وحدت نیوز(اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے سربراہ علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے ایک نجی چینل سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ خواجہ آصف نے سیاسی عناد کی بنیاد پر انتہائی غیر ذمہ دارانہ بیان دے کر ملک میں تفرقہ بازی پھیلانے کی کوشش کی ہے۔اس سنگین ترین صورتحال میں کسی سینئر سیاست دان کی طرف سے ایسے غیر منطقی اور بے سروپا بیان کی توقع نہیں کی جاسکتی۔خواجہ آصف کی طرف سے وفاقی وزیر کی مخالفت میں جس طرح شیعہ قوم کو نشانہ بنایا گیا ہے وہ سراسر بدنیتی پر مبنی اور قابل مذمت ہے۔مذکورہ بیان فرقہ وارانہ سوچ رکھنے والے عناصر کے شرپسندانہ عزائم کو تقویت دینے کے مترادف ہے۔

انہوں نے کہا کہ ایران سے پاکستان میں داخل ہوتے ہی ایف آئی اے کے اہلکار زائرین سے پاسپورٹ لے لیتے ہیں ان کسی شخص کےتفتان سے نکلنے کا کسی صورت سوال ہی پیدا نہیں ہوتا۔طے شدہ طریقے کے مطابق متاثر افراد کو ادھر ہی قرنطینہ سینٹر میں رکھا جاتا ہے جبکہ صحت مندافراد کو واپس ان کے شہروں میں روانہ کر دیا جا تا ہے۔میڈیا پر آکر زائرین کے حوالے سے ابہام پیدا کر کے کرونا کے خلاف جاری جنگ کو متاثر کیا جا رہا ہے۔جو پورے ملک کے لیے سنگین خطرہ ثابت ہو سکتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ایران کے خلاف جھوٹا پروپیگنڈہ کیا جا رہا ہے کہ وہاں سے زائرین کو پاکستان میں زبردستی دھکیل دیا گیا۔ ایران میں پندرہ سے بیس ہزار پاکستانی زائرین تاحال موجود ہیں۔موجودہ صورتحال ایسے بے بنیاد پروپیگنڈے کی متحمل نہیں ہے۔ تمام  جماعتوں کو چاہیے کہ وہ سیاسی مخالفت کو نظر انداز کرکے ایک پیج پر آئیں تاکہ اس وبا کو شکست دی جا سکے جس نے دنیا کے ترقی یافتہ ممالک کو بھی اپنی لپیٹ میں لے لیا ہے۔

وحدت نیوز (آزاد کشمیر) میرپور کے مرکزی جامعہ مسجد کے خطیب سابق امام جمعہ جماعت حجتہ السلام مولانا سید تنویر حسین شیرازی حرکت قلب بند ہو جانے سے انتقال کر گئے ہیں۔مولانا تنویر حسین شیرازی کا تعلق تحصیل مری کے علاقہ بنگروٹ سیداں سے تھا آپ ایک لمبے عرصے سے میرپور میں خطیب اور امام جمعہ جماعت کے فرائض سرانجام دے رہے تھے۔آپ میرپور میں اتحاد بین المسلمین اور وحدت بین المومنین کے لیے عملی طور پر کوشاں تھے۔

میرپور میں مجلس وحدت مسلمین کے قیام میں آپ نے کلیدی کردار ادا کیا قبلہ مولانا تنویر حسین شیرازی صاحب کافی عرصے سے ذیابطیس اور گردوں کی بیماری میں مبتلا تھے۔وہ ڈائیلائیسز کے دوران آج صبح حرکت قلب بند ہو جانے کی وجہ سے انتقال کر گئے۔ مجلس وحدت مسلمین آزادکشمیر کے سیکرٹری جنرل علامہ سید تصور حسین نقوی الجوادی نے مرحوم کی وفات پر گہرے دکھ اور صدمے کا اظہار کیا۔

انہوں نے کہا کہ مرحوم ایک انتہائی با بصیرت عالم دین تھے مولانا شیرازی کی وفات سے ملت تشیع  کاناقابل تلافی نقصان ہو گیا ہے۔ مولانا تنویر شیرازی مرحوم کی میرپور میں جو خدمات ہیں وہ بڑے عرصے تک یاد رکھی جائیں گی۔علامہ تصور حسین نقوی الجوادی نے مولانا شیرازی مرحوم کے خانوادے سے ان کے پسماندگان سے اور میرپور کے مومنین وسادات سے دلی تعزیت کا اظہار کرتے ہوئے مولانا شیرازی مرحوم کے بلندی درجات کی دعا کی۔

