیا ریلی کی قیادت ایم ڈبلیو ایم کے مرکزی ڈپٹی سیکرٹری جنرل علامہ محمد امین شہیدی، رکن شوریٰ عالی  علامہ محمد اقبال بہشتی سیکرٹری امور خارجہ علامہ شفقت شیرازی ،سیکرٹری تبلیغات علامہ حسنین گردیزی سیکرٹری شعبہ جوانان علامہ شیخ اعجاز حسین بہشتی، مرکزی سیکرٹری شعبہ فلاح و بہبود نثار فیضی، مرکزی سیکرٹری روابط ملک اقرار حسین، صوبہ بلوچستان کے سیکرٹری جنرل علامہ مقصود علی ڈومکی، صوبہ پنجاب کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل علامہ اصغر عسکری  اور ایم ڈبلیوام اسلام آبادسمیت دیگر اکابرین نے کی۔ شرکائے ریلی نے بڑے بڑے بینرز اور کتبے اٹھا رکھے تھے۔ جن پر امریکہ اور گستاخان رسول ۖ کے خلاف نعرے درج تھے۔ مظاہرین نے امریکی انتظامیہ اور صہیونیت کے خلاف زبردست نعرہ بازی کی اور مطالبہ کیا کہ گستاخی کے مرتکب امریکہ کے سفیر کو ناپسندیدہ شخصیت قرار دے کر ملک بدر کیا جائے۔ شرکائے ریلی سے خطاب کرتے ہوئے ایم ڈبلیو ایم کے مرکزی ڈپٹی سیکرٹری جنرل علامہ امین شہیدی نے کہا کہ شان رسالت ۖ میں گستاخی کرنے والوں کو اس پاک سرزمین پر رہنے کا کوئی حق حاصل نہیں۔ انہوں نے کہا کہ یہ ملک اسلام کے نام پر معرض وجود میں آیا تھا۔ اس کے مکین کسی بھی صورت میں شان رسالت ۖ میں گستاخی برداشت نہیں کر سکتے۔ انہوں نے کہا کہ نبی کریم ۖ کی شان میں کی جانے والی گستاخیوں پر خاموش رہنا بھی سنگین جرم ہے۔ انشاء اللہ مجلس وحدت مسلمین اس ضمن میں ہر سطح تک احتجاج کرتی رہے گی۔ انہوں نے کہا کہ پیغمبر گرامی اسلام ۖ عالم اسلام کی سب سے محبوب ترین شخصیت ہیں، جن کی شان میں گستاخی سے پورا عالم اسلام غم زدہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ دنیا کا سب سے بڑا دہشت گرد امریکہ ہے اور دنیا کا سب سے بڑا انتہاء پرست خود امریکہ اور اس کی حواری قوتیں ہیں۔ تمام عالم اسلام کی ذمہ داری ہے کہ اس بڑے شیطان کے خلاف اپنی بھرپور نفرت کا اظہار کرے۔ علامہ امین شہیدی نے کہا کہ اس فلم کی تیاری کے معاونین، سرمایہ کار اور اس میں کام کرنے والے واجب القتل ہیں۔ مظاہرین سے سکرٹری امور جوانان شیخ اعجاز بہشتی، صوبائی ڈپٹی سیکرٹری علامہ اصغر عسکری اور دیگر مقررین نے بھی خطاب کیا اور توہین آمیز فلم کی تیاری پر شدید رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اس قبیح فعل میں ملوث عناصر کسی بھی رو رعایت کے مستحق نہیں۔

