وحدت نیوز(کراچی) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ ناصر عباس جعفری کی اپیل پر پیر کے روز ملک بھر میں فلسطینی عوام سے اظہار یکجہتی اور غاصب اسرائیل کے غزہ پر جاری انسنایت سوز مظالم کے خلاف ملک بھر میں یوم احتجاج منایا گیا ، ملک بھر کی طرح کراچی میں بھی مجلس وحدت مسلمین کراچی ڈویژن کے زیر اہتمام غزہ کے مظلومین کے ساتھ ہمدردی کے لئے احتجاجی مظاہرہ کراچی پریس کلب کے سامنے کیا گیا جس میں خواتین اور مردوں سمیت بچوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی، مظاہرین نے ہاتھوں میں بینرز اور پلے کارڈز اٹھا رکھے تھے جن پر غزہ کے مظلوم عوام سے اظہار ہمدردی کے لئے نعرے اور جملے آویزاں تھے، شرکائے احتجاجی مظاہرہ نے سروں پر سرخ پٹیاں باندھ رکھی تھیں اور ہاتھوں میں فلسطینی پرچم بھی اٹھا رکھے تھے، شرکائے احتجاجی مظاہرہ غزہ پر ڈھائے جانے والی صیہونی مظالم کے خلاف نعرے بلند کر رہے تھے اور غزہ پر حالیہ اسرائیلی جارحیت کا ذمہ دار عالمی سامراج اور شیطان بزرگ امریکہ کو قرار دیتے ہوئے مردہ باد امریکہ اور اسرائیل نا منظور سمیت اقوام متحدہ اور او آئی سی سمیت عالمی انسانی حقوق کے اداروں کے خلاف زبردست نعرے بازی کر رہے تھے۔

 

مجلس وحدت مسلمین کراچی کے تحت منعقد ہونے والے احتجاجی مظاہرے میں مولانا باقر زیدی، علامہ مبشر رضا، سید علی حسین نقوی، مولانا علی انور جعفری، میثم عابدی، حسن ہاشمی سمیت دیگر عہدیداروں نے شرکت کی اور مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ فلسطینیوں کی مدد اور نصرت کرنا ہر مسلمان پر فرض ہے اور ہم فلسطینیوں کی مدد اس وقت تک کرتے رہیں گے جب تک مسلمانوں کا قبلہ اول بیت المقدس بازیاب نہیں کروا لیا جاتا، انہوں نے حالیہ دنوں غاصب اسرائیل کی جانب سے غزہ کے نہتے اور معصوم عوام پر جاری انسانیت سوز مظالم کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے عالمی اداروں اور بالخصوص اقوام متحدہ سے مطالبہ کیا کہ وہ غزہ پر اسرائیلی جارحیت کو رکوانے میں مثبت کردار ادا کریں ۔

 

مقررین کاکہنا تھا کہ مسلم ممالک کے حکمرانوں نے غزہ پر جاری اسرائیلی جارحیت کی مذمت کرنے کے بعد خواب غفلت اختیار کر لی ہے جس کی جتنی مذمت کی جائے کم ہے ، انہوں نے کہا کہ عرب مسلم ممالک جن میں ترکی سمیت دیگر شامل ہیں ایک طرف تو غاصب اسرائیل کے ساتھ تعلقات قائم کئے ہوئے ہیں تو دوسری جانب اپنے عوام کو بے وقوف بنانے کے لئے چند ملین ڈالروں کی امداد کا اعلان بھی کرتے ہوئے نظر آتے ہیں انہوں نے کہا کہ عالمی برادری سمیت مسلم ممالک اور عربوں کو دہرا معیار ختم کرنا ہو گا اور فلسطینیوں کی آزادی کے لئے سنجیدہ جدوجہد کرناہو گی۔

 

مقررین نے پاکستان کے عوام سے اپیل کی ہے کہ وہ رمضان المبارک کے آخری جمعہ جمعۃ الوداع کو یوم القدس کے طور پر مناتے ہوئے گھروں سے نکل آئیں اور یوم القدس کے لئے نکالی جانے والی فلسطینی حمایت کی احتجاجی ریلیوں میں شریک ہو کر عالمی سامراجی قوتوں امریکہ اور اس کی ناجائز اولاد اسرائیل کے خلاف سراپا احتجاج بن جائیں۔

