وحدت نیوز(کوئٹہ) مجلس وحدت مسلمین کے زیر اہتمام بروز جمعتہ المبارک پورے پاکستان کی طرح کوئٹہ میں بھی یوم مذمت طالبان اور ٹاریٹ کلنگ کیخلاف احتجاجی مظاہرہ کیا گیا ۔احتجاجی مظاہرے سے MWMکوئٹہ ڈویژن کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل علامہ ولایت حسین جعفری خطاب کرتے ہوئے کہاکہ آج طالبان سمیت دہشت گرد عناصر پاکستان کے لئے تباہی کا سامان ہے یہ تمام دہشت گرداورکالعدم تنظیمیں غلط خارجہ پالیسی کا نتیجہ ہے ۔جس کی وجہ سے مملکت خداداد پاکستان شدید خطرات سے درچار ہیں ۔ اب تو یہ بات روز روشن کی طرح عیاں ہوچکی ہیں کہ یہی دہشت گرد اسلام و پاکستان دشمن عناصر کے ہاتھوں میں کھیل رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ یہ دہشت گرد عناصر پاکستان کے انتہائی حساس مقامات ، فوج اور عوام کو نشانہ بناچکی ہے لہٰذا یہ مفسد فی الارض ہے اور باغی ہے شریعت اور عقل کی رو سے ان کے خاتمے میں ہی پاکستان کی بقاء اور امن کی ضمانت ہے۔ امریکی ،اسرائیلی ودیگر شیطانی طاقتوں کی ایماء پر یہ دہشت گرد اسلام کو دنیا میں کمزو ر کرنے کی ناکام کوششوں میں مصروف عمل ہے یہ وحشی ہے اور انسانیت سے دور ان کو پاکستان اور پاکستانی عوام مسلمانوں کے جان ومال کی کوئی پروا نہیں اور آئین پاکستان کونہیں مانتے تو اس صورت میں ان کا خاتمہ پاکستانی حکومت بھرپورطاقت کا استعمال کریں ورنہ یہ اسلام اور پاکستان دشمن عناصر ہلاکت کا باعث ہوگا ۔ اس صورت حال میں پاکستان بھر کے سنی شیعہ عوام کسی بھی صورت خاموش تماشائی نہیں رہ سکتے ہیں جس کا مظاہرہ پچھلے چند مہینوں سے ہوتا چلاآرہا ہے اور پاکستانی عوام حکومتی کوتاہی کی صورت میں خود میدان میں نکل کران دہشت گردوں کو رسوا کرکے ان کا خاتمہ کرینگے انشاء اللہ ۔

 

انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان میں بلکہ پوری دنیا میں مسلمانوں میں کسی بھی قسم کی فرقہ واریت نہیں اور امت مسلمہ پوری طرح اتحاد بین المسلمین دائرے میں زندگی گزاررہے ہیں لیکن اسلام دشمن عناصر اپنے پالے دہشت گردوں کے ذریعے مسلمانوں میں انتشا ر کا باعث بنے ہوئے تو ہم حکومت وقت سے نہایت سختی کے ساتھ مطالبہ کرتے ہیں کہ ان کے خلاف بھرپور آپریشن کرکے ان کا قلہ قمہ کریں یہی پاکستانی اٹھارہ کروڑ عوام کا مطالبہ ہے اور پاکستان کے بقاء کا ضامن بھی۔ مجلس وحدت مسلمین دہشت گردوں کے خلاف آپریشن میں حکومت پاکستان اور فوج کی بھرپورحمایت کرتاہے اور اس میدان میں ان کے شانہ بشانہ کھڑے ہیں۔