بزرگ عالم دین اور سابق سینیٹر علامہ سید عابد حسین الحسینی نے مجلس وحدت مسلمین کی جانب سے 15 ستمبر کو طلب کردہ آل پارٹیز شیعہ کانفرنس کی مکمل حمایت کا اعلان کرتے ہوئے نیک خواہشات کا اظہار کیا ہے، ’’اسلام ٹائمز‘‘ کے ساتھ بات چیت کرتے ہوئے تحریک حسینی کے سربراہ علامہ عابد حسین الحسینی کا کہنا تھا کہ پارا چنار سمیت پاکستان بھر میں اس وقت ملت تشیع کا قتل عام جاری ہے، اس حوالے سے میں ملک کے دیگر علماء کرام کے ساتھ رابطے میں ہوں، اور امید ہے کہ 15 ستمبر کو مجلس وحدت مسلمین کی جانب سے طلب کردہ آل پارٹیز شیعہ کانفرنس کے بہتر نتائج سامنے آئیں گے۔

انہوں نے ایم ڈبلیو ایم کی قیادت کی جانب سے اس کانفرنس کے انعقاد کے فیصلے کو خوش آئند قرار دیتے ہوئے کہا کہ ہماری ہر شخص اور تنظیم کے ساتھ حمایت شامل ہے جو اٹھ کھڑا ہو اور قوم کیلئے کچھ کرے، انہوں نے کہا کہ مجلس وحدت مسلمین کے رہنمائوں نے مجھے کانفرنس کی شرکت کی دعوت دی تھی، مگر طبعیت کی ناسازی کیوجہ سے میں نے ان سے کانفرنس میں شرکت کیلئے معذرت کرلی ہے۔ تاہم ان کا کہنا تھا کہ میری تمام تر حمایت اور نیک خواہشات ان کے ساتھ ہیں

اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے ضلعی سیکرٹری جنرل مجلس وحدت مسلمین علامہ اقتدار حسین نقوی نے کہا کہ متاثرین سیلاب کی امداد کے لیے ملتان میں فوری طور مسجد الحسین  میں امدادی کیمپ لگادیا گیا ہے۔
حالیہ بارشوں کے نتیجے میں جنوبی پنجاب میں ہونیوالی تباہ کاریوں کے حوالے سے مجلس وحدت مسلمین پاکستان ملتان اورامامیہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن ملتان ڈویژن کا مشترکہ اجلاس علامہ اقتدار حسین نقوی کی زیر صدارت منعقد ہوا، اجلاس میں مرکزی سیکرٹری تعلیم مجلس وحدت مسلمین یافث نوید ہاشمی، ڈویژنل صدر اما میہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن ملتان تہور حیدری، ڈپٹی سیکرٹری جنرل ملتان محمد عباس صدیقی، غلام قاسم علی اور ثقلین نقوی نے شرکت کی۔
اجلاس سے خطا ب کرتے ہو ئے ضلعی سیکرٹری جنرل مجلس وحدت مسلمین علامہ اقتدار حسین نقوی نے کہا ہے کہ جنوبی پنجاب میں متاثرہونے والے ڈیرہ غازیخان اور اُسکے نواحی علاقوں میں مومنین کی کثیر تعداد بے آسراء ہیں اور ہماری امداد کے منتظر ہیں ، ہمیں ان حالات میں اُن کا ساتھ دینا چاہیے اس حوالے سے مجلس وحدت مسلمین اورامامیہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن کے زیر اہتمام متاثرین سیلاب کی امداد کے لیے ملتان میں فوری طور مسجد الحسین  میں امدادی کیمپ لگادیا گیا ہے۔
ڈویژنل صدر تہور مہدی نے کہا کہ نشتر میڈیکل کالج یونٹ کی ٹیم ادویات ں کا دورہ کرے گی، اُنہوں نے کہا کہ اس حوالے سے ملتان میں ایک بھرپور کمپین چلائی جا رہی تا کہ متاثر ہونے والے مومنین کو ریلیف دیا جائے۔

