وحدت نیوز (آرٹیکل) بڑی سے بڑی قربانی دیکر بھی ہمیں اپنی مذہبی اقدار اور ملکی سالمیت کیلے میدان میں آنا ہوگا، اور دہشتگردوں کے خاتمے کیلے جاری پاک آرمی کے آپریشن كی مكمل حمايت كرنا هوگی، نان ایشوز ميں الجهانے والے سياست دانوں اور حكمرانوں سے خير كی توقع نہيں كی جاسكتی۔ جو يہ سمجھہ رہے ہیں كہ سعودی عرب جيسا نظام نماز لا كر دہشتگردی كو روكا جا سكتا ہے اور عبد و معبود كے معنوی اور مقدس رشتے كو زبردستی كے نظام سے جوڑا جا سكتا ہے، 23 مارچ كو يہ عہد كرنا ہو گا كہ ہم مذہبی آزادی کے لے حاصل کردہ اس مملکت کو ظلم و جبر كي سلطنت ميں تبديل نہیں ہونے دينگے۔ اور بانی پاکستان قائد اعظم محمد علی جناح (رہ) اور مصور پاکستان علامہ اقبال (رہ) کے فکری دشمنوں کے چنگل سے مملکت خداد داد پاکستان کو آزاد کرینگے۔


 
تحریر: ڈاکٹر سید شفقت حسین شیرازی

 

برصغير كے مسلمانوں نے اس عزم و يقين كيساتھہ قراداد پاكستان 23 مارچ 1940ء كو منظور کی كہ ہم ہر قيمت پر پاكستان كو حاصل كر كے رہینگے. تاكہ اپنی مذہبی رسوم كو مكمل آزادی كيساتھ  ادا كر سكيں اور انكا پرجوش نعره آج بهی فضاوں ميں گونج رها ہے، "ہم لے كے رہینگے آزادی" اور اسی مشن كی خاطر بے پناہ قربانياں ديكر یہ ملك حاصل كيا۔ ليكن پاكستان بننے كے تقريباً 30 سال بعد بيرونی طاقتوں كے تعاون سے ايك ايسا مائنڈ سيٹ پاكستان پر مسلط ہوگیا كہ جس نے اپنی سياسی,، عسكری طاقت سے مذہبی آزادی كا گلا گھونٹنا شروع كر ديا۔ انسانی، دينی و سياسی حقوق كی پامالی كي بدترين مثال اور ظلم و جبر پر قائم بادشاہت و ملوكيت كے نظام (سعودی نظام) كو پاكستان ميں نافذ كرنے كي ٹھان لی۔ اور قومی و ملى مفادات كو پس پشت ڈال كر ڈالروں اور ريالوں کی شکل میں خصوصی مراعات كی خاطر خطے ميں استعماری اشاروں پر بننے والی تحلفات كا حصه بننے كی پالیسی اختيار كي گئی۔

 

دوسري طرف مذهبی آزادی سلب كرنے كي پاليسی كو آگے بڑھایا گیا، كبهی عيد ميلاد النبی صلى الله عليه و آله وسلم كے جلوسوں کے سامنے ركاوٹيں ڈالنے كی كوشش گئی اور كبهی عزادری نواسه رسول خدا (ص) كو روكنے اور محدود كرنے كيلے شيعہ مذہب كو دہشتگردی كا نشانہ بنايا گيا۔ 30 فیصد پاكستان (شیعہ) كی نسل كشي كی گئی اور باقی 50 فیصد پاكستان (اہل سنت بريلويوں) كے دينی و مذہی شعور كو مجروح كيا گیا اور انهيں محروميوں ميں دهكيل ديا گيا۔ اسی طرح اقليتوں كا بهی جينا حرام كر ديا گيا۔ كبهی وطن عزیز كی فضاء ميں درود و سلام پڑھنے پر پابند سلاسل كيا جاتا ہے اور كبھی پرامن شہيوں پر بے بنیاد کیسز بنا کر انہیں حراساں کیا جاتا ہے۔ اور دوسری طرف پاكستان اور پاكستانی عوام كے دشمن اور انكی حمايت اور سرپرستی كرنے والے مكمل آزاد ہیں جبکہ ان کے شر سے نہ مسجدیں اور امامبارگاہیں محفوظ ہیں اور نہ کلیسا، مندر اور كردوریں، نہ سکولوں کے بچے محفوظ ہیں نہ عسکری، سرکاری، و تجارتی مراکز۔ ہر شہری بارود كے ڈھیر میں زندگی کر رہا ہے، اور اسے نہیں معلوم کب، کہاں اور کیسے دھماکہ ہوگا۔

