وحدت نیوز (گلگت) مجلس وحدت مسلمین گلگت ڈویژن کے سیکرٹری جنرل علامہ محمد بلال سمائری نے وحدت ہاؤس گلگت میں کارکنوں کے ایک اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ ظالم کے خلاف قیام کرنا اور مظلوم کی مدد کرنا قرآنی تعلیمات کے عین مطابق ہے جو لوگ ظالم کے مقابلے میں خاموشی اختیار کرتے ہیں وہ بھی ظالم ہیں۔ مجلس وحدت مسلمین نے یمن کے مظلوم عوام پر سعودی جارحیت کی مذمت کر کے سنت پیغمبرؐ اور قرآنی تعلیمات کی پیروی کی ہے اور آئندہ بھی ظلم اور ناانصافی کے خلاف علم بغاوت بلند کرتے رہیں گے اور یہ سبق ہمیں سالار حریت نواسہ رسول امام عالی مقام کی درسگاہ سے ملا ہے۔ انہوں نے کہا کہ نواز لیگ الیکشن سے فرار کے راستے ڈھونڈ رہی ہے اور اپنے سیاسی مخالفین کو ہراساں کر کے الیکشن کمپین میں اپنے لئے میدان صاف کرنا چاہتی ہے جس طرح دہشت گردگروہوں سے سہارا لیکر انہوں نے 2013ء کے الیکشن میں دوسری سیاسی جماعتوں کی الیکشن مہم پر پابندیاں لگوا دیں تھیں اور دھاندلی کے ذریعے اقتدار کی کرسی ہتھیالی ہے، لیکن نواز حکومت یہ یاد رکھے کہ یہ گلگت بلتستان ہے یہاں ان کی تکفیری سوچ کسی صورت پروان نہیں چڑھ سکتی۔

 

انہوں نے کہا کہ چند ڈالروں کے عوض سعودی اتحاد میں شامل ہونا کہاں کی عقلمندی ہے جبکہ یہ بھی معلوم ہے کہ سعودی اتحاد کے پیچھے امریکہ اور یہودی لابی کی سازش کار فرما اور وہ مسلم ممالک میں کشت و خون کے درپے ہیں۔ کون نہیں جانتا کہ یہ وہی سعودی عرب ہے جس نے مصر میں اخوان المسلمین کی حکومت ختم کرنے کیلئے جنرل سیسی کا ساتھ دیا جس نے برسراقتدار آکر ہزاروں اخوان المسلمون کے کارکنوں کو جیلوں میں پابند سلاسل کیا ہے۔ یہ سب کچھ جانتے ہوئے نواز حکومت کا سعودی اتحاد میں شامل ہونے کیلئے بے تاب ہونے کا مطلب یہ ہے کہ انہیں ملک عزیز کی سلامتی سے کوئی غرض نہیں۔ پاکستان کی مسلح افواج آج دہشت گردوں سے برسر پیکار ہے اور سعودی اتحاد جو شام اور عراق میں داعش کی پشت پناہی کر رہا ہے کی مدد کرنا ایک طرح سے دہشت گردوں کی پشت پناہی کے مترادف ہے۔ انہوں نے نگران حکومت کو خبردار کیا کہ ہمارے صبر کا امتحان نہ لیا جائے اور جھوٹی ایف آئی آر کے ذریعے کشیدگی کو ہوا دینے سے پرہیز کیا جائے۔

وحدت نیوز (گلگت) مجلس وحدت مسلمین گلگت بلتستان کے صوبائی سیکریٹری روابط عارف قنبری کو گلگت بلتستان پولیس نے یمنی مظلوم مسلمانوں کی حمایت کے جرم میں گرفتار کرلیا ہے، گذشتہ روزعارف قبنری کو کڑے پہرے میں پولیس نے انسداددہشت گردی عدالت میں پیش کیا، انسداد دہشت گردی کی عدالت میں پیشی کے وقت وکٹری کا نشان بناکر اپنے عزم وحوصلے کی بلندی کا واضح ثبوت دیا، یاد رہے کہ انہیں یمن کے مظلوم عوام کی حمایت میں سعودی جارحیت کی مذمت کرنے پر گلگت بلتستان کی کٹھ پتلی نگران حکومت جو براہ راست یہودی ریاست کے نمک خوار ہیں کی جانب سے انسداد دہشت گردی کا مقدمہ درج کرکے گرفتار کیا ہے۔