وحدت نیوز( کراچی) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کراچی ڈویژن کے تحت جمعہ کے روز ملک بھر کی طرح کراچی بھر میں احتجاجی مظاہرے کئے گئے،احتجاجی مظاہروں کا مقصد پاکستان میں بڑھتی ہوئی دہشت گردی اور دہشت گرد ی کے ذمہ داروں طالبان دہشت گردوں کا قلع قمع کرنے کے لئے حکومت سے مطالبہ سمیت حالیہ دنوں سعودی عرب کی ایما ء پر پاکستان کو شام کی جنگ میں دھکیلنے کی سازش کی مذمت کرنا تھا، اس حوالے سے کراچی کے مختلف علاقوں بشمول جامع مسجد حسینی برف خانہ ملیر، جامع مسجد مصطفی عباس ٹاؤن، جامع مسجد نور ایمان ناظم آباد،جامع مسجد جعفریہ نارتھ کراچی سمیت دیگر مقامات پر احتجاجی مظاہرے ہوئے جبکہ مرکزی احتجاجی مظاہرہ خوجہ مسجد کھارادر کے باہر ہوا،احتجاجی مظاہروں میں سیکڑوں مظاہرین نے شرکت کی جن کے ہاتھوں میں بینرز اور پلے کارڈز موجود تھے جس پر پاکستان شام کی جنگ میں نہ پڑے، سعودی ایماء پر پاکستان کو شام کی جنگ میں دھکیلنے کی مذمت کرتے ہیں، پاکستان کا دفاع کرتے رہیں گے، حکومت ہوش کے ناخن لے، طالبان دہشت گردوں کے خلاف وسیع پیمانے پر آپریشن کیا جائے سمیت مردہ باد امریکہ اور اسرائیل نا منظور کے نعرے درج تھے۔ شہر بھر میں ہونے والے احتجاجی مظاہروں سے مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے صوبائی سیکرٹری سیاسیات علامہ عبد اللہ مطہری،مولانا منور نقوی(رہنما مجلس وحدت مسلمین کراچی) مولانا علی انور جعفری (سیکرٹری روابط کراچی)، علی حسین نقوی (سیکرٹری سیاسیات کراچی)، انجینئر رضا نقوی (ڈپٹی سیکرٹری جنرل کراچی)، مولانا علی افضال، مولانا باقر زیدی، مولانا ذوالفقار جعفری اور احسن عباس رضوی سمیت دیگر نے خطاب کیا۔

 

احتجاجی مظاہروں سے خطاب کرتے ہوئے مقررین کاکہنا تھا کہ پاکستان کو شام کی جنگی صورتحال میں دھکیلنا امریک اور اسرائیل کی گھناؤنی سازش ہے جسے سعودی عرب کے حکمران پاکستانی حکمرانوں کو لالچ دے کر پوری کروانے کی کوششیں کر رہے ہیں تاہم حکمرانوں کو چاہئیے کہ ہوش کے ناخن لیں اور پاکستان کے وسیع تر مفادات کی خاطرکسی بھی عرب یا دیگر ممالک کی ایماء پر شام کی جنگ میں کودنے سے خود کو دور رکھیں، ان کاکہنا تھا کہ پاکستان کے بیس کروڑ عوام کی زندگیوں اور مستقبل کو داؤ پر لگانے والے حکمرانوں کو چاہئیے کہ وہ سعودی عرب کی ایماء پر شام سمیت کسی بھی ملک کے خلاف استعمال ہونے سے پہلے اپنے اندرونی دشمن طالبان دہشت گردوں کا قلع قمع کریں کیونکہ مستقبل قریب میں سعودی منصوبہ بندی کے تحت شام میں لڑنے والے باغی بھی پاکستان پہنچنا شروع ہو جائیں گے جویقیناًپاکستان کے مفاد میں نہیں ہوگا۔

 

