وحدت نیوز(مانٹرنگ ڈیسک) اسکردو سے تعلق رکھنے والا پاکستان کا پہلا کوہ پیماء جس نے آکسیجن کے بغیر ماونٹ ایورسٹ پر پاکستان کا پرچم لہزایا، دنیا کی چھ بلند ترین چوٹیاں سر کیں اور تین ورلڈ ریکارڈ بنائے، آج بے بسی کی تصویر بنا راولپنڈی کے ہسپتال میں کسی مسیحا کی امداد کا منتظر ہے۔ حکومتی امداد کے بغیر اپنی مدد آپ کے تحت بغیر آکسیجن کے دنیا کی بلند ترین چوٹی کو اپنے عزم و ہمت اور جواں مردی سے پاوں تلے روندنے والا وطن کا یہ شیر دل سپوت آج کینسر کے مرض میں مبتلا، شدید مالی مشکلات سے دوچار، زندگی کی بازی لڑنے میں مصروف ہے۔ وفاقی اور صوبائی حکومت نے انکے علاج کے لئے زبانی دعویٰ تو کیا ہے لیکن عملی طور پر تاحال کوئی پیش رفت نہیں ہوسکی ہے۔ حسن سدپارا کا تعلق اسکردو کے نواحی گاوں سدپارا سے ہے اور غریب خاندان کے چشم و چراغ ہیں۔ انہوں نے ماونٹ ایورسٹ سمیت دنیا کی چھ اونچی چوٹیاں سر کرکے سبز ہلالی پرچم لہرا کر پاکستانیوں کا سر فخر سے بلند کیا تھا، لیکن اس عظیم قومی ہیرو کی خدمات کو سراہتے ہوئے انکے علاج کے لئے کوئی تیار نہیں۔ دوسری طرف حسن سدپارہ کے پاس اتنی مالی وسعت نہیں کہ وہ اس مہلک مرض کا علاج کروا سکے۔ حکومت پاکستان کو چاہیے کہ انکی خدمات کو سراہتے ہوئے فوری طور پر انکے علاج معالجے کا مناسب انتظام کرے۔

وحدت نیوز(سکردو) آل پارٹیز ایکشن کمیٹی کے اراکین خطے کے مسائل کے حل اور حقوق کے تحفظ کیلئے مشترکہ لائحہ عمل بنانے پر متفق ہوگئے۔ ایکشن کمیٹی کا ہنگامی اجلاس امامیہ ہال اسکردو میں منعقد ہوا، جس میں ایم ڈبلیو ایم کے صوبائی سیکرٹری جنرل سید علی رضوی،  انجمن امامیہ کے صدر شیخ محمد علی مظفری، نائب صدر سید باقر الحسینی اہلسنت والجماعت کے نامور عالم دین حافظ بلال زبیری، انجمن صوفیہ نور بخشیہ کے عالم دین محمد صادق صدیقی، انجمن نور بخشیہ امامیہ کے عالم دین مولانا اسحاق ثاقب، اسلامی تحریک کے رہنماء غلام شہزاد آغا، پیپلز پارٹی کے رہنماء محمد بشیر، تحریک انصاف کے رہنماء محمد علی دلشاد، بلتستان یوتھ الائنس کے صدر ساجد شاکری اور دیگر سیاسی، مذہبی جماعتوں کے رہنماوں نے شرکت کی۔ اجلاس میں گلگت بلتستان کی آئینی حیثیت، سی پیک، گلگت اسکردو روڈ، ٹیکسیز، اسکردو کرگل روڈ سمیت دیگر مسائل زیر بحث لائے گئے اور ان مسائل کے حل کے لئے مشترکہ طور پر لائحہ عمل بنانے کا فیصلہ کیا گیا۔ کمیٹی نے متفقہ طور پر غلام شہزاد آغا کو کوارڈینیٹر مقرر کر دیا۔ اجلاس میں آئینی حیثیت کے تعین، گلگت اسکردو روڈ کی تعمیر میں غیر معمولی تاخیر اور سی پیک میں گلگت بلتستان کو حصہ نہ دینے پر شدید احتجاج کیا گیا۔