حالیہ بارشوں کے نتیجے میں ڈیرہ غازیخان کی 23آبادیاں متاثر ہوئی ہیں، اظہر کاظمی
 ضلعی سیکرٹری جنرل مجلس وحدت مسلمین ڈیرہ غازیخان نے کہا کہ چوٹی زیریں میں شیعہ آبادیاں مکمل طور پر زیر آب آ گئیں ، مخیر حضرات سے اپیل ہے کہ آگے بڑھ کر مومنین کی مدد کریں۔
مجلس وحدت مسلمین پاکستان ضلع ڈیرہ غازیخان کے سیکرٹری جنرل سید اظہر حسین کاظمی نے کہا کہ حالیہ بارشوں سے جہاں ملک کے دیگر حصوں میں نقصانات ہوئے ہیں وہیں ضلع ڈیرہ غازیخان کی 23 بستیوں کے تقریبا 3105خاندان شدید متاثر ہوئے ہیں ، اُنہوں نے کہا کہ ڈیرہ غازیخان کی تحصیل چوٹی زیریں جو کہ شیعہ اکثریتی علاقہ ہے وہاں پر سیلا نے بہت نقصان کیا ہے پوری کی پوری بستیاں زیرآب آ گئیں ہیں۔
ُاُنہوں نے کہ ابتدائی طورعلاقوں اور خاندانو ں کا ڈیٹا اکٹھا کیا گیا ہے جبکہ مومنین کی ریلیف کے لیے فوری طور امدادی کیمپ لگائے جا رہے ہیں ، اُنہوں نے کہا کہ مخیر حضرات سے اپیل ہے کہ آگے بڑھ کر مومنین کی مدد کریں۔

امریکی وزیرِ خارجہ ہلری کلنٹن کا کہنا ہے کہ امریکہ اس فلم کو ریلیز ہونے سے نہیں روک سکتے کیونکہ ایسا کرنا ان کے ملک میں آزادی اظہار کے خلاف ہے تاہم امریکی وزیر خارجہ نے اس فلم کی مذمت کرتے ہوئے اسے قابلِ نفرت اور غلط اقدام قرار دیا ہے۔

امریکی وزیرِ خارجہ نے کہا کہ امریکہ اس فلم کے مواد اور اس سے دیے جانے والے پیغام کو قطعی طور پر رد کرتا ہے۔ تاہم انہوں نے کہا کہ اس فلم کی بنیاد پر تشدد نہیں کیا جانا چاہئیے اس بے شرمانہ بیان سے ثابت ہوتا ہے کہ کہیں نہ کہیں اس فلم کو بنانے میں امریکی حکومتی مرضی شام ہے

توہین آمیز امریکی فلم کے خلاف عالم اسلام سراپا احتجاج بن گیا ہےاور پاکستان سمیت دنیا کے بیشترملکوں میں مظاہرے شروع ہوگئے ہیں جمعہ کے دن اکثر شہروں میں احتجاج کی کال دی گئی ہے  
پاکستان کی قومی اسمبلی نے مشترکہ قرارداد سے اس گستاخانہ فلم کی مذمت کی
جبکہ دینی جماعتوں نے سخت مظاہرے کیے _

ايران کے وزير ثقافت نے پيغبر اکر صلي اللہ عليہ وآليہ وسلم کي شان ميں توہين آميز فلم بنائے جانے کي مذمت کرتے ہوئے امريکہ اور صہيوني لابي کي حمايت سے کيا جانے والا ايک اور گھناونا اقدام قرار ديا ہے-
وزرات خارجہ نے اپنے ايک بيان ميں کہا ہے کہ حکومت پاکستان اور پاکستاني عوام امريکہ ميں بنائي جانے والي اس توہين آميز فلم کي تياري اور اسے ريليز کئے جانے کي سختي کے ساتھ مذمت کرتے ہيں-
دوسري جانب تہران يونيورسٹي کے طلبہ و طالبات پيغمبر اسلام ص کي شان ميں توہين آميز فلم کے خلاف آج امريکي مفادات کے نگہبان سوئس سفارت خانے کے سامنے مظاہرہ کرنے والے ہيں- طلبہ اتحاد کي جانب سےجاري ہونے والے بيان ميں توہين آميز فلم کي شديد الفاظ ميں مذمت کي گئي ہے-