مقررین کاکہنا تھا کہ گذشتہ دنوں افواج پاکستان کی جانب سے طالبان دہشت گردوں کے ٹھکانوں پر کی جانے والی کاروائی پر افواج کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں اور سوال کرتے ہیں کہ افواج پاکستان اپنے جوانوں کے قتل کے انتقام کی خاطر تو طالبان دہشت گردوں کے خلاف فوری کاروائی عمل میں لاتی ہیں تاہم پاکستان کے عام عوام کو قتل کرنے والوں کے خلاف کون اٹھے گا؟ کیا پاکستان کے عوام اپنا دفاع خود کریں یا افواج پاکستان عوام کے قاتلوں کے خلاف بھی کاروائی عمل میں لائیں گی؟ مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے رہنماؤں نے مطالبہ کیا ہے کہ طالبان دہشت گردوں کے خلاف آپریشن کا دائرہ کار وسیع کیا جائے اور طالبان دہشت گردوں کا قلع قمع کیا جائے،اس موقع پر مظاہرین نے امریکہ مردہ باد، اسرائیل نامنظور، دہشت گردی نامنظور، طالبان کے خلاف آپریشن کرو سمیت لبیک یا رسول اللہ (ص) اور لبیک یا حسین (ع) کے فلک شگاف نعرے بھی بلند کئے۔

وحدت نیوز(لاہور) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے سربراہ علامہ ناصر عباس جعفری کی اپیل پر ملک میں جاری شیعہ نسل کشی اور  50 ہزار شہداء کے قاتلوں سے مذاکرات کیخلاف ملک بھر میں نماز جمعہ کے بعد احتجاجی مظاہرے کئے گئے۔ پنجاب میں لاہور، ننکانہ، قصور، ساہیوال، اوکاڑہ، ملتان، فیصل آباد، سرگودھا، چینیوٹ، جھنگ، لیہ، میانوالی، جہلم، اٹک اور دیگر شہروں میں احتجاجی مظاہرے ہوئے۔ لاہور میں پریس کلب کے سامنے مظاہرہ ہوا۔ جس کی قیادت علامہ امتیاز کاظمی، علامہ سید جعفر موسوی، علامہ حسن ہمدانی، علامہ ابوذر مہدوی، سید ناصر عباس شیرازی نے کی۔

 

مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے علامہ سید جعفر موسوی کا کہنا تھا کہ مذاکرات کے نام پر معصوم بے گناہ پاکستانیوں کا خون بہایا جا رہا ہے، پاکستان میں منظم انداز میں شیعہ نسل کشی جاری ہے۔ انہوں نے کہا کہ قصہ خوانی بازارمیں دھماکے کی ذمہ داری طالبان کے قبول کرنے کے بعد مذاکراتی چمپیئن بتائیں کہ ان بے گناہوں کے خون کا حساب کون دے گا۔ علامہ سید جعفر موسوی کا کہنا تھا کہ ہم اب میدان میں نکل چکے ہیں، پاکستان کو دہشتگردوں کے رحم و کرم پر نہیں چھوڑا جا سکتا، ہم ملک کے کونے کونے میں ان دہشتگردوں کیخلاف آواز بلند کریں گے۔

 

علامہ ابوذر مہدوی نے مظاہرین سے خطاب میں کہا کہ قصہ خوانی بازار میں طالبان دہشتگردوں نے جہاں معصوم پاکستانیوں کا قتل عام کیا اس کی مثال نہیں ملتی، زخمیوں کے لواحقین ہسپتالوں میں اپنے پیاروں کو لئے بے یارومددگار ہیں لیکن خیبر پختونخواہ حکومت خاموش تماشائی کا کردار ادا کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم حالات کا بغور جائزہ لے رہے ہیں، اگر زخمیوں کی حالت زار ایسے رہی تو ہم مجبور ہوں گے کہ تحریک انصاف کیخلاف بھی ملک گیر احتجاج کریں۔ احتجاجی مظاہرے میں خواتین، بچے بھی شامل تھے جو دہشتگردی کے خلاف پلے کارڈ اور بینرز اٹھائے احتجاج کر رہے تھے۔