وحدت نیوز(اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے کہا ہے کہ سنگین ترین حالات کے دوران بھی ملک دشمن عناصر شرپسندی کا کوئی موقع ہاتھ سے جانے نہیں دیتے۔کرونا وائرس کے نام پر فرقہ واریت کے زہرکو پھیلانے کی مذموم سازش کرونا کے خلاف اجتماعی جنگ کو نقصان پہنچانے کی کوشش ہے۔

انہوں نے کہا کہ مسلکی منافرت کافروغ کورونا کے پھیلاؤ سے بھی زیادہ خطرناک اور بھیانک نتائج رکھتا ہے۔اس ناسور کو روکنے کے لیے حکومتی سطح پر اقدامات کرنا ہوں گے۔انہوں نے کہا کہ میڈیا میں کورونا وائرس کی خبرکے ساتھ زائرین کا واویلا جس تسلسل سے جاری ہے وہ پاکستان کے پانچ کروڑ سے زائد اہل تشیع کی دل آزاری کا باعث ہی نہیں مختلف مسالک کے مابین نفاق پیدا کرنے کی منظم سازش بھی ہے۔خود ساختہ پروپیگنڈے کے ذریعے ملک میں نفرتوں کو پروان چڑھانے والے کسی بھی طور پر اس ملک کے خیر خواہ نہیں ہیں۔کورونا وائرس کے معاملے میں ذمہ دارانہ صحافتی کردار ادا کرنے کی ضرورت ہے۔حکومت کو ان عناصر پر بھی نظر رکھنا ہو گی جو سوشل میڈیا یا دیگر ذرائعوں سے زائرین کے خلاف زہر اگلنے میں مصروف ہیں۔

انہوں نے کہا کہ کورونا وائرس کی وبا پوری قوم کے لیے مشترکہ چیلنج ہے۔ اس کا مقابلہ ایک قوم بن کر کرنا ہو گا ۔جو ملک دشمن قوتیں پاکستانی عوام کو نظریات اور عقیدے کی بنا پر تقسیم کرنے کا سنہری موقعہ سمجھ رہی ہیں وہ مغالطے میں ہیں۔ محفوظ پاکستان اور صحت مند عوام ہمارا اولین ہدف ہے جسے سازشوں کی نذر نہیں ہونے دیاجائے گا۔

وحدت نیوز(ملتان)وحدت مسلمین ضلع ملتان کی ضلعی کابینہ کا اجلاس آج ڈپٹی سیکرٹری جنرل برادر غلام حسنین انصادی کی رہائش گاہ پر منعقد ہوا جس کی صدارت سیکرٹری جنرل ملتان برادر وجاہت علی مرزا نے کی اجلاس میں کرونا وائرس کی وبا سے پیدا ہوئی صورت حال پر طویل گفتگو ہوئی اور آئندہ کی ورکنگ اور لائحہ عمل کا جائزہ لیااس موقع پر مہم کے پہلے فیز کی تکمیل اور اہداف کی حصولی اور مہم کے دوران برادان کی کاوش کو سراہا گیا ۔ وہیں اب مہم کے فیز 2 کی تیاری اور اہدافات کا تعین کیا گیا جس کے تحت مخیر خضرات اور دیگر آرگنائزیشنز و ورکنگ گروپس سے کوائرڈنیٹ کر کے عوام کے گھروں میں راشن کی تقسیم اور ممکنہ بگڑتی صورت حال کے دوران ہنگامی حکمت عملی جیسے مسائل پر گفتگو ہوئی ۔

اس کے علاوہ شہر کے مختلف علاقوں میں گھر گھر ناشتے کروانے کی مہم کی بھی منظوری دی گئی اس موقع پر ڈپٹی سیکرٹری جنرل برادر حسنین انصاری کو کوائرڈنیٹر کرونا مہم نام زد کیا گیا اور مجلس وحدت مسلمین ضلع ملتان کے ذیلی ادارے المجلس ڈیزاسٹر مینجمنٹ سیل  کی فعالیت کے حوالے سے امور کا جائزہ لیا گیا۔۔اس موقع پر مولانا عمران ظفر ،عمران نقوی ،حسنین رضا کربلائی حسن عباس گھلو ،قیصر عباس حسنین رضا انصاری ،نسیم بھائی بھی موجود تھے