حکومت الجزائر اور بحرين نے بھي توہين آميز فلم کي تياري اور اسے ريليز کئے جانے کي شديد الفاظ ميں مذمت کرتے ہوئے اسے بين المذاہب رواداري کي کھلي خلاف ورزي قرار ديا ہے-
ہزاروں کي تعداد ميں مراکشي شہريوں نے توہين آميز فلم کے خلاف درالبيضا ميں امريکي قونصل خانے کے سامنے مظاہرے کئے ہيں- مظاہرين نے مردہ باد امريکہ اور مردہ باد اوباما کے نعرے لگائے اور امريکي پرچم نذر آتش کيا-
سيکڑوں کي تعداد ميں مصري شہريوں نے بھي قاہرہ کے امريکي سفارت خانے کے سامنے مظاہرے کئے اور سفارت خانے کي عمارت پر نصب امريکي پرچم اتار پھينکا-
مصري پارليمان کے متعدد ارکان بھي توہين آميز فلم کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے امريکہ اور ہالينڈ کے سفيروں کو ملک سے نکالے جانے کا مطالبہ کيا ہے-
سوڈان ميں بھي سيکڑوں لوگوں نے حضرت محمد مصطفي ص کي شان اقدس کے خلاف بنائي جانے والي توہين آميز امريکي فلم کے خلاف خرطوم ميں امريکي سفارت  خانے کے سامنے مظاہرے کئے ہيں-
تيونس ميں بھي ہزاروں لوگ امريکي سفارت خانے کے سامنے جمع ہوئے اور انہوں نے توہيں آميز امريکي فلم کے خلاف صدائے احتجاج بلند کي - عالم اسلام کے ديگر شہروں ميں بھي توہين آميز امريکي فلم کے ‍ خلاف مظاہروں کي خبريں موصول ہو رہي ہيں-
ليبيا کے  شہر بن غازي ميں امريکي قونصل خانے پر توہين آميز فلم پر مشتعل لوگوں نے ہلہ بول ديا تھا اور عمارت کو آگ لگادي تھي-
دوسري جانب امريکي اخبار وال اسٹريٹ جرنل نے خبردي ہے کہ عالم اسلام ميں غم و غصے کي آگ بھڑکانے والي يہ فلم ايک اسلام مخالف اسرائيلي امريکي نے تيار کي ہے-

اخبار کے مطابق اس کفر آميز فلم کا ڈائريکٹر اور پروڈيوسر سام باسل نامي ايک اسرائيلي امريکي ہے-
سن دوہزار گيارہ کے ماہ ستمبر ميں تقريبا يہي دن تھے جب مصر کے عوام نے قاہرہ ميں صيہوني حکومت کے سفارت خانے پر حملہ کرکے اسرائيلي سفير اور ديگر سفارت کاروں کو مصر سے منہ چھپا کے بھاگنے پر مجبور کرديا تھا- اس وقت سے ليکر آج تک مصري عوام  بارہا مظاہرے کرتے چلے آرہے ہيں اور انکا مطالبہ ہے کہ اسرائيل کے ساتھ کئے جانے والے شرمناک کيمپ ڈيوڈ معاہدے پر نظرثاني کي جائے-
مصر کے عوام قومي مفادات کے تناظر ميں امريکہ کے ساتھ تعلقات پر بھي نظرثاني کا مطالبہ کر رہے ہيں

رہبر مسلمین آیت اللہ العظمی سید علی خامنہ ای کا پیغام امریکی گستاخانہ فلم کے بارے میں khamenaei.rehbar

بسم اللہ الرحمن الرحیم
قال اللہ العزیز الحکیم: یْریدونَ لِیْطفِؤا نورَاللہِ بِاَفواھھِم واللہْ مْتِمّْ نورِہ وَلوکَرِہَ الکافِرون