وحدت نیوز(ملتان) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی شعبہ مالیات کے زیراہتمام ملتان میں صوبہ پنجا ب کے 12 جنوبی اضلاع پر مشتمل پانچ شعبوں (مالیات ، خیرالعمل ، روابط،یوتھ اور تنظیم سازی) کے مسؤلین کی تربیتی ورکشاپ اور افطار ڈنر کا اہتمام یوتھ ونگ کے مرکزی آفس میں کیا گیا۔مالیات کے شعبہ کولیکشن پروگرام کے مرکزی و شعبہ خیرالعمل فاونڈیشن پنجاب کے مسؤل سید مسرت حسین کاظمی،مرکزی سیکرٹری روابط ملک اقرار حسین ،مرکزی سیکرٹری امور جوانان و حدت سکاوٹس سید فضل عباس نقوی،مرکزی سیکرٹری تنظیم سازی یعقوب حسینی،صوبائی ڈپٹی سیکرٹری جنرل اور مسؤل امور اسیران ویلفئیر سید اسد عباس نقوی،صوبائی سیکرٹری تنظیم سازی ظفر عباس چشتی،صوبائی سیکرٹری مالیات رائے نا صر،صوبائی سیکرٹری روابط علی رضا طوری،صوبائی سیکرٹری امور شہداء سید اظہر کاظمی کے ساتھ ساتھ پنجاب کے جنوبی اضلاع سے کثیر تعداد میں تنظیمی برادران نے شرکت کی۔

 

ورکشاپ سے خطاب کرتے ہوئے مالیات کے شعبہ کولیکشن پروگرام کے مرکزی و شعبہ خیرالعمل فاونڈیشن پنجاب کے مسؤل سید مسرت حسین کاظمی نے مجلس وحدت مسلمین کی خودانحصاری کا مرکزی مالیاتی پروگرام پیش کیا۔انہوں نے رہبر معظم کی تقریرکا حوالہ دیتے ہو ئے کہا کہ مادی نظریات کی بنیاد پر چلنے والی دنیا میں کمزور کی موت فطری امر ہے۔اگر قوم بیدار نہیں ہوتی، خود کو طاقتور نہیں بناتی تو دوسرے آکر من مانی کریں گے۔اس کے ساتھ زور زبردستی ہو گی،دنیا کی باج خواہ طاقتیں اس سے غنڈہ ٹیکس وصول کریں گی۔اگر ان کا بس چلے تو اس کمزور قوم کی توہین کریں اور بس چلے تو اس کو کچل دیں۔مادہ پرستانہ افکار کی بنیاد پر جودنیا چل رہی ہے اس کا مزاج یہی ہے۔جو بھی خود کو طاقتور پائے گا وہ کمزور دکھائی دینے والوں پر اپنی مرضی مسلط کرے گا، خواہ کمزور نظر آنے والا کوئی فرد ہو یا قوم ۔ بقول شاعر


ہے جرم ضعیفی کی سزا مرگ مفاجات


صرف ہتھیاروں کے بل بوتے پر کو ئی قوم طاقتور نہیں ہو سکتی۔کسی قوم کو طاقتور بنانے کے لئے تین عناصر بہت اہم ہیں۔ ایک ہے معیشت ،دوسرے ثقافت اور تیسرے علم و دانش۔رہبر معظم کی خواہش کے مطابق پہلے مرحلے میں ہم مزاحمتی معیشت یعنی اپنے ملک اور اپنی عوام کے اندر موجود صلاحیتوں اور استعداد و وسائل پر انحصار کرتے ہوئے اپنی قوم کو اس عوامی معیشت سے عوامی سرمائے اور عوامی شرکت سے خود انحصاری کیطرف گامزن کیا جائے گا۔جس کے لئے مجلس وحدت مسلمین نے ایک جامع مالیاتی پروگرام تشکیل دیا ہے ۔جس کا آغاز پورے ملک میں کردیا گیاہے۔اجلاس میں موجود تمام مرکزی ،صوبائی اور ضلعی مسؤلین نے اپنے آپ کو مجلس وحدت کے ڈونر کے طور پر اپنے آپ کو رجسٹرڈ کرایا۔

 

