وحدت نیوز(اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین کے مرکزی سیکریٹری جنرل علامہ راجہ ناصرعباس جعفری نے وارثان شہدائے پاراچنار کے تین روز سے جاری احتجاجی دھرنے اور ان کے مطالبات کی حمایت میں اسلام آباد پریس کلب کے باہر قائم دھرنا کیمپ میں شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ سانحہ پاراچنارپر ریاستی اداروں کی مجرمانہ خاموشی نے آج ہمیں ایک مرتبہ پھر اس مقام پر دھرنا دینے پر مجبورکیا ہے، افسوس کا مقام ہے کہ سانحہ پاراچنار کو تین روز گزرگئے لیکن کسی حکومتی یا عسکری شخصیت کو متاثری کی داد رسی کی توفیق حاصل نہیں ہوئی۔

انہوں نے کہا کہ ہمارا یہ احتجاجی دھرناعلامتی نہیں بلکہ  پاراچنار میں گذشتہ تین روز سے جاری دھرنے اور وہاں کے عوام کے مطالبات کی منظوری سے مشروط ہے، جب تک پاراچنار کے غیور عوام دھرنے سے نہیں اٹھیں گے ہم بھی نہیں اٹھیں گے ، پوری قوم گھروں سے نکلنے کیلئے تیار رہے،  اور حکمرانوں اور ریاستی اداروں کی جانب سے  مطالبات کی منظوری میں تاخیر کے نتیجے میں دھرنا کا یہ سلسلہ پورے ملک کے طول عرض میں پھیل جائے گا۔انہوں نے اپنے خطاب میں شرکاءکو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ کیا پاکستان کے تمام شیعہ صرف دو گھنٹے کیلئے پورے پاکستان میں اپنے گھروں سے نکلنے کیلئے تیار ہیں ؟؟؟؟ جس پر تمام شرکاء نے لبیک یاحسین ؑ کے فلک شگاف نعروں سے تائید کا اعلان کیا۔

وحدت نیوز(اسلام آباد) سانحہ پاراچنار میں سو سے زائد بے گناہ شیعہ پاکستانیوں کے قتل عام کے خلاف آج نماز عید الفطر کے بعد مجلس وحدت مسلمین کی جانب سے نیشنل پریس کلب کے باہر احتجاجی ریلی نکالی گئی جو کہ بعد میں دھرنے میں تبدیل ہوگئی، مجلس وحدت مسلمین کے سربراہ علامہ راجہ ناصرعباس جعفری کی زیر قیادت پریس کلب کے باہر احتجاجی دھرنا کیمپ قائم کردیا گیا ہے جہاں جڑواں شہروں سے شہریوں کی بڑی تعداد کی آمد ورفت کا سلسلہ جاری جو کہ عید کی مصروفیات کے باجود دھرنا کیمپ  میں شریک ہوکر شہدائے پاراچنار سے اظہار یکجہتی کررہے ہیں  اس کے ساتھ ہی  سیاسی ومذہبی شخصیات ، ماتمی انجمنوں ، علمائے کرام سمیت سول سوسائٹی کے نمائندوں کی آمد کا سلسلہ بھی جاری ہے،سابق وزیر داخلہ اور پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنما رحمٰن ملک ، ملی یکجہتی کونسل کے مرکزی رہنما ثاقب اکبر نقوی نے بھی دھرنا کیمپ میں آکر شہدائے پاراچنار سے اظہار یکجہتی کیا ، تھوڑی دیر قبل نماز ظہرین باجماعت دھرنا کیمپ میں علامہ علی اکبر کاظمی کی زیر اقتداءادا کی گئی جس کے بعد ایس ایس پی اسلام آباد کیا نی نے علامہ راجہ ناصرعباس جعفری سے دھرناکیمپ میں ملاقات کی ان سے دھرنے کی وجوہات معلوم کیں اور گذارش کی عید الفطر میں پولیس نفری کی کمی کے باعث دھرنا دو روز موخر کردیں جسے علامہ راجہ ناصرعباس جعفری نے مسترد کردیا۔

