وحدت نیوز (اصفہان) مجلس وحدت مسلمین شعبہ اصفہان کی طرف سے سفیر انقلاب کردار و گفتار کے غازی شہید ڈاکٹر محمد علی نقوی کی برسی کا انعقاد کیا گیا جس میں حجتہ الاسلام والمسلمین علامہ ڈاکٹر سیدشفقت شیرازی مرکزی سیکریٹری امور خارجہ مجلس وحدت مسلمین پاکستان  اور برادر محترم سید دانش نقوی فرزند ارجمند ڈاکٹر محمد علی نقوی نے خطاب کیا اور شہید ڈاکٹر کی زندگی کے مختلف گوشوں کو بیان کیا اور طلاب کے لیے انکی روش کو نمونہ کے طور پر پیش کیا ۔پروگرام میں  اصفہان کے اردو زبان کےتمام تشکلات تشکل عماریون،تشکل شہید عارف حسینی ،تشکل بین الملل ،تشکل المھدی ھندوستان ،و تشکل قرآن و عترت کے مسئولین اور طلاب نے کثیر تعداد میں شرکت کی۔

وحدت نیوز(اصفہان)مجلس وحدت مسلمین پاکستان شعبہ اصفہان کے سیکریٹری جنرل مولانا سید تقی شاہ زیدی نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ پاکستانی قوم کئی سالوں سے سڑکوں اور بازاروں میں مر رہی ہے۔ اور حکومت سے مطالبہ کر رہی ہے کہ دہشتگردوں  کو سزا دی جائے ۔اس سب کے باوجود بھی چوہدری صاحب پارلیمنٹ میں خطاب کرتے ہوے کہتے ہیں کہ ہمیں سب معلوم ہے کہ اس میں کس کا ہاتھ ہے۔یہاں پر سوال یہ اٹھتا ہے کہ اگر سب کچھ معلوم ہے تو پھر اس دہشتگردی کو کب روکاجائے گا۔چوہدری صاحب کے بقول اب مرکزی اور صوبای انٹیلی جنس آپس میں تمام رپورٹس  شیئر کرتی ہیں۔مگر افسوس پھر بھی بےگناہ افراد کے خون کا حساب  نہیں لیا جاسکا ا بھی تک دہشتگردوں کےسرپرستوں نہیں پکڑاگیا جو کہ خود حکومت میں موجود ہیں ، آخر عوام کس کا گریبان پکڑےاور جب چوہدری صاحب کو موقع ملتا ہےتو کہتے ہیں کہ وفاقی حکومت اس کی ذمہ دارنہیں سندھ حکومت کی جب بات آتی ہے تو کہتےہیں سندھ حکومت اس کی ذمہ دار نہیں ان کہ نظر میں پاکستانی عوام ذمہ دار ہے ۔

 

عوام سوال کررہی ہے کہ یہ کون سی قوتیں ہیں کہ جو ان دہشتگردوں کی پشت پناہی کررہی ہے ؟ یہ تکفیری ٹولہ ان دہشتگردوں کو اپنے مدرسوں مین پناہ دیتا ہے ۔ ان کی تربیت کرتاہے  یہ لوگ ۲۱ ترمیم کے خلاف احتجاج کی دھمکی دے رہے ہیں۔ کیوں کہ آج ان کو خطرہ ہے ۔ ان کی سر پرستی خود آپ کی پارٹی کر رہی ہے کیا پارلیمنٹ کے سامنے گلو بٹوں کو آپ اپنی سرپرستی میں نھتی عوام پر حملہ کرنے نہیں لائے تھے ۔ یا ماڈل ٹاون میں اسرائیلی فوج نے حملہ کیا تھا پنجابی طالبان کی سرپرستی رانا ثنا اللہ کرے تو مسئلہ نہیں اور اگر عوام احتجاج کرے تو غلط ،اپ اپنی حکومت بچانے کے لیے ان کی سر پرستی کرے اور عوام بات بھی نہ کرے ۔ جناب عوام بھی متحد ہے اور آپ لوگ بھی ۔ مگر فرق یہ ہے ۔ کہ عوام پاکستان کو بچانے کے لیے متحد ہیں اور آپ لوگ پاکستان کو تباہ کرنے اور لوٹنے کہ لیے متحد ہیں ۔ اور جب تک آپ کہ کانوں میں ڈالر اور ریال کی جھنکاروں کی آواز گونجتی رہے گی عوام کی آواز سنائی نہیں دے گی ۔