خیرالعمل فاونڈیشن کے حوالے سے بات کرتے ہوئے سید مسرت حسین کاظمی نے خیرالعمل فانڈیشن کے بارے میں بریفنگ دی، مختلف شعبوں اور طریق کار کے بارے میں بتایا۔ماہِ رمضان میں خدمات کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ ہر ضلع اپنے وسائل کے زریعے کم از کم دو سو ضرورت مندوں تک راشن پہنچائے ، ایک مناسب مقدار میں ضروریات کی اشیا اس پیکج میں شامل ہوں ،ہم اس کام کا آغاز اپنے آپ سے کریں، پہلا راشن کا پیکٹ اپنی طرف سے دیں ، مستحقین وہ لوگ جو کسی کے آگے دستِ سوال نہیں پھیلاتے ، ہمارا ٹارگٹ ہیں ، غیر محسوس طریقے سے عزتِ نفس کو مدِ مظر رکھتے ہوئے ان تک رسائی حاصل کی جائے اور آئمہ اطہار کے پیروکار ہونے کا ثبوت دیتے ہوئے کسی تشہیر کے بغیر ان کی مدد کی جائے ، یہ سلسلہ ڈونرز اور ضرورتمند کے درمیان رابطے کی صورت میں اگلے مہینوں میں بھی چلایا جا سکتا ہے ۔ رمضان کے آخری عشرے کو ایتام سے منسوب کیا جائے اور اس عشرے میں ملت کے یتیم بچوں بچیوں کی کفالت کے لئے انتظامات کئے جائیں ۔خیرالعمل فانڈیشن اس کام کا آغاز کر چکی ہے ،اس کام کو ماہِ مبارک رمضان میں مذید فعال بنایا جائے، ملت کا یہ طبقہ ہماری خاص توجہات کا متقاضی ہے، ملت کے مخیر حضرات کا ان ایتام سے رابطہ مستقل بنیادوں پر استوار کرانے میں ہمیں اپنا کردار ادا کرنا ہو گا۔

 

صوبائی ڈپٹی سیکرٹری جنرل اور مسؤل امور اسیران ویلفئیر سید اسد عباس نقوی نے اسیران ویلفئیر کی گزشتہ سال کی کارکردگی پیش کیا اور حاضرین کو بے گناہ اسیران اور ان کی فیملیزکی مشکلات سے آگاہ کیا اور مستقبل کے حوالے بے گناہ اسیران اور ان کی فیملیز کی معاونت کے بارے اپنے پروگرام سے آگاہ کیا۔

 

مرکزی سیکرٹری روابط ملک اقرار حسین اور صوبہ پنجاب کے سیکرٹری روابط برادر علی رضا طوری نے شرکا ورکشاپ کو روابط کے سہ ماہی پروگرام کی تفصیلات سے آگاہ کیا۔ تمام سیکرٹری روابط نے نہ صرف اپنے اضلاع کی تفصیلی صورتحال بیان کی بلکہ اس عزم کا اظہار کیا کہ شعبہ روابط تنظیمی ہم آہنگی اور تنظیمی روابط کو مضبوط سے مضبوط تر کرے گا اور تمام شعبہ جات کے درمیان پل کا کردار ادا کرتے ہوئے مجلس وحدت کے کاروان میں اپنا فعال کردار ادا کرتا رہے گا۔مرکزی سیکرٹری روابط نے شعبہ جاتی فعالیت کے علاوہ مجلس وحدت کی کلی صورتحال سے بھی اضلاع کو آگاہ کیا ۔ اس عزم کا اعادہ کیا گیا ہم انشااللہ ناصر ملت ، قائد وحدت کی دانشمندانہ قیادت میں ولایت کے پرچم تلے وحدت و استحکام کا سفر جاری رکھیں گے اور اس کاروان کو منزل تک پہنچائیں گے۔ مرکزی سیکرٹری روابط کے معاون برادر سید ممتاز نقوی نے بھی ورکشاپ کے انعقاد میں اپنا کلیدی کردار ادا کیا۔

 

مرکزی سیکرٹری تنظیم سازی یعقوب حسینی نے اپنے شعبے کے متعلق بریفنگ دی۔انہوں نے بتایا کہ الحمدللہ پاکستان کے تمام صوبوں بشمول آزاد کشمیر و گلگت بلتستان مجلس وحدت کا تنظیمی سٹریکچرموجود ہے۔انہوں نے بتایا کہ یہ شعبہ تنظیم میں ریڑھ کی ہڈی کی مانند ہے۔تمام اضلاع اپنے اپنے ضلع میں یونٹ سازی کا عمل تیز کریں۔