 

یعنی پاکستان کا ہر شہری آج موت اور حیات کی کشمکش میں زندگی بسر کر رہا ہے، حتیٰ 23 مارچ اور 14 اگست جیسے قومی دن بھی سخت سکیورٹی کے بغیر منانا ناممکن ہوگیا ہے، ملک جل رہا ہے اور تباہی کے دہانے پر ہے جبکہ دہشت گرد اور انکے سرپرست مولوی جو حکومت کی رٹ کو چلنج کرنے کے باوجود دارالحکومت اسلام آباد میں بیٹھ کر حکومت کو دھمکیاں دے رہے ہیں ان کے خلاف کارروائی کی کسی کو جرات نہیں ہوتی، اور بدقسمتی یہ ہے كہ دہشت گردی كی پنيری لگانے والے اور اسكے بيج بونے والے انكے خلاف كارروائيوں پر مامور ہیں۔ لہذا آج ايك بار پهر ہر محب وطن اور انسانيت دوست پاكستانی شہری كو 23 مارچ 1940ء کے عزم و يقين سے تجدید عہد کرتے ہوئے ملك كو تكفيريت كے اس فتنہ سے نجات دلانےكيلئے ہاتهوں ميں ہاتھ ڈال كر ملى وحدت و اخوت كا عملى مظاهره كرنا هو گا۔

 

بڑی سے بڑی قربانی دیکر بھی ہمیں اپنی مذہبی اقدار اور ملکی سالمیت کیلے میدان میں آنا ہوگا، اور دہشتگردوں کے خاتمے کیلے جاری پاک آرمی کے آپریشن كی مكمل حمايت كرنا هوگی، نان ایشوز ميں الجهانے والے سياست دانوں اور حكمرانوں سے خير كی توقع نہيں كی جاسكتی۔ جو يہ سمجھہ رہے ہیں كہ سعودی عرب جيسا نظام نماز لا كر دہشتگردی كو روكا جا سكتا ہے اور عبد و معبود كے معنوی اور مقدس رشتے كو زبردستی كے نظام سے جوڑا جا سكتا ہے، 23 مارچ كو يہ عہد كرنا ہو گا كہ ہم مذہبی آزادی کے لے حاصل کردہ اس مملکت کو ظلم و جبر كي سلطنت ميں تبديل نہیں ہونے دينگے۔ اور بانی پاکستان قائد اعظم محمد علی جناح (رہ) اور مصور پاکستان علامہ اقبال (رہ) کے فکری دشمنوں کے چنگل سے مملکت خداد داد پاکستان کو آزاد کرینگے۔ انشاء اللہ۔

وحدت نیوز (لاہور) مجلس وحد ت مسلمین پنجاب کے سیکرٹری جنرل علامہ عبدالخالق اسدی نے کہا ہے کہ غیر جماعتی بنیادوں پر بلدیاتی ا نتخابات کر وانا جمہو ریت کی نفی ہو گی ‘(ن) لیگ کو اپنا آمر انہ اور غیر جمہو ری رویہ ختم کرنا ہو گا ورنہ انکا حشر ماضی کے حکمرانوں سے مختلف نہیں ہو گا‘ کرپٹ حکمرانوں کاا قتدار ذیادہ دیر نہیں چلے گا ملک میں دہشت گردی ،قتل ، اغواء برائے تاوان ، ڈکیتی ،سٹریٹ کرائم ،بچوں اور عورتوں کے ساتھ زیادتی سمیت جرائم میں ریکارڈ اضافہ ہو چکا ہے ۔ اپنے دفتر میں بہاولنگر سے سید قمر رضا بخاری کی قیادت میں آنے والے پانچ رکنی وفد سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ کرپٹ حکمرانوں کاا قتدار ذیادہ دیر نہیں چلے گا ملک میں دہشت گردی ،قتل ، اغواء برائے تاوان ، ڈکیتی ،سٹریٹ کرائم ،بچوں اور عورتوں کے ساتھ زیادتی سمیت جرائم میں ریکارڈ اضافہ ہو چکا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ حکمران سر مایہ کاروں کو سہولتیں دیتے ہیں مگر غر یبوں کا خون نچوڑا جا رہا ہے، ا گر عوام کو ریلیف نہیں دے سکتے تو حکمران فوری طور پر اقتدار چھوڑ دیں ۔انہوں نے کہا کہ جمہو ریت میں بلدیاتی انتخابات جماعتی بنیادوں پر ہو تے ہیں اور ہمارا بھی مطالبہ ہے کہ پنجاب سمیت چاروں صوبوں میں بلدیاتی انتخابات جماعتی بنیادوں پر ہی ہو نے چاہیے تاکہ عوام اپنے ووٹ کے ذریعے اپنی مر ضی کی سیاسی جماعتوں کو ووٹ دے کر ان کے حق میں اپنا عوامی فیصلہ سنا سکیں ۔