امت مسلمہ۔
اسلام دشمنوں کے ناپاک ہاتھوں نے ایک بار پھر پیامبر گرامی اسلام ص کی شان اقدس کی گستاخی کی کوشش سے اپنی دشمنی کو مزید آشکار کیا ہے
ایک بار پھر دنیا میں اسلام کی بڑہتی ہوئی نورانیت سے غصے میں آئے ہوئے صیہونی گروہوں کا نفرت انگیز پاگل پن سامنے آیا ہے
اس جنایت کے مرتکبین کی بے شرمی کے لئے اتنا کافی ہے کہ انہوں نے دنیا کی مقدس ترین اور نوارنی ترین ہستی کی شان میں گستاخی کی جاہلانہ کوشش کی ہے
اس توہین آمیزحرکت کے پیچھے صیہونی،امریکی اور دوسرے سامراجیوں کی مخاصمانہ سیاست پوشیدہ ہے وہ اپنی خام خیالی میں نئی نسل کے سامنے مقدسات کو عالیٰ مقام سے نیچے لانے کی کوشش کر رہے ہیں تاکہ ان کے دینی جذبات ٹھنڈے پڑ جائیں ۔
اگر ہم اس نجس مہم کے تسلسل کو سامنے رکھیں یعنی سلمان رشدی،ڈنمارک کے کارٹونسٹ،قرآن جلانے کی کوشش کرنے والے امریکی پادری کی حمایت نہ کی جاتی اور صیہونی پروپگنڈہ مراکزکی حمایت میں بنائی جانے والی دسیوں اسلام مخالف فلموں کی حمایت نہ کی جاتی تو آج یہ گناہ کبیرہ اور ناقابل معافی جرم کا ارتکاب نہ ہوتا ۔
اس جنایت کے پہلے درجے کے مجرم امریکی حکومت اور صیہونیزم ہے ،اگر امریکی حکومت اپنے ملوث نہ ہونے کے دعوئے پر سچی ہے توپھر اس جر م کے مرتکبین کو اتنی بڑی سزا دیں جتنا بڑا یہ جرم ہے کہ جس نے مسلم امت کے دل کو زخمی کردیا ہے
پوری دنیا کے مسلمان بہنو اور بھائیوجان لو دشمنوں کی جانب سے اس قسم کی گٹھیا حرکتیں در حقیقت بیداری اسلامی کی عظیم تحریک کی اہمیت اور اس کی بالیدگی کو بیان کرتی ہے واللہ غالب علی ٰ امرہ
سید علی خامنہ ای
اردو ترجمہ ایم ڈبلیوایم میڈیا سیل

پوری قوم ایک بار پھر آزمائش کی اس گھڑی میں سیلاب کے متاثرین کی مدد کریں، نثار فیضی

مجلس وحدت مسلمین کے رضاکار امدادی کاروائیوں کے لیے فعال ہو چکے ہیں، ہنگامی فنڈ قائم کر دیا ہے پوری قوم ایک بار پھر بارشوں کے نتیجے میں پیدا ہونے والے اس آفت کا ڈٹ کر مقابلہ کرے گی اور سیلاب کے متاثرین کی امدادمیںدرمے دامے سخنے اپنا بھر پور کردار ادا کرے گی ۔ اس وقت تمام علاقوں میں مجلس وحدت مسلمین کے کارکنان نقصانات کا جائزہ لے چکے ہیں اور امدادی سرگرمیوں میں مشغول ہیں۔ مرکز اور صوبوں کی سطح پرہنگامی فنڈ قائم کردیا گیا ہے اور کمیٹیاں تشکیل دی جارہی ہیں جو اضلاع سے بھر پور روابط رکھ کر نقصانات کے مطابق امدادی سرگرمیوں کو منظم انداز میں چلائیں گی۔ان خیالات کا اظہار مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکرٹری فلاح بہبود برادر نثار علی فیضی نے خیر العمل فاﺅنڈیشن پاکستان کی ورکنگ باڈی کے ہنگامی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انشاءاللہ مجلس وحدت مسلمین پاکستان ماضی کی طرح موجودہ سیلاب سے متاثرہ علاقوں جس میں بالخصوص جیکب آباد ، جعفر آباد، سبی ، ڈی جی خان، راجن پوراور رحیم یار خان شامل ہیں،میں شعبہ جوان کے رضاکاروں کے ساتھ ملکرریلیف اور ریسکیو کے حوالے سے مہم میں کلیدی کردار ادا کرے گی۔ جلد ہی ان علاقوں میںراشن ، خیموں اور ادویات پر مشتمل امدادی سامان بھجوایا جارہا ہے۔نثارعلی فیضی نے تمام مخیر حضرات اور فلاحی اداروں سے اپنا بھر پور کردار ادا کرنے کی اپیل کی ہے اور کہا کہ مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے شعبہ فلاح بہبود خیر العمل فاﺅنڈیشن کی گزشتہ سیلاب سے متاثرہ خاندانوں کی ابتک جاری امداد اس بات کی ضامن ہے کہ قوم کی داد رسی کا یہ مرکزی ادارہ اپنے اندر اس مشکل سے بھی نبر د آزما ہونے کی بھر پور صلاحیت رکھتا ہے۔ انشاءاللہ ہم قوم کے دکھوں کا حقیقی مداواکریں گے۔