وحدت نیوز(اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکریٹری جنرل علامہ ناصر عباس جعفری نے اب تک نیوز چینل کے پروگرام’ ٹو نائٹ ود فریحہ‘ میں شہید ڈاکٹر اسامہ ریاض کو کرونا وائرس کے خلاف جنگ کرتے ہوئے شہید ہونے پرزبردست خراج تحسین پیش کیا اور کہا کہ ان کی خدمات کو ہرگز فراموش نہیں کرنا چاہیئے ۔

انہوں نے کہاکہ پوری قوم کو کرونا وائرس سے مقابلہ کرنا ہوگا ۔ کرونا وائرس کے اثرات پندرہ روز بعد ظاہر ہوتے ہیں ،جولوگ خود کو صحت مند خیال کرکے مساجد میں جائیں گے ،ممکن ہے کہ وہ کرونا کا شکار ہو اور دوسروں کو اثرات منتقل کرنے کا باعث بن جائے ۔ اس لئے دینی اور قومی مفادات کو سامنے رکھ کر فیصلے کرنے ہوں گے ۔ مراجعین اور عالم اسلام کی بڑی جامعات نے اجتماعات سے منع کردیا ہے ۔ پھر اس کے بعد ایسے فتوؤں کی کوئی جگہ نہیں رہتی جو لوگوں میں اضطراب کا باعث بنے ۔

 علامہ ناصر عباس جعفری کا کہنا تھا کہ انسان کی ذمہ داری ہے کہ وہ زند ہ رہے ۔ اسلام نے انسان کی جان کو بہت قیمتی جانا ہے ۔ ایک آدمی کی وجہ سے کوئی بیمار ہوا تو ا س کے علاج کی ذمہ داری پہلے پر ہوگی ۔ مسجد میں نمازجماعت پڑھنا مستحب ہے ،اپنی اور دوسروں کی جان بچانا واجب ہے ۔ مساجد میں لوگوں کو ایک دوسرے سے یقینی خطرہ ہے ۔ اس بناء پر احتیاط پر عمل کرنا ضروری ہے ۔

 علامہ ناصرعباس جعفری نے کہا کہ تفتان سرحد پر قرنطینہ سینٹر صحیح تقاضوں کے مطابق نہیں بنایا گیا تاہم الحمد اللہ اس کے باوجود بھی ایران سے آنے والے تاحال محفوظ ہیں ۔ اس طرح کے ابہامات اصل مسئلہ سے دو ر کرنے کا سبب ہے ۔ کورنا وائرس سے لوگوں کی توجہ کو تبدیل کرنا غیر ذمہ دارانہ عمل ہے ۔

وحدت نیوز(کراچی) علامہ کاظم عباس نقوی نے بی بی زینب ؑ کی ولادت باسعادت کے موقع پر آن لائن خطاب کیا ۔ ا س موقع پر انہوں نے کہا کہ بی بی زینب ؑ اپنے زمانہ کی سیدہ تھیں ،خواتین جب یہ سوچتی ہیں کہ بی بی سیدہ زہراؑ کا مرتبہ بہت بلند ہیں ہم کیسے آگے بڑھ سکتے ہیں ؟ تویہ کیفیت حجاب بن جاتی ہے جبکہ بی بی سیدہ اور بی بی زینب کو نمونہ بناکر خدا کا قرب حاصل کرنا زیادہ آسان ہوجاتا ہے ۔