وحدت نیوز(کوئٹہ) مجلس وحدت مسلمین کے صوبائی دفتر میں یوم پاکستان کی مناسبت سے پرچم کشائی کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مجلس وحدت مسلمین کے رکن شوریٰ عالی علامہ ہاشم موسوی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ملکی سلامتی اور قیام امن کے لیے ہر فرد کو اپنا کردار ادا کرناہوگا۔قومیں اپنی اصلاح کرکے آگے بڑھتی ہیں۔ پاکستان اس وقت بد ترین حالات سے دوچار ہے اور دہشت گردی کے علاوہ طبقاتی نظام ، سیاسی کرپشن ، اختیارات کے ناجائز استعمال ، مہنگائی، بے روزگاری، توانائی بحران اور زندگی گزارنے کی سہولیات کے فقدان کے باعث لوگ مایوس ہوچکے ہیں۔پاکستان معاشی طور پر بدحالی کا شکار ہے جس کی ذمہ دار موجودہ حکمران ہے۔ حکمران ملک اور عوام کے ترقی پر توجہ دے ہم آج جو کچھ بھی ہیں وہ سب اسی پاکستان کی بدولت ہے۔ 23 مارچ 1940ء کو قرارداد پاکستان کی صورت میں مسلم اکثریتی علاقوں کے لیے آزادی اور خود مختاری کا مطالبہ کیا گیا تھا۔ لیکن قیام پاکستان کے بعد مختلف حکومتوں کی غلط پالیسیوں کے باعث مختلف صوبوں اور قوموں کے درمیان فاصلے پیدا ہوگئے۔پاکستان ایک وفاق ہے اور اگر وفاقیت کی روح پر عمل کیا جائے تو کوئی وجہ نہیں کہ تمام وفاقی اکائیوں کے درمیان غلط فہمیاں دور ہواور وفاق کے استحکام کو یقینی بنایا جا سکے۔ ہمیں ایسے معاشرے کے قیام کے لیے جدوجہد کرنا چاہیے جہاں ہم آہنگی ، برداشت ، امن ، خوشحالی کا راج ہو اور وہاں لوگ امن سے رہ سکیں اور اپنی ترقی کا سفر طے کریں۔پرچم کشائی کی تقریب میں مجلس وحدت مسلمین کے ڈویژنل سیکریڑی جنرل عباس علی ، ڈپٹی سیکریڑی جنرل شیخ ولایت حسین جعفری، سیکریڑی سیاسیات کامران حسین ، کونسلر کربلائی رجب علی ، کونسلر عباس علی ، کونسلر سید مہدی اور علاقے کے دیگر لوگوں نے بھی کثیر تعداد میں شرکت کیں۔

وحدت نیوز (کراچی) مجلس وحدت مسلمین کراچی ڈویژن کی پولیٹیکل کو رکمیٹی کا اجلاس ڈویژنل سیکریٹری امور سیاسیات سید علی حسین نقوی کی زیر صدارت وحدت ہاوس کراچی میں منعقد ہوا، جس میں کراچی کے تمام اضلا ع کا سیکریٹری جنرل اور سیکریٹری امور سیاسیات صاحبان شریک ہوئے، شرکائے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے علی حسین نقوی نے کہا کہ مجلس وحدت مسلمین پاکستان نے بلک بھر سے بلدیاتی انتخابات میں شرکت کا فیصلہ کیا ہے ، کراچی کے مختلف حلقوں سے امیدوار بلدیاتی انتخابات میں کھڑے کیئے جائیں گے،ایم ڈبلیوایم اپنی اتحادی اور ہم خیال جماعتوں سے بھی رابطے میں ہے بعض حلقوں میں مشاورت کے بعد اتحادی جماعتوں کے امیداروں کو سپورٹ بھی کیا جائے گا اور ان سے اپنے امیدواروں کی حمایت بھی حاصل کی جائے گے، انہوں نے پولیٹیکل کور کمیٹی کے ممبران کو ہدایات جاری کیں گے وہ اپنے اپنے اضلاع کے الیکشن کمشنرز سے جلد ملاقاتیں کرکے بلدیاتی انتخابات کا شیڈول اور حلقہ بندیوں کی تفصیلات طلب کریں ۔