وحدت نیوز( کراچی) شہید علامہ دیدارعلی جلبانی کے سوئم پر مجلس وحدت مسلمین کے تحت تعزیتی اجتماعات منعقد کئے گئے اور قاتلوں کی عدم گرفتاری کے خلاف جمعہ کو یوم احتجاج منایا گیا جس میں قاتلوں بشمول بعض مدارس میں چھپے دہشت گردوں کی گرفتاری کا بھی مطالبہ کیا گیا۔ مجلس وحدت مسلمین کراچی کے رہنما مولانا دیدار علی جلبانی اور ان کے گارڈ کو منگل کے روز شہید کیا گیا تھا۔ ان کے بہیمانہ قتل اور قاتلوں کی عدم گرفتاری کے خلاف منعقدہ یوم احتجاج کے موقع پرکراچی سمیت سندھ بھر میں احتجاجی مظاہرے اور ریلیاں نکالی گئیں ، مرکزی احتجاجی مظاہرہ خوجہ مسجد شیعہ اثنا عشری کھارادر کے باہر کیا گیا۔ مرکزی احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے مجلس وحدت مسلمین سندھ کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل علامہ صادق رضا تقوی اور کراچی ڈویژن کے رہنماؤں علی حسین اور مولانا علی انور جعفری نے کہا کہ حکومت سندھ امن و امان قائم کرنے میں ناکام ہو چکی ہے، عوام کا قانون نافذ کرنے والے اداروں بشمول رینجرز اور پولیس سے اعتماد اٹھ چکا ہے، دن دہاڑے شیعہ عمائدین اور علمائے کرام کا قتل حکومت اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کی نا اہلی کا منہ بولتا ثبوت ہے۔ انہوں نے کہا کہ کراچی میں موجود کورنگی ، سائٹ اور دیگر علاقوں میں موجود مدارس کے اندر بڑی تعداد میں دہشت گرد موجود ہیں جو شہر کراچی میں امن و امان کو قائم رکھنے کے لئے بڑا خطرہ ہیں اور اس حوالے سے خفیہ ایجنسیاں بھی رپورٹ پیش کر چکی ہیں اس لئے حکومت کو چاہئیے کہ ایجنسیوں کی اطلاعات کے مطابق مدارس میں موجود خطر ناک دہشتگردوں کے خلاف کاروائی عمل میں لائی جائے اور شہر کراچی میں گذشتہ دوماہ میں درجنوں شیعہ عمائدین کے ٹارگٹ کلرز کو گرفتار کر کے قرار واقعی سزا دی جائے۔

 

ان کاکہنا تھا کہ مولانا دیدار علی جلبانی کے قتل میں ملوث رینجرز کے ڈی ایس آر سمیت دیگر تمام ذمہ داروں کے خلاف فی الفور کاروائی عمل میں لائی جائے ورنہ احتجاج کا سلسلہ ایوانوں تک بڑھا دیا جائے گا، حکومت یہ بات جان لے کہ ملت جعفریہ کو دیوار سے لگانے کی سازش در اصل ملک دشمنی اور اسلام دشمنی کے مترادف ہے جس کے سنگین نتائج برآمد ہوں گے، انہوں نے مزید کہا کہ شہادت ہماری میراث ہے اور دنیا کی کوئی طاقت ہمیں موت کے خوف سے محمد و آل محمد (ع) کی محبت اور عزاداری سے دور نہیں کر سکتی۔علامہ ا صادق رضا تقوی کاکہنا تھا کہ اربعین امام حسین علیہ السلام کے جلوس عزاء یہ ثابت کر دیں گے کہ دشمنان پاکستان اور دشمنان اسلام کی سازشوں کو پایہ تکمیل تک نہیں پہنچنے دیں گے خواہ ہمیں کسی بھی قسم کی قربانی دینا پڑے۔ان کا کہنا تھا کہ جس روز سے کراچی میں آپریشن شروع کیا گیا ہے اسی روز سے شہر کراچی میں ملت جعفریہ کے عمائدین کی ٹارگٹ کلنگ میں تیزی آ گئی ہے تاہم پولیس اور رینجرز کسی ایک قاتل کو بھی تا حال گرفتار کرنے میں ناکام رہے ہیں۔اس موقع پر شرکاء نے لبیک یا حسین (ع) اور مردہ باد امریکہ اور اسرائیل نا منظور کے نعرے بلند کئے۔شرکاء نے وزیر اعلیٰ سندھ قائم علی شاہ، آئی جی سندھ اورڈی جی رینجرز سے مجلس وحدت مسلمین کے رہنما شہید دیدار علی جلبانی سمیت اب تک دوماہ میں شہید کئے جانے والے ملت جعفریہ کئے عمائدین کے قتل میں ملوث تکفیری دہشت گردوں کو گرفتار کر نے کا مطالبہ کیا۔