 

مرکزی سیکرٹری امور جوانان و و حدت سکاوٹس سید فضل عباس نقوی نے ضلعی مسؤلین کے سوالات کے جوابات دئیے۔ انہوں نے مجلس وحدت کی سیاسی، تنظیمی،شعبہ جاتی پالیسیوں سے آگاہ کیا اور ملت کو درپیش ملکی اور غیر ملکی مسائل خصوصاً عراق اور فلسطین میں جاری مشکلات سے مسؤلین کو آگاہی دی ۔اجلاس میں اسرائیل ،امریکہ اور امریکی نا جائز اولاد داعش کی پر زور مذمت کی گئی۔اور یوم القدس کو بھرپور جزبے کیساتھ منانے کی پلاننگ کی گئی۔

وحدت نیوز(لاہور) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکرٹری سیاسیات سید ناصرعباس شیرازی نے کہا ہے کہ اسرائیلی جارحیت پر امت مسلمہ کی خاموشی اس آگ کے بڑھاوے کا باعث بن سکتی ہے۔ لاہور میں آئی ایس او کے زیراہتمام متحدہ طلبا محاذ کے رہنماؤں اور صحافیوں کے اعزاز میں دیئے گئے افطار ڈنر سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اسرائیل امریکی سرپرستی اور یہودیت کی آشیرباد سے جارحیت کا ارتکاب کر رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اسرائیل مکڑی کے جالے سے بھی کمزور ہے لیکن وہ عرب حکمرانوں کی بے حسی کا فائدہ اٹھا رہا ہے۔ سید ناصر عباس شیرازی نے کہا کہ اسرائیل کو حزب اللہ کے جوانوں نے عبرت ناک شکست سے دو چار کیا اور حزب کو کمزور کرنے کے لئے ہی امریکہ اور اسرائیل نے داعش جیسی تنظیمیں  بنا کر ان کو مسلح کر کے مسلمانوں کے قتل عام اور شیعہ سنی تصادم کا ٹھیکہ دیدیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ داعش سے عرب سنیوں نے بھی اعلان لاتعلقی کیا ہے، یہی وجہ ہے کہ بہت جلد داعش کی بربریت کا سورج بھی غروب ہونے والا ہے۔

 

سید ناصر عباس شیرازی نے کہا کہ داعش کی حالیہ اسرائیلی بربریت کے دوران حقیقت بے نقاب ہو گئی ہے، اگر داعش مسلمان تنظیم ہوتی یا یہ مجاہدین اسلام ہوتے تو اپنے فلسطینی بھائیوں کی حمایت کے لئے فلسطین پہنچتے اور اسرائیل کا مقابلہ کرتے لیکن انہوں نے ایسا نہ کرکے اسرائیلی نمک خوار ایجنٹ ہونے کا ثبوت دے دیا ہے۔ سید ناصر شیرازی نے مزید کہا اس صورت حال میں نوجوانوں پر بھاری ذمہ داری عائد ہوتی ہے،وہ خود بھی بیدار رہیں اور ملت اسلامیہ کو بھی بیدار کریں۔ انہوں نے طلبا رہنماؤں پر زور دیا کہ وہ فرقہ واریت کے خاتمہ اور اتحاد امت کے لئے کردار ادا کریں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں بھی ایسی فضا بنائی جا رہی تھی لیکن مجلس وحدت مسلمین نے سنی اتحاد کونسل کے ساتھ اتحاد کا پرچم بلند کر کے دشمن کی ناپاک عزائم خاک میں ملا دیئے۔ انہوں نے کہا کہ طلبا تعلیمی اداروں کے ساتھ ساتھ معاشرے میں بھی اپنا کردار ادا کریں۔ انہوں نے متحدہ طلبا محاذ کے پلیٹ فارم کو مزید فعال بنانے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ اس سے جہاں طلبا کے تعلیمی اداروں میں بہت سے مسائل حل ہوتے ہیں وہاں اس پلیٹ فارم سے اتحاد ویکجہتی کا پیغام بھی جاتا ہے۔