وحدت نیوز(کراچی) مجلس وحدت مسلمین پاکستان، سنی اتحاد کونسل، پاکستان عوامی تحریک، سنی تحریک، مسلم لیگ ق کی جانب سے اسلام آباد میں جاری انقلاب مارچ کی حمایت میں نمائش چورنگی پراحتجاجی دھرنا دیا گیا۔ دھرنے میں بڑی تعداد میں مرد و خواتین نے شرکت کی۔ احتجاجی دھرنے میں شیر خوار بچے بھی شریک تھے۔ احتجاجی دھرنے کے شرکاءگو نواز گو، گو شہباز گو اور نواز حکومت کے خاتمے کے لئے نعرے بلند کررہے تھے۔ احتجاجی دھرنے میں مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکریٹری جنرل علامہ راجہ ناصرعباس جعفری نے خصوصی طور پرٹیلیفونک خطاب کیا۔ دھرنے میں ایم ڈبلیوایم کے رہنما علامہ علی انور جعفری، علی حسین نقوی، علامہ مبشر حسن، سنی اتحاد کونسل کے رہنما صاحبزادہ اصغر رضا، پاکستان عوامی تحریک کے رہنما خان محمد بلوچ سمیت دیگر رہنماو ں نے بھی خطاب کیا اور نواز حکومت کے خاتمے کے لئے اپنے خیالات کا اظہار کیا۔ اپنے خطاب میں علامہ راجہ ناصر عباس جعفری کا کہنا تھا کہ ہم نے مظلوموں کے حق کی آواز کو بلند کیا ہے، ظالموں کے خلاف ایک مقدس قیام ہے، موجودہ حکمران ظالم ہیں انہوں نے پورے ملک میں دہشت گردوں کی سرپرستی کی، ماڈل ٹاو ن سمیت راولپنڈی میں دہشت گردوں کو کھلی آزادی دی اور مظلوموں کا قتل عام کیا۔ ان کاکہنا تھا کہ انشاءاللہ پاکستان کے مظلومین ان ظالموں کو ان کے تخت شاہی سے اٹھا کر باہر پھینک دیں گے۔

 

علامہ راجہ ناصر عباس جعفری کا مزید کہنا تھا کہ عدالت کا سورج طلوع ہونے والا ہے، اس کے لئے استقامت کی ضرورت ہے، میں سب کو دعوت دیتا ہوں کہ ظلم کی سیاہ رات مٹانے کیلئے گھروں سے باہر نکلیں اور نواز حکومت کے خلاف اپنی آواز حق کو بلند کریں، یہ حکمران جعلی الیکشن کے ذریعے ہم پر مسلط کئے گئے ہیں، ہمارا قیام پاکستان کو حقیقی اسلامی جمہوریہ بنانے کے لئے ہے، سیاسی ڈاکوو ں سے اس ملت کو نجات دلانے کے لئے ہے، ہم کسی ظالم کو اپنے وطن پر مسلط نہیں رہنے دیں گے اور انشاءاللہ ظالموں کو عبرتناک انجام سے دوچار کریں گے۔ احتجاجی دھرنے سے خطاب کرتے ہوئے دیگر رہنماو ں کا کہنا تھا کہ شریف برادران کی حکومت نے سرزمین پاکستان کی حمیت کو آئی ایم ایف کے قرضوں کے آگے بیچ دیا ہے، نواز حکومت کا قائم رہنا وطن عزیز کی سلامتی کیلئے بہت بڑا خطرہ ہے، آج اگر ہم کو وطن عزیز کو بچانا ہے تو نواز شریف اور شہباز شریف کی حکومت کا خاتمہ کرکے ملک میں اصلاحات کرنے ہونگیں۔

وحدت نیوز(کراچی)مجلس وحدت مسلمین پاکستان کراچی ڈویژن کی جانب سے کراچی میں بڑھتی ہوئی شیعہ نسل کشی کے خلاف احتجاجی ریلی نکالی گئی اور دھرنا دیا گیا۔ ریلی کا آغاز مسجد خیرالعمل انچولی سے کیا گیا جو مقررہ راستوں سے ہوتی ہوئی شاہراہ پاکستان پہنچی جہاں شرکاء نے کاحتجاجی دھرنا دیا۔ ریلی میں بڑی تعداد میں شیعیان حیدر کرار (ع) نے شرکت کی اور نواز شریف کی وفاقی حکومت اور سندھ حکومت میں شامل تمام جماعتوں کے خلاف بھرپور نعرے بازی کی۔ احتجاجی ریلی کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے علامہ مبشر حسن،علی حسین نقوی، علامہ نثار قلندری، علامہ جعفر رضا نقوی، انجینئر رضا نقوی سمیت دیگر رہنماؤں نے خطاب کیا۔ اپنے خطاب میں رہنماؤں نے کہا کہ کراچی جو کہ پاکستان کی معاشی شہ رگ ہے اور ایک ایسا شہر ہے کہ جو پاکستان کے لئے عالمی شناخت رکھتا ہے، ایسے شہر میں منظم منصوبہ بندی کے تحت شیعہ افراد کی نسل کشی قابل مذمت ہے، سندھ حکومت میں شامل تمام سیاسی جماعتوں نے بھی شیعہ نسل کشی پر اپنی آنکھیں بند کی ہوئی ہیں ایسا محسوس ہورہا ہے کہ کالعدم جماعتوں کے تکفیری دہشت گرد سیاسی جماعتوں کی چھتری تلے کام کررہے ہیں،شیعہ نسل کشی کیخلاف اقدامات نہ کئے گئے تو وزیراعلیٰ ہاؤس کا گھیراؤ کریں گے۔