ایم ڈبلیو ایم جی بی کے سیکرٹری جنرل و آل پارٹیز ایکشن کمیٹی بلتستان کے سربراہ سید علی رضوی نے کہا کہ حکومت ہمیں دیوار سے لگا رہی ہے اور حکومت ہمارے مسائل کے حل میں لیت و لعل سے کام لے رہی ہے۔ وہ آئینی حقوق کی فراہمی اور اسکردو روڈ کی تعمیر میں ہرگز سنجیدہ نہیں ہے۔ سی پیک میں گلگت بلتستان کیلئے کوئی منصوبہ نہیں ہے لیکن حکومت کے اہلکار دعویٰ کر رہے ہیں کہ سی پیک میں گلگت بلتستان کو اربوں روپے ملیں گے۔ انہوں نے کہا کہ تجارتی اور سیاحتی مقاصد کے لئے جب دیگر سرحدیں کھولی جاسکتی ہیں تو کرگل اسکردو روڈ کیوں نہیں کھولا جا رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ جب تک آئینی حقوق نہیں دیئے جائیں گے تب تک کوئی ٹیکس نہیں دیں گے۔ ہماری کسی جماعت سے کوئی دشمنی نہیں ہے، ہم حقوق غصب کرنے پر حکومت کے خلاف ہیں۔انجمن امامیہ کے صدر شیخ محمد علی مظفری نے کہا کہ مشترکہ مفادات کے تحفظ کے لئے تمام سیاسی مذہبی جماعتوں کو متحد ہو کر کوششیں کرنا ہوں گی۔

حافظ بلال زبیری نے کہا کہ ہم حقوق کی جنگ سے ہرگز پیچھے نہیں ہٹیں گے، جب تک حقوق نہیں ملیں گے گھروں میں واپس نہیں جائیں گے۔ حکومت ہمارے مسائل حل کرنے کی بجائے ان میں اضافہ کر رہی ہے۔ غلام شہزاد آغا نے کہا کہ بلتستان کو حقوق سے محروم رکھنے کے لئے بڑی سطح پر کوششیں ہو رہی ہیں۔ ایک لابی بلتستان دشمنی پر مبنی کام کر رہی ہے اور ہمارے حقوق غصب کر رہی ہے، ہم اس لابی کو ہرگز معاف نہیں کریں گے۔ ہم اپنے حقوق کے تحفظ کے لئے کسی بھی سطح پر جانے کے لئے تیار ہیں۔ مولانا صادق، مولانا اسحاق ثاقب، محمد بشیر، محمد علی دلشاد اور دیگر نے کہا کہ حکومت ہمارے ساتھ سوتیلی ماں جیسا سلوک کر رہی ہے، ہم زیادتیاں اور ناانصافیاں برداشت نہیں کریں گے۔ مسائل کے حل کی حکومت سے کوئی توقع نہیں ہے، ہم بالکل ناامید ہو کر رہ گئے ہیں۔

وحدت نیوز (سکردو) مجلس وحدت مسلمین پاکستان بلتستان ڈویژن کے دفتر سے جاری ایک بیان میں ڈویژنل سیکریٹری امور سیاسیات محمدعلی نے کہا ہے کہ گلگت بلتستان کے وقار پر اور عزت پر کشمیری قیادت کے حملے اور ہرزہ سرائی پر پاکستان مسلم لیگ نون کے صوبائی حکمرانوں کی خاموشی سوالیہ نشان ہے۔ وزیراعلٰی گلگت بلتستان اخبارات میں بیانات داغتے نہیں تھکتے اور زمین آسمان کے قلابے ملاتے نظر آتے ہیں، لیکن کشمیری قیادت کی جانب سے گلگت بلتستان کی خود مختاری پر یکے بعد دیگرے حملوں پر وزیراعلٰی موصوف مکمل خاموش نظر آتے ہیں۔ وزیراعلٰی گلگت بلتستان قوم کو واضح کر دیں کہ وہ بھی کشمیریوں کی پیروی کرتے ہوئے ہندوستان کے موقف کی تائید کریں گے یا گلگت بلتستان کے بائیس لاکھ عوام کی ترجمانی کریں گے۔ اتنا طویل عرصہ انکا خاموش رہنا بہت سارے سوالات کو جنم دینے کا باعث بنتا ہے۔