وحدت نیوز (اصفہان) مجلس وحدت مسلمین پاکستان شعبہ اصفہان کے سیکریٹری جنرل سیدتقی شاہ زیدی نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ تکفیری اور یزیدی سوچ اج مکمل طورپر معامشرہ میں تنہاہی اور بکھلاہٹ کا شکار ہیں۔یہ ناتو کسی مذہب اور فرقے کے ہوسکے اور نا ہی پاکستان کے۔ان کے مدارس میں فرقہ واریت اور وطن دشمنی کی تعلیم دی جاتی ہے۔ دور حاضر میں معصوم بچے محفوظ ہیں نہ جوان اور نہ ہی بوڑھے ۔اگرکہاجائے کہ کوئی بھی پاکستانی محفوظ نہیں تو بے جا نہیں ہوگا۔اور یہ گروہ ہر پاکستانی کی جان مال اور عزت وآبرو کو اپنے لیے حلال اور جائز سمجھتے ہیں اورسب کوکافرحربی سمجھتے ہیں۔یہ جب چاہیں جہاں چاہیں جس کو چاہیں گولی مار دیں یابم دھماکہ کردیں کوئی ان کو پوچھنے والا نہیں ہے۔اگربات یہاں تک ہوتی تواس کا حل نکالاجاسکتا تھا مگراس ظلم میں حکومتی عہدیداربھی ان کیساتھ برابر کے شریک ہیں اوران دہشتگردوں کی پشت پناہی کرتے ہیں۔اس راز سے پردہ اس وقت اٹھا جب فوج نے چند یزیدیوں کو تختہ دار پہ لٹکایاتویہ لوگ بول پڑے۔تکفیریوں کی ناکامی کی سب سے بڑی وجہ پاکستان میں شیعہ سنی اتحاد ہے۔شیعہ سنی پاکستان سے محبت کرنے والے ہیں۔ اور پاکستان کے نام پہ اپناسب کچھ لٹانیوالے ہیں۔تکفیریوں اوران کے ہم فکر سیاستدانوں کی ہمیشہ کوشش رہی ہے کہ اس اتحاد کو توڑا جایاس بات کا ثبوت مولانا فضل الرحمان کی وہ کانفرنس ہے جس میں شیعہ کافر کے نعرہ لگائے گے۔شیعہ قوم وہ واحد قوم ہے کہ جس نے اپنے مدارس کے دروازے حکومت اور فوج کیلئے کھول دیے کہ حکومت جب چاہے شیعہ مدارس کی تلاشی کر سکتی ہے۔ہمارے مدارس میں امن اسلام اوروطن سے محبت کی تعلیم دی جاتی ہے۔تاریخ اٹھا کے دیکھ لیں شیعہ قوم نے پہلے بھی وطن کے نام پہ قربانیاں دی ہیں اور انشاء اللہ آیندہ بھی وطن عزیز کے لیے کسی قسم کی قربانی سے دریغ نہیں کیا جاے گا۔پاکستان میں اس وقت تک امن کا قیام ممکن نہیں جب تک طالبانی مائنڈ سیٹ سیاستدانوں کی فوج کی نگرانی میں تحقیقات نہیں کرائی جاتیں۔جن میں رانا ثناء اللہ مولانا سمیع الحق مولانا فضل الرحمان شہبازشریف مولوی عبدالعزیز اور ان کے ہم خیال تمام سیاستدانوں کو قانون کے کٹھرے میں لاکر ان سے معصوم لوگوں کے خون کا حساب لیا جاے۔

وحدت نیوز(اصفہان) عزاداری شعائر اللہ میں سے ہے اور اس کی حفاظت ہماری ذمہ داری ہے، یزید وقت امریکہ کے مقامی ایجنٹ اپنے اجداد کی سنتوں پر چلتے ہوے دنیا بھر کے آزادی پسندوں کے امام اور ان سے وابستہ جلوسوں، عزاداری کو نہ تو ختم کر سکتے ہیں نہ کم کرسکتے ہیں اور نہ ان کا روٹ کو تبدیل کر سکتے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار مجلس وحدت مسلمین اصفہان کے سیکرٹری جنرل سید محمد تقی زیدی نے اپنے ایک بیان میں کیا۔ اُنہوں نے زمید کہا کہ یہ وقت کا یزید اور اس کا لشکر دیکھے گا کہ کس طرح یہ حسینی لشکر راولپنڈی کی کربلا میں گھروں سے باہر نکل کر یہ بتا دیں گے کہ ہم کربلائی ہیں موت ہم پر آ پڑے یا ہم موت پر ہر حال میں جیت حسینیت کی ہوگی اور یہ وعدہ خدا کا ہے کہ قد افلح المومنون یہ طالبانی فکر کی حکومت سن لے کہ اگر چہلم امام حسین کو روکا گیا یا اس کا روٹ تبدیل کرنے کی کوشیش کی گی یا کوئی ناخوشگوار واقعہ پیش آیا تو عزادار امام حسین کے اٹھتے ہوے قدم یزید وقت کی حکومت کو اس طرح پاوں تلے روند دیں گے جس طرح بلوچستان کی فرعونی حکومت کو روند ڈالا تھا۔ اُنہوں نے کہا کہ اس حکومت کو بھی یہ تنبیہ کرتے ہیں کہ اپنے ناپاک عزائم سے باز رہے ورنہ آنے والے دن اس حکومت کو اس کی حیثیت یاد دلا دیں گے۔

وحدت نیوز(اصفہان)حوزہ علمیہ اصفہان میں موجود پاکستانی طلاب کے گروہ عماریون حوزہ و روحانیت کی دعوت اور مجلس وحدت مسلمین اصفہان کے تعاون سے جامعتہ المصطفٰی العالمیہ اصفہان کے زیرانتظام مدرسہ حکیمیہ میں پاکستان کے بزرگ عالم دین اور جامعتہ المنتظر لاہور کے سربراہ علامہ حافظ ریاض حسین نجفی نے پاکستانی طلاب سے ملاقات کی اور بعد ازاں سیمینار سے خطاب کیا۔ حافظ ریاض حسین نجفی نے سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ دنیا میں آنے والے انقلابات، مصر، تیونس، بحرین اور ترکی میں اٹھنے والے تحرکات ایران کے اسلامی انقلاب کا ثمرہ ہیں۔ اس میں کوئی شک نہیں کہ تشیع کی صورت میں موجود آئمہ اطہار (ع) کی محنت انقلاب اسلامی ایران کے بعد اس تیزی سے دنیا میں پھیلی ہے کہ پوری دینا میں اپنی جگہ بنا لی اور تمام مذاہب کو پیچھے چھوڑ دیا ہے

مجلس وحدت مسلمین پاکستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے 


MWM Pakistan Flag

We use cookies to improve our website. Cookies used for the essential operation of this site have already been set. For more information visit our Cookie policy. I accept cookies from this site. Agree