raja.mwm.confایم ڈبلیو ایم مرکزی آفس میں ایک ہنگامی پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ایم ڈبلیوایم کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے شان رسالت س کے خلاف امریکی فلم کے بارے میں اپنے غم و غصے کا اظہار کرتے ہوئے  کہا کہ ہم حکومت سے کہتے ہیں کہ پاکستان سے امریکی سفیر کو نکالا جائے۔ جس طرح سے لیبیاء میں ہوا ہے۔ پاکستان میں امریکی سفیر اور امریکی گماشتے جو پاکستان میں مختلف شکلوں میں آزادانہ نقل و حرکت کرتے ہیں، یہ سب جاسوس ہیں، چاہے یہ سفارتکاروں کی شکل میں ہوں۔ انہوں نے ہمارے آخری نبی پاکؐ کی توہین کی ہے، ان کو پاکستان سے نکالا جائے کیونکہ یہ توہین کرنے والی حکومت کے نمائندے ہیں۔ یہ آزادی بیان یا آزادی اظہار نہیں ہے بلکہ یہ ایک خیانت ہے، یہ ظلم ہے جو ہمارے اوپر ہو رہا ہے لہٰذا ہم حکومت سے مطالبہ کرتے ہیں کہ پاکستان میں امریکی سفارتکار اور سفیر و قونصلیٹ کو ناپسندیدہ شخصیات قرار دے کر امریکہ کو ایسا ملک جو پوری دنیا کے خلاف خیانتیں کرنے والا ملک ہے، افغانستان میں ڈرون حملے کر رہا ہے، پاکستان میں ڈرون حملے کر رہا ہے، ظلم کر رہا ہے، مسلمانوں کو تقسیم کر رہا ہے، شام کے اندر بھی ظلم کر رہا ہے، اسرائیل کی حمایت کر رہا ہے اور گزشتہ دنوں جو یونائٹڈ مشن آیا ہے، یہ مشن پاکستان کے مظلوموں کے زخموں پر مرہم رکھنے نہیں آیا بلکہ یہ پاکستان کے خلاف ایک عالمی سازش ہونے جا رہی ہے۔ یہ مشن برما کیوں نہیں گیا، یہ مشن فلسطین کیوں نہیں جاتا جہاں بے گناہ لوگ قتل ہوئے ہیں۔ اس مشن کے پاکستان میں آنے کی کیا وجہ ہے۔ اگرچہ ہم بلوچ مظلوم بھائیوں کے ساتھ ہیں، وہ ہمارے ساتھی ہیں، ہم مظلوموں کے ساتھی ہیں، ہم نے خون دیا ہے، شہید دیئے ہیں۔ ہم اپنا سب کچھ دے سکتے ہیں لیکن اپنے وطن کے خلاف کسی سازش کو قبول نہیں کریں گے۔ یہ ایک عالمی سازش ہے۔ ہم ان ادارے سے بھی کہتے ہیں جو اس ملک کے محافظ ہیں کہ اس وقت سے ڈرو جب پانی سر سے گزر جائے گا آپ اپنی ذمہ داریوں کو انجام دو تاکہ ان خائن قوتوں کو ہمارے ملک میں مداخلت کرنے کا موقع نہ ملے۔ آپ دیکھئے جہاں بھی عالم مشن کے جہان اسلام میں گئے ہیں، وہاں مشکلات زیادہ ہوئی ہیں۔ یہ ہمارے دکھ درد بانٹنے نہیں آتے ہیں بلکہ یہ اپنے اہداف حاصل کرنے آتے ہیں۔ پاکستان میں اہل تشیع مظلوم ہیں۔ پاکستان میں اہل تشیع و اہل تسنسن دونوں مظلوم ہیں۔ ہمارے ریاستی اداروں پاکستان بنانے والوں کے ساتھ کوئی اچھا سلوک نہیں کیا لیکن ہم پھر بھی اپنے وطن کے اندر عالمی قوتوں کی سازشوں کو قبول کرنے کو تیار نہیں ہیں۔ ہم چاہتے ہیں کہ اپنے ملک کے تمام مسائل ہم خود حل کریں۔ دوسرے ممالک آکر ہمارے ملک میں ڈرون حملے کریں، یہ ہماری قومی غیرت کے خلاف ہے۔ پس ہم حکومت سے مطالبہ کرتے ہیں کہ یہ جو مشن پاکستان میں آیا ہے اس کو پاکستان سے نکالا جائے۔ میں پاکستان کے سیکورٹی اداروں سے کہتا ہوں کہ آپ سیاستدانوں کے پیچھے لگے رہتے ہو کہ کون کہا جا رہا ہے، کیا کر رہا ہے۔ میں آپ سے کہتا ہوں کہ ظالموں کے پیچھے لگو، دہشت گردوں کے پیچھے لگو اور وطن کے خلاف ہونے والی سازشوں کو بے نقاب کرو اور پھر پاکستان کی عوام کے ساتھ شفیع رویہ اپناؤ۔ یہ پاکستانی مادر وطن کے بیٹے ہیں۔ بلوچ، مہاجر، گلگتی، بلتی، کشمیری سب اس مادر وطن کے غیور فرزند ہیں۔ ان کے ساتھ دشمنوں جیسا رویہ نہ اپنایا جائے۔ بلوچستان کا وزیراعلیٰ اسلام آباد میں بیٹھا ہوا ہے اور ہر وقت عیاشیوں کے چکروں میں رہتا ہے۔ ایک نا اہل انسان کو اس حساس صوبے کا وزیراعلیٰ بنانا یہ ثابت کرتا ہے کہ اسے بنانے والا بھی بہت بڑا نااہل ہے۔ گلگت بلتستان میں حالات خراب کرنے میں امریکہ، بھارت، اسرائیل اور پاکستان دشمن قوتوں کا ہاتھ ہے۔ سیاستدان آپس میں لڑ رہے ہیں اور آپس میں بات نہیں کرنا چاہتے۔ ایسی فضاء قائم کی ہوئی ہے کہ جیسے آپس میں دشمن ہیں۔ ہونا تو یہ چاہیے تھا کہ بلوچستان، گلگت بلتستان پہلا مسئلہ ہونا چاہیے تھا نہ کہ ان کا اقتدار پہلا مسئلہ ہوتا۔ سیکورٹی ادارے کہتے ہیں کہ انٹرنل تو ہماری ذمہ داری ہی نہیں ہے، دہشت گرد پالنا اور انہیں تربیت دینا آپ کی ذمہ داری تھی۔ ان تمام شکایات کے باوجود ہم اس مادر وطن کے بیٹے ہیں۔ پاکستان کے بیٹے ہیں اور انشاء اللہ اپنے وطن کے لیے جانیں دے دیں گے لیکن نامحرموں کو، وطن کے دشمنوں کو، انسانیت کے دشمنوں کو اور اسلام دشمن قوتوں کو پاکستان میں ان کے آنے کا ساتھ نہیں دیں گے