وحدت نیوز(اندرون سندھ) مجلس وحدت مسلمین کراچی ڈویژن کے ڈپٹی سیکریٹری جنرل علامہ دیدار علی جلبانی کی شہادت پر اندرون سندھ مختلف شہروں میں احتجاج کرتے ہوئے دھرنے دیئے گئے ریلیاں نکالی گئیں جبکہ ٹنڈو محمد خان میں شٹر ڈاؤن ہڑتال کی گئی تفصیلات کے مطابق سکھر میں شہید علامہ دیدار جلبانی اور ان کے محافظ شہید سرفراز بنگش کی شہادت کے خلاف مجلس وحدت مسلمین کی جانب سے سکھر میں احتجاجی مظاہرہ کیا گیا، مرکزی امام بارگاہ سکھر سے چوہدری اظہر حسین اور علامہ علی بخش سجادی کی قیادت میں نکالی جانے والی ریلی مختلف راستوں سے ہوتی ہوئی گھنٹہ گھر چوک پہنچی، ریلی کے شرکاء کراچی میں اہل تشیع برادری کے علماء کرام اور لوگوں کی شہادت کے خلاف سخت نعرے بازی کررہے تھے، ریلی کے شرکاء نے مختلف بازاروں اور چوراہوں پر احتجاج کرتے ہوئے گھنٹہ گھر پر دھرنا دیا۔ اس موقع پر مقررین نے اپنے خطاب میں کہا کہ سندھ حکومت کراچی میں آپریشن کی باتیں کرتی ہے لیکن دہشت گردوں اور قاتلوں کے خلاف کوئی آپریشن نہیں کیا گیا ہے، یہی وجہ ہے کہ آج دہشت گرد کھلے عام بے گناہ لوگوں کا قتل عام کر رہے ہیں اور حکومت، سیکیورٹی ادارے سب کچھ ٹھیک ہے کا نعرے لگانے میں مصروف ہیں۔ احتجاجی مظاہرین نے مطالبہ کیا کہ شہید علامہ دیدار حسین جلبانی کے قاتلوں کو فی الفور گرفتار کیا جائے۔

 

ہالا میں بھی کراچی میں جاری خونریزی کے دوران معروف شیعہ عالم علامہ دیدار جلبانی کی شہادت کے خلاف ہالا، نیو سعید آباد، مٹیاری، بھٹ شاہ، اڈیرولال میں شیعہ تنظیموں کی جانب سے احتجاج کیا گیا مولانا دوست علی سعیدی، زوار ولی محمد میمن، شیعہ علماء کونسل کے نائب صدر سید غلام علی شاہ اور دیگر نے مولانا دیدار علی جلبانی اور دیگر شہریوں کے قتل عام کی سخت مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ اسلام اور پاکستان دشمن قوتیں عالمی دہشت گرد امریکہ کی قیادت میں براہ راست مسلم نسل کشی کے ساتھ فرقہ واریت کے ذریعہ مسلمانوں کو آپس میں لڑانے کی سازشوں میں مصروف ہیں انہوں نے کراچی سمیت ملک بھر میں پاکستانیوں کے قتال کو ختم کرانے کے لیے دہشت گرد ملزمان کی گرفتاری کا مطالبہ کیا۔ ماتلی میں شیعہ علماء کونسل کی اپیل پر ماتلی میں مکمل ہڑتال ہوئی، تمام دکانیں اور کاروباری مراکز بند رہے جبکہ ٹریفک معمول سے کم چلا، شہر میں نامعلوم افراد نے ٹائر جلائے جبکہ شیعہ تنظیموں کی جانب سے ریلی بھی نکالی گئی، ریلی کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے مختلف مقررین نے علامہ دیدار جلبانی کی ٹارگٹ کلنگ کی سخت مذمت کی۔