 انہوں نے کہا کہ شہید ڈاکٹر شریعتی کے مطابق ہر انقلاب کے دو رخ ہوتے ہیں ۔ ایک رخ خونی ہوتا ہے اور دوسرا پیغام کا رخ ہوتا ہے ۔ امام حسینؑ نے کربلا کا ایک رخ مکمل کیا اور بی بی زینب ؑ  نے دوسرے رخ کی تکمیل کی ۔ انہوں نے کہا کہ بی بی زینب ؑ انتہائی باعظمت خاتون تھیں ۔ ایک ایسے موقع پر جب نہضت کربلا کو جس کام کی ضرورت تھی عین اسی موقع پر آپ نے شریکتہ الحسین ؑ بن کر اسے بھرپور سہارادیا ۔ علامہ کاظم عباس نقوی نے کہا کہ جس انقلاب میں زینبی فکر نہیں ہوتی اور خواتین کا کردار نہیں ہوتا وہ انقلاب اپنی بقاء کا ضامن نہیں بن پاتا ۔ انقلاب اسلامی ایران کے لئے خواتین نے زینبی ؑ کردار ادا کیا،جنہیں امام خمینی نے بھی سراہا ہے ۔

 علامہ کاظم عباس نقوی نے کہا کہ دین خواتین کو چار دیواری میں مقید نہیں کرتا مگر باہر نکلنے کی وجہ بھی بیان کرتا ہے ۔ خواتین کوباعظمت اور پاکیزہ ہونے کی بناء پر صرف الہی مقاصد کےلئے باہر آنے کی اجازت ہے ۔ انہوں نے حالیہ کرونا وائرس کی وباء کے متعلق گفتگوکرتے ہوئے کہا کہ کرونا وائرس کے باعث یہ موقع ہے کہ ہم یمن ،کشمیر اور تمام مظلومین جہاں کی بھوک ،پیاس اور مظالم کا احساس کرلیں ۔ انہوں نے کہا کہ احتیاط ضروری ہے مگر ساتھ خوف کی کیفیت سے باہر بھی آنا ہوگا ۔ جب اشیاء کا خوف دل میں آجائے تو خوف خدا دل سے نکل جاتا ہے ۔ دشمن تین طرح سے حملہ آور ہیں ۔ بائیلوجیکل وار کے ذریعے ،خوف کے ذریعہ اور خوف پھیلانے کے بعد نفسیاتی وار کے ذریعہ ۔

انہوں نے کہا کہ خوف کے ذریعہ حجت خدا سے غافل کیا جارہا ہے ۔ خوف شیطان کا حربہ ہے ۔ خوف کے ذریعہ شیطان ذہنوں اور فکروں کو اغواء کرتا ہے ۔ دشمن کی خواہش ہے کہ ہم میں سوچنے اور سمجھنے کی صلاحیت ختم ہوجائے ۔ کرونا وائرس کے ذریعہ مسلمانان عالم پر ہونے والے مظالم کو چھپادیا گیا ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ کربلا سے قبل کوفہ میں خوف ایجادکرکے کوفیوں کے ذہنوں کو یرغمال بنایا گیا تھا ۔ کربلا کے بعد معاشرے میں خوف مکمل طور پر طاری ہوچکا تھا ۔

 انہوں نے بتایا کہ اس موقع پر بی بی زینب ؑ کی شخصیت کو سمجھنے کی ضرورت ہے جواس خوف کی فضاء میں بھی بالکل خوفزدہ نہ تھیں ،اسی لئے جب ظالم حاکم نے ان سے سوال کیا کہ خدا کو کیسا پایا تو انہوں نے جواب دیا کہ میں نے کربلا میں خدا کو انتہائی جمیل پایا ہے اور ایسا آج تک نہیں پایا ۔ یہ مرحلہ ہے بی بی زینب ؑ  کی سیرت پر چلنے کا اور بے خوف ہوکر خوف خدا کو اپنانے کا ۔ جب اس خوف کی کیفیت سے ہم نکل جائیں گے تو  ہمیں بی بی کا یہ جملہ کہ انہوں نے خدا کو انتہائی جمیل پایا ہے ،کی صحیح تفسیر بھی سمجھ آجائے گی اور کرونا وائرس سمیت ہر قسم کے مسائل کا حل بھی نظر آنے لگے گا ۔ انہوں نے کہا بی بی زینب کے اس جملہ کو اگر کوفی سمجھ جاتے تو شام جانے کا مرحلہ نہ آتا بلکہ کوفہ میں ہی انقلاب کربلا مکمل ہوجاتا ۔

 

Page 13 of 1132

مجلس وحدت مسلمین پاکستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے 


MWM Pakistan Flag

We use cookies to improve our website. Cookies used for the essential operation of this site have already been set. For more information visit our Cookie policy. I accept cookies from this site. Agree