وحدت نیوز (اسلام آباد) گلگت بلتستان ٹرانسپورٹرزایسوسی ایشن کے وفد کی مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی ڈپٹی سیکرٹری جنرل علامہ امین شہیدی،مرکزی سیکرٹری سیاسیات سید ناصر شیرازی سے ملاقات اس موقع پر مجلس وحدت مسلمین کے رہنماوُں علامہ اعجاز بہشتی،سید اخلاق الحسن بخاری،مظاہر شگری،عبداللہ مطہری و دیگر بھی شریک تھے، ٹرانسپورٹرز ایسوسی ایشن کے وفد میں محمد حسن،اختر حسین،سید زوالفقار شاہ،سید محمد قذافی اور محمد تقی شامل تھے،وفد نے کے پی کے گورنمنٹ کی جانب سے ٹرانسپورٹرز ایسوسی ایشن کے رہنماوُں کی بلا جواز گرفتاری اور ٹرانسپورٹ کمپنیوں کو درپیش مسائل سے آگاہ کیا ،وفد سے گفتگو کرتے ہوئے علامہ امین شہیدی کا کہنا تھا کہ عوام کی جان مال کے تحفظ کا ذمہ دار حکومت ہے ،حکمران ٹرانسپورٹرز کو حراساں کرنے کے بجائے اپنی کارکردگی بہتر بنانے پر توجہ دیں گلگت بلتستان کے مسافروں کے مشکلات حل نہ ہوئے تو احتجاج پر مجبور ہونگے،مرکزی سیکرٹری سیاسیات مجلس وحدت مسلمین پاکستان سید ناصر شیرازی نے پاکستان تحریک انصاف کے مرکزی سیکرٹری جنرل جہانگیر ترین کو فون کرکے کے پی کے گورنمنٹ کی جانب سے ٹرانسپورٹرز کو درپیش مشکلات سے آگاہ کیا ،پاکستان تحریک انصاف کے رہنما جہانگیر ترین نے ٹرانسپورٹرز کو درپیش مشکلات کے حل کی یقین دہانی کرواتے ہوئے کہا کہ آج کمشنرہزارہ ڈویژن محمد خان ٹرانسپورٹرز کی وفد سے ملاقات کریں گے اور گرفتار رہنماوُں کی فوری رہائی اور ٹرانسپورٹروں کو درپیش مسائل کے حل کے لئے فوری اقدامات کریں گے ٹرانسپورٹرز ایسوسی ایشن کے وفد نے مجلس وحدت مسلمین کا اس مشکل موقع پر ساتھ دینے کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ علاقائی مسائل کے حل میں عوام کی نظریں ایم ڈبلیوایم پر ہے اور مجلس وحدت مسلمین نے عوامی جماعت ہونے کا ثبوت دے کر گلگت بلتستان کے عوام کے دل جیت لئے ہیں۔