 

ٹنڈو محمد خان میں علامہ دیدار علی جلبانی اور ان کے محافظ کی ٹارگٹ کلنگ میں ہلاکت کے خلاف مجلس وحدت مسلمین کی کال پر ٹنڈو محمد خان شہر میں مکمل شٹر ڈاؤن ہڑتال کی گئی جس کے باعث تمام کاروباری مراکز بھی بند رہے سڑکوں سے گاڑیاں معمول سے بہت کم رہی۔ دوسری جانب ایم ڈبلیو ایم کی جانب سے محب علی بھٹو کی قیادت میں مسجد علی سے احتجاجی جلوس برآمد کیا گیا جو شہر کے مختلف راستوں سے ہوتا ہوا پریس کلب کے سامنے پہنچا، اس موقع پر مظاہرین سے محب علی بھٹو، محمود الحسین لغاری، مولانا محمد بخش عزیزی اور محمد اشرف خاصخیلی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ موجودہ حکومت ملک میں امن و امان کی صورتحال بہتر کرنے میں مکمل طور پر ناکام ہوچکی ہے اور دہشت گردی کی کارروائی میں علامہ دیدار جلبانی کی شہادت کی سخت مذمت کی اور حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ کراچی میں دہشت گرد عناصر کے خلاف فوری کارروائی کی جائے۔

 

ڈگری میں مجلس وحدت مسلمین کے ضلعی سکریٹری جنرل سید بشیر احمد شاہ نقوی اور دیگر رہنماؤں نے کراچی میں مجلس وحدت مسلمین کے رہنما مولانا دیدار جلبانی کی ٹارگٹ کلنگ میں دہشت گردی کی واردات میں ہلاکت پر شدید احتجاج کرتے ہوئے کہا ہے کہ اہل تشیع کے رہنماؤں کو گھناؤنی سازش کے تحت دہشت گردی کا نشانہ بناکر ملک و صوبے میں فرقہ وارانہ فسادات کرانے کی مذموم سازش کی جارہی ہے۔ وقت کا تقاضا ہے کہ مذہبی جماعتیں متحد ہوکر مذہبی منافرت اور دہشت گردی کے خاتمے کے لیے اپنا کردار ادا کریں۔

 

سیٹھارجہ میں علامہ دیدار علی جلبانی کی شہادت کے واقعے خلاف بدھ کے روز بھی سیٹھارجہ میں وحدت مسلمین کے رہنمائوں آغا طالب حسین بلوچ، زوار نثار احمد، سید احسان علی شاہ کی قیادت میں سیکڑوں کارکنوں نے احتجاجی ریلی نکالی اور حسینی چوک پر احتجاجی دھرنا دیا۔ دھرنے سے خطاب کرتے ہوئے رہنماؤں نے کہا کہ شیعہ علماء کو ٹارگٹ کرکے قتل کرنا اور مجرموں کو کیفر کردار تک نہ پہنچانا یہ عمل ملت جعفریہ کی برداشت سے باہر ہورہا ہے حکومت اپنے مفاہمتی عمل پر نظرثانی کرے اور شیعہ علماء کے قاتلوں کو فوری گرفتار کرکے ملت شیعہ کی بے چینی دور کی جائے۔ ٹھری میر واہ میں مجلس وحدت مسلمین کے رہنما مولانا دیدار جلبانی کے قتل کے سوگ میں ٹھری میر واہ شہر بند رہا اور مجلس وحدت مسلمین کی جانب سے ریلی نکال کر ناکہ نمبر 1 چوک پر دھرنا دیا گیا۔

 