وحدت نیوز(اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کی مرکزی کابینہ اور صوبائی مسئولین کا اہم اجلاس علامہ ناصر عباس جعفری کی زیر صدارت اسلام آباد میں منعقد ہوا۔ اجلاس میں ملکی سیاسی صورتحال اور حکومت مخالف الائنس کی تشکیل پر غور و خوض کیا گیا۔ اس موقعہ پر علامہ مقصود علی ڈومکی نے زائرین کے مسائل پر بریفنگ دی۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے سربراہ علامہ ناصر عباس جعفری نے کہا کہ نواز حکومت جعلی مینڈیٹ کے ذریعے برسر اقتدار آئی ہے۔ لہذا اس کا اقتدار غیر قانونی اور غیر آئینی ہے۔ طاہرالقادری اور اپوزیشن کی جانب سے دی گئی دعوت پر تفصیلی غور کے بعد ایم ڈبلیو ایم نے حکومت مخالف اپوزیشن الائنس کا حصہ بننے کا فیصلہ کر لیا۔ اس سلسلے میں پانچ رکنی کور کمیٹی تشکیل دی گئی جس کے ممبران علامہ محمد امین شہیدی، سید ناصر شیرازی، علامہ مقصود علی ڈومکی اور علامہ عبدالخالق اسدی ہونگے۔ ایم ڈبلیو ایم نے تفصیلی غور و خوض کے بعد گرینڈ الائنس کے لئے پانچ نکاتی ایجنڈا تیار کر لیا۔

وحدت نیوز(گلگت) مجلس وحدت مسلمین پاکستان گلگت بلتستان کے صوبائی ترجمان الیاس صدیقی نے کہا ہے کہ دہشت گردوں کیلئے نرم گوشہ رکھنے والی بعض سیاسی جماعتیں اور رہنماء دیامر میں انتہا پسندوں کے خلاف ٹارگیٹڈ آپریشن کی مخالفت کر کے علاقے کو وزیرستان بنانا چاہتی ہیں۔ اگر آج دیامر میں دہشت گردوں کا قلع قمع نہ کیا گیا تو کل دیامر کے عوام کی وہی حالت ہوگی جو آج وزیر ستان کے عوام کو درپیش ہے اور بعض سیاسی رہنما چند دہشت گردوں کو فائدہ دینے کیلئے دیامر کے پورے عوام کے ساتھ دشمنی نبھا رہے ہیں۔ مسلم لیگ (ن) کی دیامر میں آپریشن کی مخالفت سمجھ سے بالاتر ہے۔ انہوں نے کہا کہ چند دہشت گردوں کی بزدلانہ کاروائیوں نے دیامر کو پوری دنیا میں بدنام کر دیا ہے۔ مسلم لیگ ن بتائے کہ کیا سانحہ کوہستان، لولوسر، گونر فارم اور ننگا پربت پر غیر ملکی کوہ پیمائوں کا قتل عام معصوم عوام نے کیا ہے۔؟ ٹارگیٹڈ آپریشن کی مخالفت دراصل دیامر کے عوام کے ساتھ کھلی دشمنی ہے جبکہ دیامر کے پرامن عوام، سیاسی و مذہبی رہنماء آپریشن کی مکمل حمایت کر چکے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پورے گلگت بلتستان میں دہشت گردوں کے خلاف آپریشن کیا جائے تاکہ ان دہشت گردوں کو علاقے میں منظم ہونے کا موقع نہ مل سکے۔ وزیرستان آپریشن سے بچنے کی خاطر دہشت گردوں نے ملک کے دیگر علاقوں کا رخ کر لیا ہے اور گلگت بلتستان میں بھی ان دہشت گردوں کے داخلے کے خطرات موجود ہیں، صوبائی حکومت کی جانب سے اس سلسلے میں کوئی فول پروف انتظامات نظر نہیں آ رہے ہیں۔