انہوں نے مزید کہا ہےکہ وزیراعلٰی گلگت بلتستان کے سابقہ جو نظریات تھے اور گلگت بلتستان کے حوالے سے جو رائے رکھتے تھے، امید ہے خطے کے لئے نہ سہی اپنی حکومت کی ہی خاطر اس میں تبدیلی لانے کی کوشش کی ہوگی اور گلگت بلتستان کو پاکستان کا حصہ سمجھتے ہونگے اور ساتھ ہی ساتھ کشمیری قیادت کی جانب سے گلگت بلتستان کو پاکستان کا آئینی حصہ نہ بنانے اور کشمیر کا حصہ سمجھنے کی بے منطق باتوں کو رد کریں گے اور واضح کر دیں گے کہ وہ گلگت بلتستان کے ترجمان ہیں۔ اگر وزیراعلٰی گلگت بلتستان میں ایسا موقف بیان کیا جو نہ تین میں ہو نہ تیرہ میں تو ایسی صورت میں عوام خاموش نہیں رہیں گے۔ گلگت بلتستان کے عوام ان سے واضح اور دو ٹوک موقف چاہتے ہیں اور ایک عرصے سے منتظر ہیں۔

وحدت نیوز(اسلام آباد) گلگت بلتستان میں ن لیگ انتقامی سیاست پر اترآئی ہے،صوبائی سیکرٹری سیاسیات مجلس وحدت مسلمین گلگت بلتستان کی گرفتاری وزیر اعلیٰ ن لیگی کابینہ کی ایما پر عمل میں لائی گئی،دیوار سے لگانے کی کوشش کی تون لیگ کو اس کی بھاری قیمت ادا کرنی پڑیگی،الیکشن کو ہائی جیک کرکے ہمارے مینڈیٹ پر شب خون مارنے کے بعد رہنماوُں کو ہراساں کیا جا رہا ہے،جسے ہم ہرگز قبول نہیں کریں گے،ان خیالات کا اظہار مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے سربراہ علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے مرکزی رہنماوُں کے ہنگامی اجلاس سے خطاب میں کیا،اجلاس میں مرکزی سیکرٹری سیاسیات سید ناصر شیرازی و دیگر رہنماوں نے شرکت کی،اجلاس میں صوبائی سیکرٹری سیاسیات غلام عباس کی گرفتاری کی شدید مذمت کرتے ہوئے اسے ن لیگ کی جانب سے انتقامی کاروائی قرار دیا،اجلاس سے خطاب میں علامہ راجہ ناصر عباس جعفری کا کہنا تھا کہ ہم عدم تشدد اور رواداری کے سیاست کے حامی ہے ن لیگ کا وطیرہ ہے کہ وہ پولیس اور قومی اداروں کو اپنا ذاتی ملازم سمجھ کر سیاسی مخالفین کے خلاف ہمیشہ استعمال کرتی ہے،پاکستان دشمن خطرناک دہشت گردوں کو جیل سے فرار کرانے میں انہی کے کٹھ پتلی نگران حکومت نے کردار ادا کیا،انہوں نے کہا کہ گلگت بلتستان میں ہم کسی کی من مانی چلنے نہیں دینگے،ہم اس غیر اخلاقی غیر جمہوری اور غیر انسانی عمل کے خلاف خاموش نہیں رہیں گے،اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ علامہ راجہ ناصر عباس جعفری دیگر مرکزی رہنماوُں کے ہمراہ انہی دنوں میں گلگت بلتستان کا ہنگامی دورہ بھی کریں گے۔