وحدت نیوز(لاہور) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے دو روزہ سالانہ مرکزی تنظیمی کنوشن کے اختتام پر منعقدہ سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے ڈپٹی سیکرٹری جنرل مجلس وحدت مسلمین پاکستان علامہ محمد امین شہیدی کا کہنا تھا کہ ہمارے معاشرہ کو حکمران شعوری طور پر دلدل میں دھنساتے چلے جارہے ہیں۔ تکفیریت کو خصوصاً مشرق وسطیٰ میں تیزی سے پھیلانے کی کوشش کی گئی۔ اس کی زد میں ہر وہ مسلمان آیا جس نے اس کا انکار کیا۔ اسلام سے خائف عالمی طاقتیں نئی صف بندی کر رہی ہیں۔ توحید کا نام لیکر توحید کی جڑیں کاٹنے والوں کو میدان میں لایا جارہا ہے۔ یورپ اور امریکہ میں آئے روز مساجد کا اضافہ کلیسا کا ختم ہونا اسلام کی قبولیت اور غلبے کو ظاہر کرتا ہے۔ اسی وجہ سے اسلام کا مسخ شدہ چہرہ دنیا کے سامنے پیش کیا جارہا ہے۔ تکفیریت کا بازار گرم کرنے والے لوگوں کو مغرب استعمال کر رہا ہے۔ طالبان، داعش، القاعدہ اور النصرہ فرنٹ کو بنایا گیا، دنیا کو اسلام سے بدظن کیا گیا۔ یہ تمام گروہ اسلام کے خلاف نفرت پیدا کرنے کے لئے بنائے گئے۔ اسرائیل کے مدمقابل بلاک کمزور کیا جارہا ہے۔ مسلمانوں کے گلے کاٹنے والے اسرائیل کی جانب میلی آنکھ سے دیکھنا نہیں چاہتے۔ گلے کاٹ کر اپنے بزرگوں کی سنت پر عمل پیرا ہیں۔ گزشتہ گیارہ دنوں میں یمن کے عام شہریوں کو مارا گیا، ہسپتالوں، فیکٹریوں اور کیمپوں میں مقیم لوگوں پر بھی بمباری کی گئی۔ یمن میں نیا محاذ کھڑا کرکے اسے شیعہ سنی جنگ کا رنگ دیا گیا۔ حالانکہ سنیت کے دعوے دار سعودیوں کا سنیت سے کوئی تعلق نہیں۔ یمن کی جیلوں سے القاعدہ کے افراد کو آزاد کروایا گیا۔ پاک فوج کی پاکستان میں گرفت کمزور کرنے کی سازش کی جارہی ہے تاکہ دہشت گردوں کو فرار کا راستہ دیا جاسکے۔ یمن مین زمینی لڑائی کے لئے بھرتیاں کی جارہی ہیں، ان سعودیوں کو یہ حق حاصل نہیں پہنچتا جنہوں نے اولیا کے مزاروں کو گرایا کہ وہ اسلام کا نام لیں۔

وحدت نیوز (اسلام آباد) چیئرمین سنی اتحاد کونسل صاحبزادہ حامد رضا نے کہا ہے کہ دہشت گرد گروہ طالبان برسر اقتدار جماعت پاکستان مسلم لیگ نواز کا عسکری ونگ ہے۔ ایم ڈبلیو ایم، پاکستان عوامی تحریک، جے یو پی اور سنی اتحاد کونسل کی جانب اشارہ کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ آپریشن ضرب عضب کے سب سے بڑے سپورٹرز آج یہاں جمع ہیں۔ جن کے خلاف وحشت و بربریت کا کھیل کھیلا گیا، ہم ان میں سے نہیں جو قائداعظم کو کافر اعظم کہتے تھے۔ پنجاب میں ایمپلی فائر ایکٹ لایا گیا جس میں درود و سلام پر پابندی عائد کی گئی، صرف پنجاب میں نیشنل ایکشن پلان کو اس طرح لاگو کرکے اہل سنت اور تشیع کو نشانہ بنایا گیا۔ مقامی انتظامیہ نے ان پر ریاست مخالف اور دہشت گردانہ کارروائیوں کا الزام لگایا اور انہیں غدار کہا۔

 