وحدت نیوز( کراچی) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ ناصرعباس جعفری کی اپیل پر ملک بھر کی طرح کراچی میں  بھی’’یوم حمایت مظلومین فلسطین و عراق‘‘ منایا گیا اور غزہ پر صیہونی اسرائیلی حملوں اور عراق میں تکفیری داعش کی دہشت گردی کے خلاف زبردست احتجاجی مظاہرے کئے گئے،ملک بھر کی طرح کراچی میں بھی مجلس وحدت مسلمین کے تحت بعد نماز جمعہ فلسطینیوں کی حمایت میں احتجاجی مظاہروں کا انعقادکیا گیا اور مرکزی احتجاجی مظاہرہ خوجہ اثنا عشری مسجد کھارادر پر کیا گیا، غزہ پر صیہونی اسرائیلی بربریت اور عراق میں تکفیری داعش کی دہشت گردی کے خلاف مجلس وحدت مسلمین کے تحت منعقدہ احتجاجی مظاہروں میں سیکڑوں افراد نے شرکت کی ، مظاہرین نے ہاتھوں میں بینرز اور پلے کارڈز اٹھا رکھے تھے جن پر امریکہ مردہ باد، اسرائیل نا منظور، غزہ پر صیہونی جارحیت کی مذمت، تکفیری داعش کے خلاف ،فلسطین کی آزادی تک جنگ رہے گی، سمیت اقوام متحدہ پر سخت تنقید پر مبنی نعرے آویزاں تھے، احتجاجی مظاہروں میں امریکی اور صیہونی اسرائیلی پرچموں کو بھی نذر آتش کیا گیا۔

 

ملک بھر کی طرح کراچی میں مرکزی احتجاجی مظاہرہ خوجہ مسجد کھارادرکے باہر کیا گیا جس میں مجلس وحدت مسلمین پاکستان کراچی ڈویژن کے رہنماؤں مولانا علی انور جعفری،علامہ شیخ محمد علی ، علامہ مبشر حسن ،  علی حسین نقوی  سمیت کراچی کے سیکرٹری جنرل حسن ہاشمی نے خطاب کیا، مقررین کاکہنا تھا کہ گذشتہ پانچ روز میں غاصب اسرائیل نے غزہ پر سیکڑوں کی تعداد میں بم گرائے ہیں جس کے نتیجے میں ایک سو سے زائد معصوم فلسطینی شہید جبکہ سیکڑوں کی تعداد میں زخمی ہوئے ہیں،جس میں بڑی تعداد میں معصوم بچے اور خواتین ہیں۔

 

مجلس وحدت مسلمین پاکستان کراچی کے رہنماؤں نے غزہ پر جاری صیہونی جارحیت کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا کہ اب وقت گزر گیا ہے اور دنیا کو غاصب اسرائیل کی لفاظی مذمت سے آگے نکل کر عملی اقدامات اٹھانے ہوں گے ، انہوں نے حکومت پاکستان سے بھی مطالبہ کیا کہ بیانات کافی نہیں بلکہ عملی اقداما ت کئے جائیں اور پاکستان اسلامی دنیا سمیت اقوام عالم میں مسئلہ فلسطین کے حل کے لئے مثبت کردار ادا کرے، مجلس وحدت مسلمین کے رہنماؤں نے پاکستان کے عوام سے اپیل کی ہے کہ وہ مغربی اور بالخصوص اسرائیلی مصنوعات کا بائیکاٹ کر دیں اور حکومت پاکستان ملک میں موجود اسرائیلی اقتصادی کمپنیوں کے لائسنس معطل کر کے ان کمپنیوں پر پابندی عائد کرے، انہوں نے تمام مسلمان ممالک سے بھی اپیل کی کہ وہ غاصب اسرائیل اور شیطان بزرگ امریکہ کا بائیکاٹ کریں اور مغرب کی مصنوعات استعمال کرنے سے گریز کریں، انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان کے عوام فلسطینیوں کے ساتھ ہیں اور مصیبت کی اس گھڑی میں ہم فلسطینیوں کے ساتھ ہیں، اس موقع پر مظاہرین نے مردہ باد امریکہ،ا سرائیل نا منظور سمیت غزہ کے عوام کو تنہا نہیں چھوڑیں گے، فلسطین و القدس کی آزادی تک جد وجہد جاری رکھیں گے سمیت دہشت گردی مردہ باد کے نعرے لگائے اور مظاہرے کے اختتام پر امریکی اور صیہونی اسرائیلی پرچموں کو نذر آتش کیا گیا۔

مجلس وحدت مسلمین پاکستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے 


MWM Pakistan Flag

We use cookies to improve our website. Cookies used for the essential operation of this site have already been set. For more information visit our Cookie policy. I accept cookies from this site. Agree