وحدت نیوز (اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کادو روزہ سالانہ مرکزی تنظیمی و تربیتی  کنونشن 5 - 4اپریل کو اسلام آباد میں منعقد ہوگا، اس بات کا اعلان مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکریٹری فلاح و بہبود اور چیئرمین کنونشن نثار فیضی نے مرکزی سیکریٹریٹ سے جاری اپنے ایک بیان میں کیا، ان کا کہنا تھاکہ ایم ڈبلیوایم پاکستان کے مرکزی کنونشن کا آغاز 4اپریل بروز ہفتہ صبح 10بجے جامعہ امام صادق ؑ کراچی کمپنی میں ہوگا، جبکہ دو روز جاری رہنے والا یہ کنونشن 5اپریل بروز اتوار کی شام اختتام پزیر ہوگا، جس میں ملک بھر سے ضلعی ، ڈویژنل ، صوبائی اور مرکزی رہنماشریک ہونگے، کنونشن میں سال گذشتہ کی کارکردگی کا جائزہ لینےکے ساتھ ساتھ آئندہ سال کے سالانہ پروگرامات کی منظوری لی جائے گی، کنونشن کودو سیشنز اورچار نشستوں  میں تقسیم کیا گیا ہے، پہلے سیشن کی پہلی نشست شہید ڈاکٹر محمد علی نقوی کے نام سے موصوم ہو گی، جبکہ دوسری نشست شہیدآیت اللہ باقر الصدرکے نام سے موصوم ہوگی، دوسرے سیشن کی پہلی نشست شہید قائد علامہ عارف حسین الحسینی اور دوسری اور آخری نشست  حضرت امام خمینی کے نام سے موصوم ہو گی، کنونشن کی مختلف نشستوں میں دروس، سیمینارز، محفل مذاکرہ، احتسابی عمل اور ڈاکومیٹریز کا بھی اہتمام کی جائے گا۔جبکہ کنونشن کے اختتام پر مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکریٹری جنرل علامہ ناصرعباس جعفری پالیسی ساز خطاب کریں گے، جبکہ میڈیا بریفنگ بھی دی جائے گی۔

وحدت نیوز (کراچی) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کراچی ڈویژن کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل علامہ مبشر حسن نے کہا ہے کہ کے الیکٹرک کی جانب سے ایام فاطمیہ کے موقع پر عزاداری کے اجتماعات کے دوران لوڈشیڈنگ کرنا دہشت گردوں کو دہشت گردی کا موقع فراہم کرنے مترادف ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے ایام فاطمیہ کی مناسبت سے جاری مجالس کے موقع پر جعفر طیار سوسائٹی کے دورہ کے موقع پر معززین سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ علامبشرحسن کا کہنا تھا کہ ایک طرف تو سندھ پولیس، رینجرز اور پاک افواج دہشت گردوں کے خلاف سینہ سپر ہیں اور کی تمام تر سازشوں کو ناکام بنانے کیلئے کمر بستہ ہیں تو وہیں دوسری جانب کے الیکٹرک مجالس عزا کے دوران لوڈشیڈنگ کرکے دہشت گردوں کو دہشت گردی کا موقع فراہم کررہی ہے، ہم کے الیکٹرک کے ذمہ دار افراد کو متنبہ کرتے ہیں کہ ایام فاطمیہ کی مجالس کے دوران کسی بھی قسم کی دہشت گردی کا واقعہ پیش آیا تو کے الیکٹرک کی انتظامیہ کو بھی اس میں شامل سمجھا جائے گا، لہٰذا کے الیکٹرک لوڈشیڈنگ کے دورانیہ میں کمی کرتے ہوئے لوڈشیڈنگ کے اوقات میں تبدیلی کرے تاکہ دہشت گردوں کو کسی بھی قسم کا موقع فراہم نہ کیا جاسکے۔ انہوں نے صوبائی حکومت سمیت ارباب اقتدار سے بھی مطالبہ کیا کہ ایام فاطمیہ کے موقع پر لوڈشیڈنگ کانوٹس لیتے ہوئے کے الیکٹرک کے خلاف فوری کاروائی کرے ۔

مجلس وحدت مسلمین پاکستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے 


MWM Pakistan Flag

We use cookies to improve our website. Cookies used for the essential operation of this site have already been set. For more information visit our Cookie policy. I accept cookies from this site. Agree