صاحبزادہ حامد رضا نے کہا کہ ہم افواج پاکستان کا ساتھ، صرف باللسان نہیں بلکہ اپنی جانوں کا نذرانہ دے کر دیں گے۔ اگر مولانا فضل الرحمان، سمیع الحق اور محمد احمد لدھیانوی طالبان کو باغی قرار دیں تو ہم ان کے ساتھ بیٹھنے کو تیار نہیں، یمن میں حکومت کے خلاف اٹھنے والوں کو تو باغی کہہ دیا گیا تو پاکستان میں کیوں نہیں کہا جاتا۔ سعودی عرب نااہل ملک ہے، دولت و ثروت کی فروانی کے باوجود اس ملک کی اپنی فوج تک موجود نہیں، حرمین کے تحفظ کی بات وہ کررہے ہیں جو اسرائیل کے ساتھ ہیں، حرمین کا تحفظ انشاء اللہ ہم خود کریں گے۔ آج حرمین کو کسی قسم کا خطرہ نہیں، یمنی قبائل مسلمان ہیں، جنہیں سعودی عرب بھی مسلمان تسلیم کرتا ہے، ان سے حرمین کو خطرہ نہیں، اگر وہ سعودیہ میں آبھی جائیں تو حرمین کا سعودیہ سے بہتر تحفظ کریں گے۔ ذاتی مفادات، اور اثاثہ جات کو محفوظ کرنے کی جنگ کو حرمین کی جنگ دیا جارہا ہے۔ شام میں باغی پیدا کر کے انہیں حریت پسند، اور یمن میں حق مانگنے والوں کو باغی قرار دیا جاتا ہے، دوہرا معیار ہے۔ او آئی سی کو آرگنائزیشن آف اسلامک کریمینلز کہا جائے چونکہ مسلمانوں کے تحٖفظ کے لئے انہوں نے کوئی خاطر خواہ اقدام نہیں اٹھایا۔

 

چیئرمین سنی اتحاد کونسل نے واضح کیا کہ حملہ سعودی عرب نے یمن پر کیا اور کہا جارہا ہے کہ سعودی عرب کو یمن سے خطرہ ہے۔ طالبان سعودی عرب کی طرف ہی پاکستان کے لئے نذارانہ ہیں۔ ہم نے کسی کی جنگ کا حصہ نہیں بننا، ہم اپنی فوج کو پاکستان میں دیکھنا چاہتے ہیں، افغانستان کا خمیازہ اب تک ہم بھگت رہے ہیں، 1971 میں سعودی عرب نے ہمارا ساتھ نہیں دیا، ہمیں اپنے گھر کے حالات کو بہتر کرنا ہوگا، پاکستانی فوج کے جوان تکفیریت کے ہاتھوں شہید ہو رہے ہیں۔ ڈاکٹر طاہر القادری پاکستان آنے والے ہیں، ہم ملکر قیصر و کسریٰ کے ایوان گرائیں گے، میاں صاحب فوج یمن نہیں جانی چاہیے۔ حرمین کے دفاع کی بات کرنے والی پارٹیاں طالبان کو باغی قرار دیں۔

وحدت نیوز (اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کی مرکزی شوریٰ کا اہم اجلاس مرکزی سیکریٹریٹ میں حجتہ السلام  علامہ سید جواد ہادی کی زیر صدارت منعقد ہوا،شوریٰ عالی کے اراکین نے مرکزی کابینہ کی گذارشات پر ایم ڈبلیوایم کے دستورمیں ترامیم کے حوالے سے اپنی اپنی شفارشات پیش کیں جنہیں طویل بحث ومباحثے کے بعد منظور کرلیا گیا،  جبکہ اجلاس   میں ایم ڈبلیوایم کے مرکزی سیکریٹری جنرل علامہ ناصرعباس جعفری ، علامہ حیدرعلی جوادی، علامہ امین شہیدی، علامہ حسن ظفر نقوی، علامہ مظہر کاظمی، ناصرشیرازی، علامہ غلام شبیر بخاری، علامہ ہاشم موسوی، علامہ تصور جوادی، علامہ سبطین حسینی، علامہ مقصودڈومکی، علامہ مختارامامی سمیت شوریٰ عالی  کی  دیگر اراکین نے شرکت کی۔

مجلس وحدت مسلمین پاکستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے 


MWM Pakistan Flag

We use cookies to improve our website. Cookies used for the essential operation of this site have already been set. For more information visit our Cookie policy. I accept cookies from this site. Agree