بدین، لاڑکانہ اور ٹھٹھہ میں بھی ایم ڈبلیو ایم کے کارکنان نے علامہ دیدار جلبانی کی شہادت کیخلاف احتجاجی ریلیاں نکالیں، اس موقع پر شہر بھر میں شٹر ڈاؤن ہڑتال رہی، ریلی کی قیادت کرتے ہوئے طارق بدوی، بہادر میمن اور مختار دایو اور دیگر رہنماؤں نے کہا کہ علامہ دیدار جلبانی کی شہادت سانحہ راولپنڈی کا تسلسل ہے، ہم حکومت سے مطالبہ کرتے ہیں کہ جلد از جلد شہید اور ان کے محافظ کے قاتل گرفتار کئے جائیں ورنہ سندھ بھر میں ایسا احتجاج ہوگا جس سے حکومتی ایوانوں کے در و بام ہل جائیں۔ ان کا کہنا تھا کہ ہم ہمیشہ علامہ جلبانی شہید کا مشن جاری رکھیں گے اور ان کے قاتلوں کو رسوا کرتے رہیں گے۔

وحدت نیوز(کراچی) نواسہ رسول (ص) امام حسین علیہ السلام کے شان میں گستاخی اور میلاد النبی (ص) اور جلوس ہائے عزاداری شہدائے کربلا (ع) پر پابندی لگانے کی سازش کے خلاف ملک بھر میں یوم عظمت نواسہ رسول (ص) منایا جا رہا ہے۔ اس مناسبت سے مجلس وحدت مسلمین ضلع ملیر اور امامیہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن پاکستان کراچی ڈویژن ملیر کے تحت کراچی کے علاقے حسین آباد ملیر میں جامع مسجد حسینی کے باہر بعد نماز جمعہ ایک احتجاجی مظاہرے کا انعقاد کیا گیا۔ مظاہرے میں نمازیوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔ احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے مجلس وحدت مسلمین پاکستان کی شوریٰ عالی کے سربراہ مولانا شیخ حسن صلاح الدین نے کہا کہ جلاﺅ گھیراﺅ کرکے حکومتی اور نجی املاک کو نقصان پہنچانا اسلام پسند سنی شیعہ مسلمانوں کی نہیں بلکہ اسلام و پاکستان دشمن تکفیری دہشتگردوں کی کارستانی ہے، جنہیں وزیرقانون پنجاب رانا ثنا اللہ کی مکمل سرپرستی حاصل ہے۔


 
مولانا شیخ حسن صلاح الدین نے کہا کہ راولپنڈی واقعہ کے اصل ذمہ دار تکفیری مولوی کی جانب سے امام حسین علیہ السلام کی شان میں گستاخی دراصل رسول اللہ (ص) کی شان میں گستاخی اور توہین رسالت (ص) ہے، جسے فی الفور گرفتار کرکے نشان عبرت بنا دیا جائے۔ احتجاجی مظاہرے سے خطاب میں انہوں نے مزید کہا کہ وزیرقانون پنجاب رانا ثنا اللہ پنجاب میں دہشت گرد تکفیری ٹولے کے ناجائز باپ کا کردار ادا کر رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ راولپنڈی واقعہ کے حوالے سے بنائے گئے تحقیقاتی کمیشن کے سربراہ کے طور پردہشت گردوں کے سربراہ رانا ثنا اللہ کا نام سنی شیعہ محب وطن مسلمانوں کیلئے انتہائی تشویش کا باعث اور گھناﺅنا مذاق ہے۔ آخر میں انہوں نے مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ وزیرقانون پنجاب رانا ثنا اللہ کو فی الفور برطرف کیا جائے اور راولپنڈی واقعے میں تکفیری دہشت گرد ٹولے کی جانب سے جلائی گئی سنی شیعہ مسلمانوں کی املاک کا معاوضہ ادا کیا جائے۔

Page 2 of 4

مجلس وحدت مسلمین پاکستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے 


MWM Pakistan Flag

We use cookies to improve our website. Cookies used for the essential operation of this site have already been set. For more information visit our Cookie policy. I accept cookies from this site. Agree