وحدت نیوز (اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کی لیگل ایڈ کمیٹی کی کاوشوں سے اسلام آباد سے گرفتار ایم ڈبلیوایم کے تمام کارکنان اورعہدیداران کی ضمانت منظور ہوگئی ہے، انسداد دہشت گردی عدالت اسلام آباد میں پیشی کے موقع پر ایم ڈبلیوایم لیگل ایڈ کمیٹی کے رکن فضل عباس ایڈووکیٹ اور اجمل حسین زیدی ایڈووکیٹ نے فاضل جج کے روبرودرخواست ضمانت پیش کی جسے عدالت نے منظور کرتے ہوئے ایم ڈبلیوایم کے تمام کارکنان کو رہا کرنے کا حکم جاری کردیا، واضح رہے کہ ایم ڈبلیوایم آزاد کشمیر کے رہنما تصور موسوی، ذیشان حیدر، تہور عباس اور دیگر ساتھیوں کو 11ستمبر کی صبح اسلام آباد پولیس نے مرکزی سیکریٹریٹ پر چھاپہ مار کر گرفتار کر لیا تھا، تمام گرفتار کارکنان پر انسداد دہشت گردی ، کار سرکار میں مداخلت اور دیگر دفعات لگا کر بلا جواز حراست میں رکھا گیا، جو کہ سیلاب متاثرین کی بحالی کے آپریشن میں حصہ لینے اسلام آباد آئے تھے۔

وحدت نیوز(اسلام آباد) اسلام آباد پولیس کے ہاتھوں گرفتار ایم ڈبلیوایم کے کارکنان کی دوخواست ضمانت پر بحث  25ستمبر2014تک ملتوی کر دی گئی ہے، ایم ڈبلیوایم کے وکلاء ایڈوکیٹ سید اجمل حسین زیدی اور ایڈوکیٹ سید فضل عباس نقوی آج مورخہ 23ستمبر کو اسلام آباد انسداد دہشت گردی کی عدالت میں ایم ڈبلیو ایم کے اسیر کارکنان کی درخواست ضمانت پر بحث کرنے کےلئے پیش ہوئے۔جہاں پر حکومت کی طرف سے سرکاری وکیل کا تقرر نہ ہونے کے باعث درخواست ضمانت پر بحث مورخہ 25ستمبر2014تک ملتوی کر دی گئی۔اس موقع پر ایم ڈبلیوایم آزاد کشمیر کے سیکریٹری جنرل علامہ تصور حسین جوادی بھی موجود تھے، واضح رہے کہ ایم ڈبلیوایم کے مرکزی سیکریٹریٹ پر پولیس نے چھاپے کے دوران ایم ڈبلیوایم آزاد کشمیر کے رہنما تصور موسوی، ذیشان حیدر، تہور عباس اور دیگر کو انقلاب مارچ میں شرکت کے جرم میں گرفتار کر لیا تھا جن پر دہشت گردی کی مختلف دفعات نافذ کردی گئیں جبکہ کےیہ  کارکنان سیلاب متاثرین کی امداد کے حوالے سے جاری کاروائیوں میں مصروف تھے۔

وحدت نیوز(اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین پنجاب کے ڈپٹی سیکریٹری جنرل اور حکومت سے عوامی تحریک کی مذاکراتی کمیٹی کے رکن  سید اسد عباس نقوی کو دو روز بعد اسلام آباد پولیس نے رہا کر دیا، جبکہ ایم ڈبلیوایم کے باقی گرفتار کارکنان تا حال پولیس کی تحویل میں ہیں ، جن میں ایم ڈبلیوایم آزاد جموں کشمیر کے صوبائی رہنما بھی شامل ہیں ، واضح رہے کہ اسد عباس نقوی کو گذشتہ روز ایم ڈبلیوایم کے مرکزی سیکریٹریٹ سیکٹر جی سکس فورسے الصبح پولیس اور رینجرز کے اہلکاروں نے گرفتار کر کے نا معلوم مقام پر منتقل کردیا تھا، جس کے بعد پہلے مجلس وحدت مسلمین اور بعد ازاں پاکستان عوامی تحریک اور سنی اتحاد کونسل نے بھی حکومت کے ساتھ ہر قسم کے مذاکرات کو کارکنان کی رہائی تک موخر کر دیا تھا، مذاکرات میں تعطل کے پیش نظر پولیس نے نواز حکومت کی ایماءپرایم ڈبلیوایم کی مذاکراتی کمیٹی کے رکن اسد عباس کو رہا کر دیا ہے، لیکن اتحادی جماعتوں کے قائدین نے باہمی مشاور ت سے فیصلہ کیا ہے کہ ایم ڈبلیوایم ، پی اے ٹی اورایس آئی سی کے  تمام گرفتار کارکنان کی رہائی تک حکومت سے مذکرات کا عمل معطل رہے گا، اس حوالے سے اپوزیشن جرگے کے رکن سینیٹر رحمٰن ملک کو آگاہ کردیا گیا ہے۔

مجلس وحدت مسلمین پاکستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے 


MWM Pakistan Flag

We use cookies to improve our website. Cookies used for the essential operation of this site have already been set. For more information visit our Cookie policy. I accept cookies from this site. Agree