وحدت نیوز (سکردو) مجلس وحدت مسلمین کے نو منتخب رکن قانون ساز اسمبلی کاچو امتیاز حیدر خان نے حلقہ ۲ سکردو کے بارے میں سید محمد علی شاہ کے ہتک آمیز بیان کی سختی سے مذمت کی اورواضح کیا کے سکردو حلقہ ۲ کے عوام کو بکائومال نہیں کے کوئی بھی خرید لے، حلقہ ۲ کے عوام انتہائی با شعور اور دین دار ہیں جو علماء کا احترام کرنا جانتے ہیں ، عوام نے الیکشن میں سب کے قابل اور اعلیٰ تعلیم یافتہ امیدوار کو کامیاب کروایا ہے، حلقہ ۲ کے عوام اور علماء کی توہین کسی صورت برداشت نہیں کریں گے، سکردو کے عوام کو اگر بکنا ہوتا تو ماروی میمن کے ہاتھوں بک جاتے،بینظیر انکم سپورٹ کے فارم کی لالچ کس نے دی،ماروی میمن کو گلی گلی کس پارٹی نے پھرایا، راتوں رات پیسے لے لے کر گھر گھر کون گیا ہمارے پاس سارے شواہد موجود ہیں اور کس کس نے پیسے ان کے منہ پر دے مارے ہمیں یہ بھی پتہ ہے، سید صاحب عوام اور علماء پر کیچڑاچھالنے سے بہتر ہے اپنی مشاورتی ٹیم مظبوط کریں ، اچھے لوگوں کو مشاور بنائیں ، سکردو حلقہ ۲ میں ن لیگ کا کوئی ووٹ بنک نہیں ۔

وحدت نیوز (اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین پاکستان شعبہ تبلیغات کے مرکزی سیکریٹری علامہ اعجاز حسین بہشتی نے گلگت بلتستان کے نو منتخب وزیراعلیٰ اور قائد حزب اختلاف کے بارے میں اپنے رائے کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ گلگت بلتستان میں شیعہ دشمن وزیراعلیٰ اُن علماؤں کے محنت کا نتیجہ ہیں جنہوں نے مکتب تشیع اور گلگت بلتستان کے حقوق کو نظر انداز کرتے ہوئے دہشت گردوں کے سرپرستوں اور ان کے سیاسی ونگ کو سپورٹ کیا ، ہم نے گلگت بلتستان میں اپنی حجت تمام کی ہےاور آخری حد تک اتفاق واتحاد کے لئے کوششیں کی ہیں لیکن جب ہمارے اپنے ساتھ نہ دیں تو یقیناًدشمن کو ہی آگے آنا تھا، مگر ہمیں اپنے امیدواروں اور گلگت بلتستان کے غیور عوام کے عزم و حوصلوں پر فخر ہیں، انشاء اللہ ہم نے اب بھی ہار نہیں مانا ہے ، مجلس وحدت مسلمین گلگت بلتستان کے آئینی حقوق کی جنگ کو اس وقت تک جاری رکھیں گے جب تک گلگت بلتستان کو آئینی حقوق نہیں دیے جاتے۔

علامہ اعجاز بہشتی کا مزید کہنا تھا کہ ہار جیت سیاسی میدان کا حصہ ہیں ،مجلس وحدت مسلمین کا اصل حدف محروم عوام کو ان کے حقوق دلانا اور ظالموں سے مقابلہ کرنا ہے، ہم گلگت بلتستان سمیت ملک کے ہر کونے میں مظلوموں کی آواز پر لبیک کہیں گے کامیابی ملنا یا نہ ملنا ہماری منزل نہیں ہیں، ہم مظلوم اور بے یارومددگار لوگوں کی مدد کرنا اور ان کی حقوق کی آواز کو بلند کرنا اپنا شرعی فریضہ سمجھ کر ادا کرتے ہیں، لہذا یا فتح نصیب ہوگی یا شہادت کو گلے لگایں گے مگر کھبی کسی ظالم کے سامنے نہیں جھکیں گے نہ ہی کسی کے حقوق کو پامال ہونے دیں گے۔

Page 1 of 17

مجلس وحدت مسلمین پاکستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے 


MWM Pakistan Flag

We use cookies to improve our website. Cookies used for the essential operation of this site have already been set. For more information visit our Cookie policy. I accept cookies from this site. Agree