 

رہنماؤں نے مزید کہا کہ کراچی میں موجود سیاسی و مذہبی جماعتوں کو شہر میں قیام امن کیلئے اپنا کردار ادا کرنا ہوگا، شہر کراچی میں دہشت گردوں کے ہاتھوں ڈاکٹرز، وکلاء،تاجر برادری،طلباء و دیگر طبقات سے تعلق رکھنے والے افراد کی ٹارگٹ کلنگ شہر کی معاشی رگ کو کاٹنے کی سازش ہے، مجلس وحدت مسلمین ملک بھر میں دہشت گردوں کے خلاف سیسہ پلائی ہوئی دیوار ہے اور کسی بھی صورت ملک کو طالبان دہشت گردوں کے حوالے نہیں ہونے دے گی۔ رہنماؤں کا کہنا تھا کہ سیاسی جماعتیں بھی فقط بیان بازی کے بجائے عملی طور پر کراچی میں دہشت گردی اور شیعہ نسل کشی پر اپنی آواز بلند کریں تاکہ پاکستان کی معاشی شہ رگ کو کاٹنے کی سازش کو ناکام بنایا جاسکے۔

 

رہنماؤں نے مزید کہا کہ گزشتہ کئی عرصے سے مقامی ٹی وی چینلز پر اہل رسول (ع) کی شان میں گستاخی میں کئی واقعات رونما ہوئے ہیں، پیمرا اور وزارت اطلاعات کو چاہیئے کہ ان واقعات کا نوٹس لے اور خاموش تماشائی بننے کے بجائے اپنا کردار ادا کرے اور اس طرح کے اقدامات کرے کہ آئندہ کسی بھی چینل کو توہین اہل بیت (ع) کی جرات نہ ہوسکے۔ ایم ڈبلیو ایم کے رہنماؤں نے چیف جسٹس آف پاکستان اور آرمی چیف سے مطالبہ کیا کہ ملک بھر میں بالخصوص کراچی میں شیعہ نسل کشی کا سختی سے نوٹس لیا جائے اور شہداء کے قاتلوں کو تختہ دار پر لٹکایا جائے۔

pcr lhr protestوحدت نیوز (لاہور)  مجلس وحدت مسلمین لاہور کے زیراہتمام لاہور پریس کلب کے سامنے پارا چنار میں ہونے واے بم دھماکوں کے خلاف احتجاجی دھرنا جاری ہے، جس میں ہزاروں کی تعداد میں شہری شریک ہیں۔ اس دھرنے میں اہل تشیع کیساتھ ساتھ اہل سنت حضرات کی کثیر تعداد نے بھی اظہار یک جہتی کرتے ہوئے شمولیت اختایار کی جبکہ سنی تحریک کے رہنما مولانا محمد علی نقشبندی نے شرکاء سے خطاب بھی کیا۔ دھرنے کی قیادت ایم ڈبلیو ایم پنجاب کے سیکرٹری جنرل علامہ عبدالخالق اسدی، علامہ ابوذر مہدوی اور ایم ڈبلیو ایم لاہور کے سیکرٹری جنرل سید امتیاز کاظمی کر رہے ہیں۔ دھرنے کے شرکا دہشت گردی اور امریکہ و اسرائیل کے خلاف نعرے بازی کر رہے ہیں۔

دھرنے کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے سنی تحریک کے رہنما مولانا محمد علی نقشبندی نے کہا کہ ہم سانحہ پارا چنار کی بھرپور مذمت کرتے ہیں اور اس دل سوز سانحہ میں اپنے اہل تشیع بھائیوں کے ساتھ کھڑے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہم حکومت کو متنبہ کرتے ہیں کہ وہ دہشت گردوں کو لگام دے لے، اگر حکومت نے دہشت گردوں کو ان گھناؤنے جرائم کے ارتکاب سے نہ روکا تو پھر شیعہ اور سنی مل کر ان کا پاکستان سے صفایا کر دیں گے اور پھر پاکستان میں کوئی دہشت گرد دکھائی نہیں دے گا، اس طوفان میں حکومتی صفوں میں موجود دہشت گردوں کے سرپرستوں کا بھی صفایا کر دیں گے۔ انہوں نے کہا کہ اس سے پہلے کہ شیعہ اور سنی مل کر اس کا کوئی علاج کریں، حکومت دہشت گردی کے خاتمہ میں سنجیدہ کردار ادا کرے۔