30جن لوگوں نے بھی یہ کام کیا ہے، اسلام کے مسلمہ اصولوں اور مسلمہ مکاتب فقہی سب کی روشنی میں اس کے بنانے والے، اس میں کام کرنے والے اور اس کے لیے پیسہ خرچ کرنے والے سارے واجب القتل ہیں۔ایم ڈبلیوایم کے مرکزی آفس میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے کہا کہ

اس میں امریکی حکومت، امریکی انتظامیہ اس جرم میں برابر کی شریک ہے۔ ان کے ممالک سے آئے دن اس طرح کی مجرمانہ افعال انجام پاتے ہیں اور مسلمانوں کے جذبات مجروح کرتے ہیں۔ اس وقت پورے کا پورا جہان اسلام اور پوری دنیا اور باشعور لوگ سراپا احتجاج ہیں۔ اس وقت یہ ہمارے لیے بھی یہ قابل برداشت نہیں ہے کہ ہماری آخری نبی ؐ جو انبیاء کے خاتم ہیں، ان کی توہین کی جائے۔ یہاں پر یونائیٹڈ نیشن، سیکورٹی کونسل اور عالمی دنیا کے حقوق کے جتنے بھی ادارے ہیں، سب کو آواز اٹھانی چاہیے۔ اگر آواز نہ اٹھائی تو وہ مجرم ہوں گے۔ ہم بھی کل پورے پاکستان میں احتجاج منائیں گے اور اسلام آباد میں امریکی ایمبیسی کی طرف مارچ کریں گے۔ امریکی حکومت کی سرپرستی میں یہ جو اقدامات انجام پا رہے ہیں، ہم اس کی بھرپور مذمت کرتے ہیں۔ ہم عالم اسلام اور حکمرانوں سے کہتے ہیں کہ بالخصوص پاکستان میں بسنے والے مسلمانوں سے یہ کہتے ہیں کہ اگر عالم اسلام اکٹھا ہو، ہمارے اندر وحدت ہو تو ان لوگوں کو اس طرح کے اقدامات کرنے کی کبھی جرائت نہ ہوتی۔ یہ تفرقہ پھیلا کر، مسلمانوں میں انتشار پھیلا کر، مسلمانوں کو آپس میں لڑا کر، ہمیں کمزور کر کے، ہماری غیرت کا امتحان لینا چاہتے ہیں۔ دشمن یہ نہیں جانتا کہ ہم رسول پاکؐ کی ذات گرامی پر سارے مسلمان اکٹھے ہیں، جدانہیں ہیں۔ ہم سب کے نبی ؐ ہیں، ہمارے آقا و مولا ہیں اور اس حوالے سے کل انشاء اللہ ایک عظیم احتجاج ہو گا۔ جہاں بھی ہمارے دوست ہیں، کراچی، لاہور اور جہاں جہاں امریکی قونصلیٹ ہیں، ہم سب اور ہمارے دوست امریکی قونصلیٹ کی طرف مارچ کریں گے کیونکہ یہ ہمارے لیے انتہائی اہمیت کا حامل مسئلہ ہے۔ ہم تمام مذہبی جماعتوں سے، تمام سیاسی جماعتوں سے اور پاکستان کی تمام با اثر شخصیات سے کہتےہیں کہ اس توہین کے مقابلے میں خاموش رہنا خود ایک جرم ہے۔ ہمیں آواز بلند کرنی چاہیے تاکہ اس طرح کے خائنانہ، مجرمانہ، ظالمانہ اور ابلیسی اقدامات کا ہم مقابلہ کر سکیں۔ ہماری ذمہ داری کم از کم یہ بنتی ہے کہ احتجاج کریں۔

مجلس وحدت مسلمین پاکستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے 


MWM Pakistan Flag

We use cookies to improve our website. Cookies used for the essential operation of this site have already been set. For more information visit our Cookie policy. I accept cookies from this site. Agree