مجلس وحدت مسلمین پنجاب کے سیکرٹری جنرل علامہ عبدالخالق اسدی نے اپنے خطاب میں کہا کہ دہشت گردوں کی سرپرست حکومت کے اپنے ایوانوں میں بیٹھے ہوئے ہیں، ہم ایک عرصے سے دہشت گردی کا شکار چلے آ رہے ہیں، لیکن حکومت کے کانوں پر جوں تک نہیں رینگی، ہمارے ساتھ ہمارے سنی بھائیوں کو بھی نشانہ بنایا گیا، مزاروں اور درباروں پر حملے کئے گئے اور ہمارے اہل سنت بھائی بھی دہشت گردی کا شکار ہو کر آج ہماری صف میں شامل ہوچکے ہیں، شیعہ سنی کا یہ اتحاد واضح کرتا ہے کہ پاکستان میں شیعہ سنی کے درمیان کوئی جھگڑا نہیں، بلکہ یہ دہشت گرد امریکی و استعماری ایجنٹ ہیں، جن کا اسلام سے کوئی تعلق نہیں۔

علامہ ابوذر مہدوی نے کہا کہ ہم اپنے قائد علامہ ناصر عباس جعفری کے حکم پر آج پریس کلب کے سامنے جمع ہوئے ہیں اور سانحہ پارا چنار کے ملزموں کی گرفتاری تک ہم پریس کلب کے سامنے سے نہیں اٹھیں گے۔ انہوں نے کہا کہ دھرنے میں شہریوں کی تعداد وقت گزرنے کیساتھ بڑھتی جا رہی ہے اور ہماری قوم اپنی قیادت کے حکم پر ہمیشہ لبیک کہتی آئی ہے، آج کا یہ دھرنا حکومت کے لئے پیغام ہے کہ وہ دہشت گردوں کے سرپرستوں کو اپنے ایوانوں سے نکال باہر کرے اور پاراچنار بم دھماکوں سمیت دہشت گردی کے دیگر واقعات میں ملوث تمام دہشت گردوں کو گرفتار کرکے کیفر کردار تک پہنچایا جائے۔

دھرنے میں مردوں کے ساتھ ساتھ خواتین اور بچوں کی بھی کثیر تعداد شریک ہے اور دھرنا رات گئے تک جاری رہنے کا امکان ہے۔ جب ’’اسلام ٹائمز‘‘ کے نمائندے نے ایم ڈبلیو ایم کے ترجمان مظاہر شگری سے دریافت کیا کہ یہ دھرنا کب تک جاری رہے گا تو ان کا کہنا تھا کہ ہم نے یہ دھرنا اپنی اعلٰی قیادت کی ہدایت پر دیا ہے اور جب تک وہ اسے ختم کرنے کا نہیں کہیں گے، ہم شملہ پہاڑی چوک کو نہیں چھوڑیں گے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ملت تشیع بیدار ہے اور ہمارے ساتھ ہمارے اہلسنت بھائیوں کا ساتھ بھی ہے، کیونکہ دہشت گردی صرف شیعوں کا مسئلہ نہیں بلکہ یہ پاکستان کا مسئلہ ہے اور ہر محب وطن پاکستانی ہمارے کاز کی حمایت کر رہا ہے۔ آخری اطلاعات تک دھرنا جاری تھا اور اس میں شرکاء کی تعداد میں مزید اضافہ ہوتا جا رہا تھا۔

hyd protest peshawarوحدت نیوز (حیدرآباد) پشاور میں شہید علامہ عارف حسین الحسینی کی جائے شہادت اور جامعہ مسجد میں گذشتہ روز ہو نے والے  خودکش حملے اور بیگناہ نمازیوں کے قتل عام کے خلاف مجلس وحدت مسلمین پاکستان صوبہ سندھ ضلع حیدرآباد کی جانب سے پریس کلب پر احتجاجی دھرنا دیا گیا۔ دھرنے کی قیادت ایم ڈبلیو ایم حیدرآباد کے سیکریٹری جنرل علامہ امداد علی نسیمی نے کی جبکہ اس موقع پر دیگر علمائے کرام بھی موجود تھے۔

شرکائے دھرنا پشاور بم دھماکے میں ملوث دہشت گردوں کی فوری گرفتاری کے لئے نعرے بازی کر رہےتھے ، جبکے انہوں نے ہاتھوں میں بینر اور پلے کارڈ اٹھا رکھے تھے ، جن پر دہشت گردی کی مذمت میں نعرے درج تھے ۔یہ احتجاجی علامتی دھرنا دو گھنٹے تک جاری رہنے کہ بعدپر امن طور پر منتشر ہو گئے ۔

مجلس وحدت مسلمین پاکستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے 


MWM Pakistan Flag

We use cookies to improve our website. Cookies used for the essential operation of this site have already been set. For more information visit our Cookie policy. I accept cookies from this site. Agree